کرکٹ عالمی کپ 2019ء

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
کرکٹ عالمی کپ 2019ء
ICC Cricket World Cup 2019 logo.svg
کرکٹ عالمی کپ 2019ء کا باضابطہ لوگو
تاریخ 30 مئی – 14 جولائی 2019ء
منتظم بین الاقوامی کرکٹ کونسل
کرکٹ طرز ایک روزہ بین الاقوامی
ٹورنامنٹ طرز راؤنڈ روبن اور ناک آؤٹ
میزبان Flag of انگلستان انگلستان
Flag of ویلز ویلز
فاتح  انگلستان[1] (1 بار)
رنر اپ  نیوزی لینڈ
شریک ٹیمیں 10
کل مقابلے 48
بہترین کھلاڑی نیوزی لینڈ کین ولیمسن
کثیر رنز بھارت روہت شرما (648)
کثیر وکٹیں آسٹریلیا مچل اسٹارک (27)
2015ء
2023ء

کرکٹ عالمی کپ 2019ء بارہواں کرکٹ عالمی کپ تھا[2][3] جس کا پہلا میچ 30 مئی کو ہوا اور یہ سلسلہ 14 جولائی، 2019ء تک انگلستان اور ویلز میں جاری رہا۔[4]

اس عالمی کپ کی میزبانی کے حقوق اپریل 2006ء میں انگلستان اور ویلز کو دیے گئے۔ جب انگلستان اور ویلز نے کرکٹ عالمی کپ 2015 کی میزبانی کرنے سے معذرت کرلی تو بعد میں آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ میں منعقد ہوا۔ اس عالمی کپ کا پہلا میچ اوول جبکہ فائنل میچ لارڈز میں کھیلا جائے گا۔ 1975ء، 1979ء، 1983ء اور 1999ء کے بعد یہ پانچویں بار انگلستان اور ویلز میں منعقد ہوا۔

ٹورنامنٹ کا فارمیٹ اس حساب سے ہے کہ 10 ٹیموں کو 1 گروپ میں تقسیم کیا گیا ہے، ہر ٹیم باقی 9 ٹیموں سے 1، 1 میچ کھیلا۔ گروپ کے پہلے چار درجے کی ٹیمیں سیمی فائنل کی اہل ہوئیں، سیمی فائنل جیتنے والی ٹیمیں فائنل مقابلہ میں شریک ہوئیں۔ یہ پہلا عالمی کپ ہے جس میں سب ٹیسٹ کھیلنے والی ٹیمیں موجود نہیں تھیں۔[5]

اہلیت[ترمیم]

2019ء کے عالمی کرکٹ کپ میں 10 ممالک حصہ لے رہے ہیں، جو پچھلے عالمی کپ سے جس میں 14 ٹیموں نے حصہ لیا تھا، کم ہے۔ میزبان انگلستان اور 7 ٹیمیں جو ستمبر 2017ء تک، آئی سی سی ون ڈے رینکینگ میں پہلے 8 درجوں پر تھی، اس ٹورنامنٹ میں خود ہی اہل قرار پائیں۔ بچی ہوئی 2 نششتوں کے لیے زمبابوے میں کوالیفائیر کھیلا گیا۔ افغانستان نے کوالیفائیر کے فائنل میں ویسٹ انڈیز کو ہرایا۔ ان دونوں ٹیموں نے عالمی کپ کے لیے کوالیفائی کر لیا۔

اس تصویر میں 2019ء عالمی کرکٹ کپ میں اہل قرار پانے والے ممالک دکھائے گئے ہیں
  میزبان کے طور پر اہل قرار پائے
  بہترین رینکینگ کے طور پر اہلیت ملی
  کوالیفائیر کھیل کر اپنی اہلیت منوائی
  کوالیفائیر میں حصہ لیا مگر اہلیت حاصل کرنے میں ناکام
اہلیت کا طریقہ تاریخ مقام نششتیں اہل[6]
میزبان ملک 30 ستمبر، 2006ء[7] 1  انگلستان
آئی سی سی او ڈی آئے چیمپئن شپ 30 ستمبر، 2017ء 7  آسٹریلیا
 بنگلادیش
 بھارت
 نیوزی لینڈ
 پاکستان
 جنوبی افریقا
 سری لنکا
کوالیفائیر 23 مارچ، 2018ء Flag of Zimbabwe.svg زمبابوے 2  افغانستان
 ویسٹ انڈیز
کل 10

