ژالے آموزگر

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
ژالےآموزگر ، تہران ، 2013

ژالے آموزگر( فارسی: ژاله آموزگار‎) ایک ماہر ایرانیات اور یونیورسٹی کی پروفیسر ہیں جو 4 دسمبر 1939 کو خوی ، مغربی آذربائیجان میں پیدا ہوئیں۔

زندگی[ترمیم]

ژالے آموزگر نے ایرانیات (ایرانی لسانیات) میں سوربون یونیورسٹی سے پی ایچ ڈی کی ڈگری حاصل کی۔ [1] وہ 2021 میں تہران یونیورسٹی میں قدیم ایرانی ثقافت اور زبانوں کے شعبہ کی سربراہ ہیں۔ [2]

پروفیسر ژالے آموزگر، اپنے اساتذہ اور پروفیسر صاحبان (احمد طفازولی جن میں سب سے نمایاں ہیں) کے تعاون سے قدیم ایران میں قدیم ایرانی علوم اور ادب کی تاریخ پر نمایاں کام کرتی رہی ہیں۔

وہ کولمبیا یونیورسٹی میں انسائیکلوپیڈیا ایرانیکا منصوبے سے بھی وابستہ ہیں۔ [3]

[4] شیولیر آف لیجن آف آنر (Chevalier of the Legion of Honor) اور فارسی سائپرس ایوارڈ (ایک ایرانی ثقافتی ورثہ انعام) سمیت متعدد ایوارڈز جیت چکی ہیں۔ [5]

منتخب کام[ترمیم]

  • زرتشترین افسانونی زندگی
  • پہلوی زبان، ادب اور ہدایات
  • ایران کی اساطیری تاریخ
  • افسانوی ایرانی شہریار پر پہلا نمونہ اور پہلا شخص (ترجمہ)
  • لی سنکیوئم لیورے ڈنکارڈ (Le Cinquieme Livre Du Denkard) ، احمد تفضلی (مترجم) ، پیٹرز ، 2001-01-01 ،آئی ایس بی این 978-2-910640-09-5

بھی دیکھو[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Le cinquième livre du denkard" (بزبان فرانسیسی). 
  2. "Archived copy". 25 فروری 2010 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 14 فروری 2010. 
  3. "Archived copy" (PDF). 17 فروری 2010 میں اصل (PDF) سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 14 فروری 2010. 
  4. http://www.tehrantimes.com/news/404004/Iranian-linguist-Jaleh-Amuzegar-awarded-Chevalier-of-the-Legion
  5. http://www.irna.ir/fa/News/82367423/

بیرونی روابط[ترمیم]