چودھری افضل حق

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

چودھری افضل حق (1891 - 1941) سیاسی رہنما۔ ادیب تھے۔ تحصیل گڑھ شنکر کے ایک راجپوت گھرانے میں پیداہوئے۔ میٹرک کا امتحان امرتسر سے پاس کیا پھر اسلامیہ کالج لاہور میں داخلہ لے لیا لیکن 1920ء میں تعلیم مکمل کرنے سے بیشتر ہی پولیس میں سب انسپکٹر بھرتی ہو گئے۔ یہ وہ زمانہ تھا جب برصغیر میں تحریک خلافت اپنے شباب پر تھی۔ سید عطا اللہ شاہ بخاری کے ایک جلسے کی رپورٹنگ کرتے وقت شاہ جی کی تقریر کا اتنا اثر ہوا کہ نوکری چھوڑ کر تحریک خلافت میں شریک ہو گئے اور شہر شہر اپنی آتش بیانی سے تحریک کو ایک نئی زندگی بخشی۔ اس پر انہیں اایک سال کی سزا ہوئی۔ رہائی کے بعد پنجاب صوبائی اسمبلی کے رکن منتخب ہوئے۔ اسمبلی میں انہوں نے بڑی جرات مندانہ تقریریں کیں۔

تحریک خلافت کی ناکامی اور نہرو رپورٹ کے بعد بہت سے مسلمان لیڈر آل انڈیا کانگریس سے الگ ہو گئے۔ چودھری افضل حق اور سیدعطا اللہ شاہ بخاری نے 1929ء میں مجلس احرار کی بنیاد رکھی۔ چودھری افضل حق احرار کا دماغ سمجھے جاتے۔ کشمیر تحریک میں تحریک کے روح رواں تھے۔ بہت اچھے ادیب تھ۔ے ان کی تصانیف زندگی اور میرا افسانہ اردو ادب میں بلند مقام رکھتی ہے۔

حوالہ جات[ترمیم]