مقامات[ترمیم]

[8][9][10][11]

شہر برمنگھم برسٹل کارڈف چیسٹر لی اسٹریٹ لیڈز
گراؤنڈ ایجبیسٹن کرکٹ گراؤنڈ برسٹل کونٹی گراؤنڈ صوفیا گارڈنز ریورسائیڈ گراؤنڈ ہیڈنگلے کرکٹ گراؤنڈ
گنجائش 25,000 17,500 15,643 20,000 20,000 (ترقیاتی کاموں کے بعد)
میچوں کی تعداد 5 (سیمی فائنل سمیت) 3 4 3 4
Edgbaston---close-of-play.jpg Bristol County Ground.jpg Cathedral Road end, SWALEC Stadium, Cardiff, Wales.jpg Riverside-ground.jpg Headingley Cricket Stadium.jpg
لندن لندن مانچسٹر ناٹنگھم ساؤتھمپٹن ولٹن، سومرسیٹ
لارڈز کرکٹ گراؤنڈ اوول اولڈ ٹریفرڈ کرکٹ گراؤنڈ ٹرینٹ برج روز باؤل کاؤنٹی گراؤنڈ
28,000 25,500 26,000 17,500 25,000 12,500
5 (فائنل سمیت) 5 6 (سیمی فائنل سمیت) 5 5 3
Lords-Cricket-Ground-Pavilion-06-08-2017.jpg OCS Stand (Surrey v Yorkshire in foreground).JPG Old Trafford Cricket Ground August 2014.jpg Trent Bridge MMB 01 England vs New Zealand.jpg Pavilion stands.JPG County Ground, Taunton panorama.jpg

ٹیمیں اور کھلاڑی[ترمیم]

Flag of پاکستان پاکستان Flag of آسٹریلیا آسٹریلیا Flag of انگلستان انگلستان Flag of بھارت بھارت Flag of افغانستان افغانستان Flag of ویسٹ انڈیز کرکٹ بورڈ ویسٹ انڈیز Flag of جنوبی افریقا جنوبی افریقا Flag of نیوزی لینڈ نیوزی لینڈ Flag of سری لنکا سری لنکا Flag of بنگلادیش بنگلہ دیش
[12] [13] [14] [15] [16] [17] [18] [19] [20]

میچ عہدیداران[ترمیم]

[21] [22]

امپائر[ترمیم]

ریفری[ترمیم]

[21]

گروپ مرحلہ[ترمیم]

گروپ مرحلہ کا فارمیٹ راؤنڈ روبن ہے، جہاں ہر ٹیم، دوسری ٹیموں کے خلاف میچ کھیلے گی۔ کل 45 میچ کھیلے جائیں گے اوع ہر ٹیم 9 میچ کھیلے گی۔ پہلی 4 ٹیمیں ناک آوٹ مرحلے کے لیے کوالیفائی کریں گی۔ ایسا فارمیٹ اس سے پہلے 1992ء میں بھی تھا۔

پوائنٹس ٹیبل[ترمیم]

مقام ٹیم کھیلے جیتے ہارے برابر بلا نتیجہ پوائنٹس نیٹ رن ریٹ اہلیت
1  بھارت 9 7 1 0 1 15 0.809 سیمی فائنل کے لیے کوالیفائی کرلیا
2  آسٹریلیا 9 7 2 0 0 14 0.868
3  انگلستان (H) 9 6 3 0 0 12 1.152
4  نیوزی لینڈ 9 5 3 0 1 11 0.175
5  پاکستان 9 5 3 0 1 11 −0.430
6  سری لنکا 9 3 4 0 2 8 −0.919
7  جنوبی افریقا 9 3 5 0 1 7 −0.030
8  بنگلادیش 9 3 5 0 1 7 −0.410
9  ویسٹ انڈیز 9 2 6 0 1 5 −0.225
10  افغانستان 9 0 9 0 0 0 −1.322
ماخذ: ICC, ESPNcricinfo
درجہ بندی کے قوانین: 1) پوائنٹس؛ 2) مقابلے جیتے؛ 3) نیٹ رن ریٹ؛ 4) آپسی مقابلے کا نتیجہ؛ 5) Pre-tournament seeding
(H) میزبان.


