کنن پوشپورہ سانحہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
کنن پوشپورہ سانحہ
Do You Remember Kunan Poshpura.jpg
 

مقام ضلع کپواڑہ  ویکی ڈیٹا پر (P276) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہر Flag of India.svg بھارت  ویکی ڈیٹا پر (P17) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تاریخ 23 فروری 1991  ویکی ڈیٹا پر (P585) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

کنن پوشپورہ سانحہ (انگریزی: Kunan Poshspora incident) ، بھارت کے زیر انتظام کشمیر میں مبینہ اجتماعی عصمت دری کا ایک واقعہ ہے جو 23 فروری 1991 کو پیش آیا۔ کنن اور پوشپورہ ضلع کپواڑہ میں واقع دو گاؤں ہیں۔ عسکریت پسندوں (انگریزی: militants) کی جانب سے فائرنگ کے بعد انڈین آرمی کی جانب سے کنن اور پوشپورہ میں سرچ آپریشن شروع کیا۔[1] نزدیک کے لوگوں کا یہ کہنا تھا کہ پہلے عسکریت پسندوں نے آرمی پر گولی چلائی، اسی کی وجہ سے یہ سرچ آپریشن ہوا۔[2] گاؤں میں رہنے والے کئی لوگوں نے یہ کہا کہ اس رات بھارتی فوج نے کئی خواتین کے ساتھ عصمت دری کی ہے۔ پہلی رپورٹ کو مجسٹریٹ کے آنے کے بعد لکھی گئی، اس میں ان خواتین کی تعداد 23 بتائی گئی لیکن نگہبان حقوق انسانی کا اصرار ہے کہ یہ تعداد 23 سے 100 تک ہوسکتی ہے۔[3][4] بھارتی فوج کی جانب سے ان الزامات کی تردید کی گئی۔ حکومت ہند کی تحقیقات نے ان الزامات کے ثبوت کو ناکافی سمجھتے ہوئے انہیں دہشت گردوں کا پروپیگنڈہ قرار دیا۔[5] حکومت ہند کی جانب سے ان الزامات کو بے بنیاد قرار دیا گیا۔[5] انسانی حقوق کی بین الاقوامی تنظیموں نے حکومت ہند کی تحقیقات اور ان کے طریقہ کار پر سنگین شکوک و شبہات کا اظہار کیا۔ نگہبان حقوق انسانی نے اعلانیہ یہ کہا کہ حکومت ہند نے فوج کو انسانی حقوق کی پامالی کے الزامات سے بری کرنے اور الزامات لگانے والوں کو بدنام کرنے کے لئے ایک مہم چلائی ہے۔[6][7]

واقعہ[ترمیم]

نیو یارک ٹائمس کی رپورٹ کے مطابق، کنن پوشپورہ میں رہنے والے لوگوں نے یہ کہا کہ عسکریت پسندوں نے فوج پر گولی چلائی جس کی وجہ سے فوج نے سرچ آپریشن چلایا۔[2] فروری 23، 1991 کو سی۔آر۔پی۔ایف اور بی۔ایس۔ایف کے دستوں نے کنن اور پوشپورہ، دونوں گاؤں کو گھیر لیا، تاکہ وہ سرچ آپریشن کر سکے۔ گاؤں کے مردوں کو گاؤں سے باہر جمع کیا گیا اور ان سے عسکریت پسندوں کی سرگرمی کے متعلق سوال کئے گئے۔ سرچ آپریشن کے خاتمے کے بعد، کئی گاؤں والوں نے یہ دعوی کیا کہ اس رات فوج نے کئی خواتین کے ساتھ عصمت دری کی۔[2]

سماجی اثر[ترمیم]

دی انڈین ایکسپریس نے 21 جولائی 2013 کو ایک رپورٹ پیش کیا، جس میں یہ کہا کہ متاثر خواتین اور ان کے گھر والوں کو گاؤں والوں نے بے دخل کیا ہے۔[8] کنن اور پوشپورہ، دونوں گاؤں میں ایک سرکاری اسکول آٹھویں تک کی تعلیم فراہم کرتا ہے۔ وہ طلباء جو اعلیٰ تعلیم کے لئے ترہیگام اور کپوارہ جاتے، انہیں لوگوں کی طرف سے طنز کا سامنا کرنا پڑتا ہے، اس وجہ سے ان میں سے بیشتر آٹھویں جماعت سے آگے کی تعلیم چھوڈ دیتے ہیں۔[8] وہ خاندان جن کا اس سانحہ سے کوئی واسطہ نہیں رہا، متاثر خاندانوں سے سماجی اعتبار سے لاتعلق ہوگئے۔ گاؤں والوں کا کہنا ہے کہ انہیں اپنی بیٹیوں کے لئے دولہےنہیں ملتے۔[8]

سانحہ سے متعلق کتب[ترمیم]

  • زبان نے کیا آپ کو کنن پوشپورہ یاد ہے (انگریزی: Do You Remember Kunan Poshpura)نام سے ایک کتاب شائع کی ہے۔[9]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Jha، Prashant. "Unravelling a 'mass rape'". The Hindu (بزبان انگریزی). 27 فروری 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 13 مئی 2017. 
  2. ^ ا ب پ
  3. Abdication of Responsibility: The Commonwealth and Human Rights. Human Rights Watch. 1991. صفحات 13–20. ISBN 978-1-56432-047-6. 
  4. International Human Rights Organisation (1992). Indo-US shadow over Punjab. International Human Rights Organisation. "۔.۔reports that Indian armymen belonging to the 4th Rajputana Rifles of the 68 Mountain Division entered a settlement at Kunan Poshpora in Kupwara district on the night of فروری 23–24, 1991 and gangraped a minimum of 23 and a maximum of 100 women of all ages and in all conditions."
  5. ^ ا ب "Mass Rape Survivors Still Wait for Justice in Kashmir". Trustlaw – Thomson Reuters Foundation. Reuters. 7 Mar 2012. جون 9, 2012 میں اصل سے آرکائیو شدہ. 
  6. "Human Rights Watch World Report 1992". World Report 1992. Human Rights Watch. 1 Jan 1992. جون 9, 2012 میں اصل سے آرکائیو شدہ. 
  7. "Human Rights Watch World Report 1992 – India". UNHCR Refworld. 1 Jan 1992. 21 مئی 2011 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 18 دسمبر 2008. 
  8. ^ ا ب پ Bashaarat Masood؛ Rifat Mohidin (2013-07-21). "The Silence of a Night". The Indian Express. صفحات 10, 11. 27 جولا‎ئی 2013 میں اصل سے آرکائیو شدہ. 
  9. Essar Batool؛ Ifrah Butt؛ Samreena Mushtaq؛ Munaza Rashid؛ Natasha Rather. Do You Remember Kunan Poshpura (بزبان انگریزی). Zubaan Books. ISBN 9789384757663.