پی ایس آر بی 1257+12

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
پی ایس آر بی 1257+12
PSR B1257+12

معلومات مشاہدہ
دور J2000.0      اعتدال J2000.0
مجموعۂ نجوم Virgo
مطلع استوائی 13h00m01s
میل +12° 40' 57"
Characteristics
Spectral type neutron star
Variable type Pulsar
تفصیلات
کمیت assumed 1.5 کمیت
رداس ~0.00002 قطر
گردش 0.006219 s
Age 3 [1] Gyr
دیگرتعین کاری
PSR J1300+1240 , PSR B1257+12 , PSR 1257+12 , PSR 1300+1240

PSR B1257+12 (سابقہ نام:PSR B1257+12 B) ایک نابض ستارہ ہے جو سورج سے ایک ہزار نوری برس کے فاصلے پر واقع ہے۔ 1992ء میں دو سیارے ایک نابض کے گرد مدار میں چکر کاٹتے ہوئے دریافت ہوئے تھے اور تیسرے سیارے کی تصدیق 1994ء میں ہوئی۔

نابض [ترمیم]

PSR B1257+12 مجمع النجوم  سنبلہ میں واقع ہے۔ PSR B1257+12 B کا نام اس کے B1950.0دور میں موجود محدد سے موسوم ہے اور اس کی شروعات ایک نابض کے طور پر ہوئی تھی۔ 

PSR B1257+12 B کو پولینڈ کے فلکیات دان الیگزینڈر وولز چن نے 9 فروری 1990ء میں آریسبو  ریڈیائی دوربین کا استعمال کرتے ہوئے دریافت کیا تھا۔ ملی سیکنڈ نابض ہے جو نیوٹران ستارے کی ایک قسم ہوتی ہے، اور اس کے دھڑکنے کے دورانیہ میں بے قاعدگیاں پائی گئی ہیں، ان  بے قاعدگیوں کا سبب تفتیش کاروں نے بے قاعدہ  دھڑکنوں کو پایا۔  1990ء میں وولز چن اور ڈیل فرائل نے مشہور زمانہ مقالہ ہمارے نظام شمسی سے باہر دریافت ہونے والے پہلے سیارے کے بارے میں شایع کیا۔ مزید بہتر طریقوں کا استعمال کرتے ہوئے ایک اور سیارہ اس نابض کے گرد 1994ء میں پایا گیا۔ اس دریافت نے دوسرے نابض ستاروں کے گرد موجود سیاروں کی کھوج کی تحریک شروع کی، تاہم ایسا لگا کہ اس طرح کے سیارے انتہائی نایاب ہیں؛ صرف ایک اور نابض سیارہ جوPSR B1620-26 کے گرد چکر کاٹ رہا تھا اپنی تصدیق کروا سکا۔ PSR B1257+12 کا محوری دورانیہ 6.22(9,650 آر پی ایم) ملی سیکنڈ ہے۔   

سیاروی نظام [ترمیم]

سیارے[ترمیم]

PSR B1257+12 کے گرد چکر لگاتے ہوئے سیارے ایک مصور کی نگاہ میں۔

1992ء میں الیگزینڈر وولز چن اور ڈیل فرائل نے دریافت کیا کہ نابض کے دو سیارے بھی ہیں۔ماورائے شمس سیاروں  کی ہونے والی تصدیق کے لئے یہ اوّلین دریافت ہوئے سیارے تھے؛ [2][3] نابض سیاروں نے اکثر فلکیات دانوں کو حیرت میں ڈال دیا تھا جو یہ سمجھتے تھے کہ سیارے صرف اہم سلسلے کے ستاروں کے گرد ہی پائے جاتے ہیں۔ مزید غیر یقینیت  نظام کے گرم موجود رہی کیونکہ اس سے پہلے ایک اور نابض ستارے  PSR 1829-10کے گرد موجود سیارے کا کیا ہوا دعویٰ  اعداد و شمار کے حساب میں ہونے والی غلطی سے واپس لے لیا گیا تھا۔ بعد میں مزید ایک اور سیارہ دریافت ہوا۔ مزید براں اس نظام میں سیارچوں کی پٹی یا ایک کائپیر پٹی کی طرح  پٹی بھی ہوسکتی ہے۔

یہ سمجھا جاتا ہے کہ سیارے ، سیارے نظام بننے کے دوسرے عمل کا حصّہ ہیں[4]  جو غیر معمولی نوتارے یا  کسی کوارک نوتارے  کی باقیات سے بنے ہیں۔[5]