وارم آپ مقابلے[ترمیم]

24 مئی 2019ء
10:30
اسکور کارڈ
بمقابلہ

24 مئی 2019ء
10:30
اسکور کارڈ
بمقابلہ

25 مئی 2019ء
10:30
اسکور کارڈ
بمقابلہ

25 مئی 2019ء
10:30
اسکور کارڈ
بمقابلہ

26 مئی 2019ء
10:30
اسکور کارڈ
بمقابلہ

26 مئج 2019ء
10:30
اسکور کارڈ
بمقابلہ

27 مئی 2019ء
10:30
اسکور کارڈ
بمقابلہ

27 مئی 2019ء
10:30
اسکور کارڈ
بمقابلہ

28 مئی 2019ء
10:30
اسکور کارڈ
بمقابلہ

28 مئی 2019ء
10:30
اسکور کارڈ
بمقابلہ

مقابلے[ترمیم]

آئی سی سی نے 26 اپریل، 2018ء کو شیڈول جاری کیا۔[23]

30 مئی 2019
اسکور کارڈ
انگلستان 
311/8 (50 اوور)
بمقابلہ
 جنوبی افریقا
207 (39.5 اوور)
31 مئی 2019
اسکور کارڈ
پاکستان 
105 (21.4 اوور)
بمقابلہ
 ویسٹ انڈیز
108/3 (13.4 اوور)
1 جون 2019
اسکور کارڈ
سری لنکا 
136 (29.2 اوور)
بمقابلہ
 نیوزی لینڈ
137/0 (16.1 اوور)
1 جون 2019 (د/ر)
اسکور کارڈ
افغانستان 
207 (38.2 اوور)
بمقابلہ
 آسٹریلیا
209/3 (34.5 اوور)
2 جون 2019
اسکور کارڈ
بنگلادیش 
330/6 (50 اوور)
بمقابلہ
 جنوبی افریقا
309/8 (50 اوور)
3 جون 2019
اسکور کارڈ
پاکستان 
348/8 (50 اوور)
بمقابلہ
 انگلستان
334/9 (50 اوور)
4 جون 2019
اسکور کارڈ
سری لنکا 
201 (36.5 اوور)
بمقابلہ
 افغانستان
152 (32.4 اوور)
5 جون 2019
اسکور کارڈ
جنوبی افریقا 
227/9 (50 اوور)
بمقابلہ
 بھارت
230/4 (47.3 اوور)
5 جون 2019 (د/ر)
اسکور کارڈ
بنگلادیش 
244 (49.2 اوور)
بمقابلہ
 نیوزی لینڈ
248/8 (47.1 اوور)
6 جون 2019
اسکور کارڈ
آسٹریلیا 
288 (49 اوور)
بمقابلہ
 ویسٹ انڈیز
273/9 (50 اوور)
7 جون 2019
اسکور کارڈ
بمقابلہ
8 جون 2019
اسکور کارڈ
انگلستان 
386/6 (50 اوور)
بمقابلہ
 بنگلادیش
280 (48.5 اوور)
8 جون 2019 (د/ر)
اسکور کارڈ
افغانستان 
172 (41.1 اوور)
بمقابلہ
 نیوزی لینڈ
173/3 (32.1 اوور)
9 جون 2019
اسکور کارڈ
بھارت 
352/5 (50 اوور)
بمقابلہ
 آسٹریلیا
316 (50 اوور)
10 جون 2019
اسکور کارڈ
جنوبی افریقا 
29/2 (7.3 اوور)
بمقابلہ
11 جون 2019
اسکور کارڈ
بمقابلہ
12 جون 2019
اسکور کارڈ
آسٹریلیا 
307 (49 اوور)
بمقابلہ
 پاکستان
266 (45.4 اوور)
13 جون 2019
اسکور کارڈ
بمقابلہ
14 جون 2019
اسکور کارڈ
ویسٹ انڈیز 
212 (44.4 اوور)
بمقابلہ
 انگلستان
213/2 (33.1 اوور)
15 جون 2019
اسکور کارڈ
آسٹریلیا 
334/7 (50 اوور)
بمقابلہ
 سری لنکا
247 (45.5 اوور)
15 جون 2019 (د/ر)
اسکور کارڈ
افغانستان 
125 (34.1 اوور)
بمقابلہ
 جنوبی افریقا
