چیپاک محل

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
چیپاک محل کا منظر

چیپاک محل 1765ء تا 1855ء نواب کرناٹک کی سرکاری اقامت گاہ تھی جو چینائی (مدراس) کے نواح میں واقع ہے اور ہند سارسنی وضع میں تعمیر کی گئی ہے۔

تاریخ[ترمیم]

کرناٹک جنگ کے اختتام پر کرناٹک جو اب تک خود مختار ریاست تھی برٹش ایسٹ انڈیا کمپنی کی اتحادی بن گئی۔ محمد علی خان والا جاہ ایک برطانوی اتحادی اور ان کے قریبی دوست اور ان کی حفاظت کے لیے کمپنی کے فوجیوں پر منحصر تھے۔ لہذا 1764ء میں انہیں قلعہ سینٹ جارج کے چھتوں کے اندر خود کے لیے ایک محل تعمیر کرنے کا خیال آیا۔[1] تاہم کچھ رکاوٹوں کی وجہ سے والا جاہ کو اپنی منصوبہ بندی کو چھوڑنے کے لیے مجبور کیا گیا اور اس کی بجائے قلعہ کے جنوب میں کچھ میل کی دوری پر چیپاک میں ایک محل تعمیر کیا گیا۔[1]

جب 1882ء میں کرناٹک کی پرنسپل کے خاتمے کے بعد نوابوں کا محل پر حق ختم ہوا تو چیپاک محل کو نیلام کیا گیا تاکہ نوابوں کے قرضوں کو ادا کیا جاسکے اور آخر میں مدراس حکومت نے اسے خرید لیا۔[2]محل کے فروخت ہونے کے بعد اسے ریونیو بورڈ اور پبلک ورکس ڈیپارٹمنٹ (پی ڈی ڈبلیو) سیکریٹریٹ کے دفتر کے طور پر استعمال کیا گیا۔[2] 1871ء میں رابرٹ چشولم نے ایک نیا ریکارڈ آفس اور ایک ریونیو بورڈ کی تعمیر کی۔[3]

فن تعمیر[ترمیم]

چیپاک محل کے دو حصے ہیں، شمالی حصہ جو کلسہ محل کہلاتا ہے اور جنوبی حصہ جو ہمایون محل کے نام سے موسوم ہے۔[1]یہ محل 117 ایکڑ کے علاقے پر تعمیر کیا گیا ہے اور دیوار سے گھرا ہوا ہے۔[1]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب پ ت Srinivasachari، C. S. (1939). History of the city of Madras written for the Tercentenary Celebration Committee. Madras: P. Varadachary & Co. صفحہ 181. 
  2. ^ ا ب Srinivasachari، C. S. (1939). History of the city of Madras written for the Tercentenary Celebration Committee. Madras: P. Varadachary & Co. صفحہ 243. 
  3. Muthiah، S. (2004). Madras Rediscovered. East West Books (Madras) Pvt Ltd. صفحات 166–168. ISBN 81-88661-24-4. 
  4. "Madras Series I: Chepauk Palace". TuckDB.org. 1911. 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 24 جنوری 2015. 

متناسقات: 13°03′48″N 80°16′54″E / 13.063363°N 80.281713°E / 13.063363; 80.281713