PSR B1257+12 کے سیاروں کوعام ستارے کے گرد موجود سیاروں کے برعکس  الف سے د (بڑھتے ہوئے فاصلے کی مناسبت سے) تک نام دیا گیا ہے، عام ستارے کے گرد موجود سیاروں کا نام ب سے شروع ہوتا ہوا آگے بڑھتا ہے۔ الف سیارے کا 2014ء کے آخر تک کسی بھی مشاہداتی تیکنیک سے  دریافت ہونے والے تمام سیاروں میں سب سے کم کمیت ہے اور اس کی کمیت لگ بھگ زمین کے چاند سے دو گنا سے بھی کم ہے۔ 

سیارے اور ان کا مرکزی ستارے ان نظام ہائے سیارگان کا حصّہ ہے جس کو  بین الاقوامی فلکیاتی وحدت  نے اس لئے چنا ہے کہ ماورائے شمس سیاروں اور ان کے مرکزی ستاروں کے نام رکھنے کے لئے (جہاں پہلے کوئی نام موجود نہیں ہے) [6][7] عوامی رائے  حاصل کی جائے۔ اس عمل میں عوامی  نامزدگی  اور نئے ناموں کے لئے ووٹنگ کا عمل شامل ہے، اور امید کی جاتی ہے کہ بین الاقوامی فلکیاتی وحدت  ان نئے ناموں کا اعلان نومبر 2015ء کے وسط تک کرے گی۔[8]

چوتھے مداروی جسم کے دعویٰ کی واپسی [ترمیم]

1996ء میں ایک زحل جیسا گیسی دیو (زمین کی کمیت کا 100 گنا)ممکنہ سیارے کا اعلان کیا گیا جو نابض کے گرد تقریباً 40AU [9] کے فاصلے پر چکر لگا رہا تھا۔ اصل مفروضے کو واپس لے لیا گیا اور اعداد و شمار سے لگائے جانے والے نئے حساب نے ایک نیا بونے سیارے کا مفروضہ دیا جس کا حجم پلوٹو کا پانچواں حصّہ تھا اور وہ  PSR B1257+12 کا چکر تقریباً 2.4AU کے فاصلے سے 4.6 برس میں پورا کررہا تھا۔[10][11] Wolszczan, Alex (January 2012). "Discovery of pulsar planets". New Astronomy Reviews (Elsevier) 56 (1): 2–8. Bibcode:2012NewAR..56....2W. doi:10.1016/j.newar.2011.06.002. بونے سیارے کا مفروضہ بھی واپس لے لیا گیا کیونکہ مزید مشاہدات سے معلوم ہوا کہ پہلی سمجھی جانے والی  دھڑکنے کی  بے قاعدگی سے پتا لگا کہ  مداروی جسم " گردشی نہیں ہے اور اس کو مکمل طور پر نابض انتشار کو ناپ کر بیان کیا جاسکتا ہے۔"

مزید دیکھئے [ترمیم]

حوالہ جات [ترمیم]

  1. Konacki, M.; Wolszczan, A. (2003). "Masses and Orbital Inclinations of Planets in the PSR B1257+12 System". The Astrophysical Journal 591 (2): L147–L150. doi:10.1086/377093. Bibcode2003ApJ...591L.147K. http://www.iop.org/EJ/article/1538-4357/591/2/L147/17269.html. 
  2. "Pulsar Planets"
  3. Wolszczan, A.; Frail, D. (1992). "A planetary system around the millisecond pulsar PSR1257 + 12". Nature 355 (6356): 145–147. Bibcode:1992Natur.355..145W. doi:10.1038/355145a0.
  4. Podsiadlowski, P. (1993). "Planet Formation Scenarios". Planets around pulsars; Proceedings of the Conference, California Inst. of Technology, Pasadena, Apr. 30-May 1, 1992: 149–165. Bibcode:1993ASPC...36..149P.
  5. "Planets orbiting Quark Nova compact remnants". arXiv:astro-ph/0301574. Bibcode:2003A&A...407L..51K. doi:10.1051/0004-6361:20030957.
  6. NameExoWorlds: An IAU Worldwide Contest to Name Exoplanets and their Host Stars. IAU.org. 9 July 2014
  7. NameExoWorlds.
  8. NameExoWorlds.
  9. Wolszczan, Alex (1997). "The Pulsar Planets Update". Planets Beyond the Solar System and the Next Generation of Space Missions. Proceedings of a workshop held at Space Telescope Science Institute, Baltimore, MD, October 16–18, 1996. ASP Conference Series, Vol. 119. Astronomical Society of the Pacific. p. 135. Bibcode:1997ASPC..119..135W.
  10. Fischer, Daniel (2002-10-25). "A comet orbiting a pulsar?". The Cosmic Mirror (244). Retrieved 2013-03-02.
  11. "Smallest extra-solar planet found". BBC News. 2005-02-14. Retrieved 2013-03-02.

بیرونی روابط [ترمیم]