131/1 (28.4 اوور)
16 جون 2019
اسکور کارڈ
بھارت 
336/5 (50 اوور)
بمقابلہ
 پاکستان
212/6 (40 اوور)
17 جون 2019
اسکور کارڈ
ویسٹ انڈیز 
321/8 (50 اوور)
بمقابلہ
 بنگلادیش
322/3 (41.3 اوور)
18 جون 2019
اسکور کارڈ
انگلستان 
397/6 (50 اوور)
بمقابلہ
 افغانستان
247/8 (50 اوور)
19 جون 2019
اسکور کارڈ
جنوبی افریقا 
241/6 (49 اوور)
بمقابلہ
 نیوزی لینڈ
245/6 (48.3 اوور)
20 جون 2019
اسکور کارڈ
آسٹریلیا 
381/5 (50 اوور)
بمقابلہ
 بنگلادیش
333/8 (50 اوور)
21 جون 2019
اسکور کارڈ
سری لنکا 
232/9 (50 اوور)
بمقابلہ
 انگلستان
212 (47 اوور)
22 جون 2019
اسکور کارڈ
بھارت 
224/8 (50 اوور)
بمقابلہ
 افغانستان
213 (49.5 اوور)
22 جون 2019 (د/ر)
اسکور کارڈ
نیوزی لینڈ 
291/8 (50 اوور)
بمقابلہ
 ویسٹ انڈیز
286 (49 اوور)
23 جون 2019
اسکور کارڈ
پاکستان 
308/7 (50 اوور)
بمقابلہ
 جنوبی افریقا
259/9 (50 اوور)
24 جون 2019
اسکور کارڈ
بنگلادیش 
262/7 (50 اوور)
بمقابلہ
 افغانستان
200 (47 اوور)
25 جون 2019
اسکور کارڈ
آسٹریلیا 
285/7 (50 اوور)
بمقابلہ
 انگلستان
221 (44.4 اوور)
26 جون 2019
اسکور کارڈ
نیوزی لینڈ 
237/6 (50 اوور)
بمقابلہ
 پاکستان
241/4 (49.1 اوور)
27 جون 2019
اسکور کارڈ
بھارت 
268/7 (50 اوور)
بمقابلہ
 ویسٹ انڈیز
143 (34.2 اوور)
28 جون 2019
اسکور کارڈ
سری لنکا 
203 (49.3 اوور)
بمقابلہ
 جنوبی افریقا
206/1 (37.2 اوور)
29 جون 2019
اسکور کارڈ
افغانستان 
227/9 (50 اوور)
بمقابلہ
 پاکستان
230/7 (49.4 اوور)
29 جون 2019 (د/ر)
اسکور کارڈ
آسٹریلیا 
243/9 (50 اوور)
بمقابلہ
 نیوزی لینڈ
157 (43.4 اوور)
30 جون 2019
اسکور کارڈ
انگلستان 
337/7 (50 اوور)
بمقابلہ
 بھارت
306/5 (50 اوور)
1 جولائی 2019
اسکور کارڈ
سری لنکا 
338/6 (50 اوور)
بمقابلہ
 ویسٹ انڈیز
315/9 (50 اوور)
2 جولائی 2019
اسکور کارڈ
بھارت 
314/9 (50 اوور)
بمقابلہ
 بنگلادیش
286 (48 اوور)
3 جولائی 2019
اسکور کارڈ
انگلستان 
305/8 (50 اوور)
بمقابلہ
 نیوزی لینڈ
186 (45 اوور)
4 جولائی 2019
اسکور کارڈ
ویسٹ انڈیز 
311/6 (50 اوور)
بمقابلہ
 افغانستان
288 (50 اوور)
5 جولائی 2019
اسکور کارڈ
پاکستان 
315/9 (50 اوور)
بمقابلہ
 بنگلادیش
221 (44.1 اوور)
6 جولائی 2019
اسکور کارڈ
سری لنکا 
264/7 (50 اوور)
بمقابلہ
 بھارت
265/3 (43.3 اوور)
6 جولائی 2019 (د/ر)
اسکور کارڈ
جنوبی افریقا 
325/6 (50 اوور)
بمقابلہ
 آسٹریلیا
315 (49.5 اوور)

