مندرجات کا رخ کریں

ڈی رامانائیڈو

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
ڈی رامانائیڈو
(تیلگو میں: దగ్గుబాటి రామానాయుడు ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تفصیل=
تفصیل=

رکن پارلیمان، لوک سبھا
وزیر اعظم اٹل بہاری واجپائی
این جناردھن ریڈی
دگگوباتی
معلومات شخصیت
پیدائش 6 جون 1936ء   ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کارمچیڑو   ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 18 فروری 2015ء (79 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
حیدر آباد   ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت برطانوی ہند (–14 اگست 1947)
بھارت (26 جنوری 1950–)
ڈومنین بھارت   ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
جماعت تیلگو دیشم   ویکی ڈیٹا پر (P102) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اولاد 3 سمیت ڈی سریش بابو, وینکٹیش
رشتے دار See اکینینی – ڈگگوبتی خاندان
عملی زندگی
پیشہ سیاست دان ،  فلم ساز ،  فلم ہدایت کار   ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مادری زبان تیلگو   ویکی ڈیٹا پر (P103) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان تیلگو   ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اعزازات
IMDB پر صفحات  ویکی ڈیٹا پر (P345) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

دگوبتی رامانائیڈو (6 جون 1936 - 18 فروری 2015) ایک بھارتی فلم پروڈیوسر تھا جو تیلگو سنیما میں اپنے کام کے لیے جانا جاتا تھا۔ انھوں نے 1964ء میں سریش پروڈکشن کی بنیاد رکھی جو بھارت کی سب سے بڑی فلم پروڈکشن کمپنیوں میں سے ایک بن گئی۔ [1] [2] انھیں 13 ہندوستانی زبانوں میں 150 سے زیادہ فلموں کے ساتھ ایک فرد کے ذریعہ سب سے زیادہ فلموں کے لیے گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں جگہ دی گئی۔ [3] انھوں نے 1999ء سے 2004ء تک 13 ویں لوک سبھا میں آندھرا پردیش کے باپٹلا حلقہ کے ممبر پارلیمنٹ کے طور پر بھی خدمات انجام دیں۔

دگوبتی رامانائیڈو 6 جون 1936ء [4] کو موجودہ آندھرا پردیش کے پرکاسم ضلع کے ایک گاؤں کرم چیڈو میں ایک زرعی گھرانے میں پیدا ہوئے۔ [5] اس نے اپنی اسکولی تعلیم گاؤں میں مکمل کی اور کالج کی تعلیم چرالہ میں حاصل کی اور بعد میں پریذیڈنسی کالج، چنئی سے گریجویشن کیا۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Cinema exhibitors say future looks bleak with multiplex entry"۔ Business Line۔ 3 December 2010۔ اخذ شدہ بتاریخ 27 جولا‎ئی 2012 
  2. "Telugu film industry to set up monitoring cells to curb piracy"۔ Business Line۔ 29 September 2004۔ اخذ شدہ بتاریخ 27 جولا‎ئی 2012 
  3. Venkatesh Chakravarthy (2015-03-04)۔ "Dream merchant"۔ Frontline (بزبان انگریزی)۔ اخذ شدہ بتاریخ 08 اگست 2022 
  4. "Veteran Producer No More"۔ 18 فروری 2015 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ February 18, 2015 
  5. Radhika Rajamani (18 February 2015)۔ "D Ramanaidu: From rice grower to number one filmmaker"۔ Rediff.com۔ اخذ شدہ بتاریخ 19 فروری 2015