ناک آوٹ مرحلہ[ترمیم]

ناک آوٹ مرحلے میں دو سیمی فائنل کھیلے گئے اور سیمی فائنل میں فاتح ٹیموں کے درمیان میں فائنل لارڈز کرکٹ گراؤنڈ میں کھیلا گیا۔[24] 25 جون 2019ء کو آسٹریلیا سیمی فائنل میں جگہ بنانے والی پہلی ٹیم بنی۔ آسٹریلیا نے لارڈز کرکٹ گراؤنڈ میں انگلینڈ کو ہراکر یہ اہلیت حاصل کی۔ [25] اس کے بھارت کرکٹ ٹیم نے فائنل میں جگہ بنائی۔ [26]اس نے 2 جولائی 2019ء کو ایجبیسٹن کرکٹ گراؤنڈ میں بنگلہ دیش کو ہرایا۔ [27] اگلے دن میزبان انگلینڈ نے ریورسائیڈ گراؤنڈ میں نیوزی لینڈ کو شکست دی اور سیمی فائنل کی تسری ٹیم بن گئی۔ [28] اس کے بعد پاکستان اور نیوزی لینڈ میں سے کسی ایک کو جانا تھا مگر پاکستان بنگلہ دیش کو ضروری رن ریٹ سے نہ ہرا سکی اور نتیجتا نیوزی لینڈ سیمی فائنل میں جانے والی چوتھی ٹیم بنی۔[29] پہلا سیمی فائنل بھارت اور نیوزی لینڈ کے مابین اولڈ ٹریفرڈ کرکٹ گراؤنڈ میں ہوا ہوا جبکہ دوسرا سیمی فائنل ایجبیسٹن کرکٹ گراؤنڈ میں انگلینڈ اور آسٹریلیا کے مابین کھیلا گیا۔[30]

 
سیمی فائنلفائنل
 
      
 
9–10 جولائی – اولڈ ٹریفرڈ کرکٹ گراؤنڈ، مانچسٹر
 
 
 بھارت221
 
14 جولائی – لارڈز کرکٹ گراؤنڈ، لندن
 
 نیوزی لینڈ239/8
 
 نیوزی لینڈ241/8
 
11 جولائی – ایجبیسٹن، برمنگھم
 
 انگلستان241
 
 آسٹریلیا223
 
 
 انگلستان226/2
 

سیمی فائنلز[ترمیم]

9–10 جولائی 2019
اسکور کارڈ
نیوزی لینڈ 
239/8 (50 اوور)
بمقابلہ
 بھارت
221 (49.3 اوور)
11 جولائی، 2019ء
10:30
اسکور کارڈ
آسٹریلیا 
223 (49 اوور)
بمقابلہ
انگلستان 
226/2 (32.1 اوور)
14 جولائی 2019
اسکور کارڈ
نیوزی لینڈ 
241/8 (50 اوور)
بمقابلہ
 انگلستان
241 (50 اوور)

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "England win Cricket World Cup: Ben Stokes stars in dramatic finale against New Zealand"۔ BBC Sport۔ 14 جولا‎ئی 2019۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 جولا‎ئی 2019۔
  2. "برطانیہ میں ہوگا 2019ء کا عالمی کپ"۔ مورخہ 7 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  3. "برطانیہ، 2019ء کے عالمی کپ کی میزبانی کرے گا"۔ مورخہ 7 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  4. "آئی سی سی کی میٹنگ"۔ مورخہ 7 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  5. "رچرڈسن ٹی 20 میں اور ٹیمیں چاہتے ہیں"۔ مورخہ 7 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  6. "Cricket World Cup: The Final 10"۔ International Cricket Council۔ مورخہ 7 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 23 مارچ 2018۔
  7. "England lands Cricket World Cup"۔ BBC Sport۔ 30 اپریل 2006۔ اخذ شدہ بتاریخ 2 اپریل 2018۔
  8. "London Stadium could stage 2019 Cricket World Cup matches"۔ 6 دسمبر 2016۔ مورخہ 7 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  9. Exclusive by Tim Wigmore (5 دسمبر 2016)۔ "ECB considering using Olympic Stadium to host 2019 Cricket World Cup games"۔ مورخہ 7 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 23 جنوری 2017۔
  10. "London Olympic Stadium gets ICC approval"۔ ESPN Cricinfo۔ مورخہ 7 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 23 جنوری 2017۔
  11. "2019 World Cup: London Stadium not one of 11 tournament venues"۔ BBC Sport۔ 26 اپریل 2018۔ مورخہ 7 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 اپریل 2018۔
  12. "Pakistan name squad for ICC Men's Cricket World Cup 2019"۔ پاکستان کرکٹ بورڈ۔ اخذ شدہ بتاریخ 18 اپریل 2019۔
  13. "Big names left out of World Cup squad"۔ Cricket Australia۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 اپریل 2019۔
  14. "England name preliminary ICC Men's Cricket World Cup Squad"۔ England and Wales Cricket Board۔ اخذ شدہ بتاریخ 17 اپریل 2019۔
  15. "Karthik, Shankar included in India's World Cup squad"۔ Cricbuzz (انگریزی زبان میں)۔ 15 اپریل 2019۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 اپریل 2019۔
  16. "Afghanistan squad announced for ICC Cricket World Cup"۔ Afghanistan Cricket Board۔ اخذ شدہ بتاریخ 22 اپریل 2019۔
  17. "ICC Squad"۔ Cricket South Africa۔ اخذ شدہ بتاریخ 18 اپریل 2019۔
  18. "BLACKCAPS squad named for ICC Cricket World Cup"۔ New Zealand Cricket۔ اخذ شدہ بتاریخ 3 اپریل 2019۔
  19. "Sri Lanka Squad for ICC Cricket World Cup 2019"۔ Sri Lanka Cricket۔ اخذ شدہ بتاریخ 18 اپریل 2019۔
  20. "Shakib back for World Cup, named Mortaza's deputy"۔ Cricbuzz۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 اپریل 2019۔
  21. ^ ا ب "Match officials for ICC Men's Cricket World Cup 2019 announced"۔ International Cricket Council۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 اپریل 2019۔
  22. "Umpire Ian Gould to retire after World Cup"۔ ESPN Cricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 اپریل 2019۔
  23. "ICC Cricket World Cup 2019 schedule announced"۔ International Cricket Council۔ 26 اپریل 2018۔ اخذ شدہ بتاریخ 19 جون 2019۔
  24. "Old Trafford to host India-Pakistan World Cup clash"۔ ESPNcricinfo۔ مورخہ 7 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 2018-04-25۔
  25. "Australian left-arm pace barrage rumbles England"۔ Cricket Australia۔ اخذ شدہ بتاریخ 25 جون 2019۔
  26. "CWC19 semi-final and final reserve days – all you need to know"۔ International Cricket Council۔ اخذ شدہ بتاریخ 8 جولائی 2019۔
  27. "India fend off Bangladesh to seal semi-final seat"۔ International Cricket Council۔ اخذ شدہ بتاریخ 2 جولائی 2019۔
  28. "England reach Cricket World Cup semi-finals with 119-run win over New Zealand"۔ Evening Standard۔ اخذ شدہ بتاریخ 3 جولائی 2019۔
  29. "New Zealand qualify for CWC19 semi-finals"۔ International Cricket Council۔ اخذ شدہ بتاریخ 5 جولا‎ئی 2019۔
  30. "Cricket World Cup: Australia beaten by South Africa in Manchester"۔ BBC Sport۔ اخذ شدہ بتاریخ 7 جولا‎ئی 2019۔

بیرونی روابط[ترمیم]