کھیوڑہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
کھیوڑہ
The Kingdom of Salt
کھیوڑہ
ملک Flag of Pakistan.svg پاکستان
صوبہ پنجاب
تحصیل پنڈدادنخان
وارڈز کی تعداد 18
متحدہ مجلس کی تعداد 2
حکومت
 • چئرمین شہر مہر فاروق حسنین نذر
 • نائب چئرمین شہر ڈاکٹر عابد صدیق ریحان
رقبہ
 • کل 108 کلو میٹر2 (42 مربع میل)
بلندی 277.48 میل (910.37 فٹ)
آبادی (1998 مردم شماری ; 2006 تخمینہ)
 • کل 23,000
 • تخمینہ 25,000
منطقۂ وقت PST (UTC+5)
 • گرما (گرمائی وقت) GMT+6 (UTC+6)
ڈاک رمز 49060
ٹیلی فون کوڈ 0544
ویب سائٹ کھیوڑہ موقع

کھیوڑہ نمک کی کان میں لوگ ارد گرد کے قصبوں سے پیدل چل کر کام کرنے آتے تھے جو کافی مشکل تھا چنانچہ اس مشکل کے حل کے لیے 1876 میں انگریزوں نے سیاسی اور انتظامی بنیادوں اور مصلحتوں کی بنا پر نمک کی کانوں پر کام کرنے والے خاندانوں کو کھیوڑہ میں آباد کیا۔ اس سے پہلے یہ لوگ ارد گِرد کے قریبی علاقوں اور مقامی پہاڑوں پر قیام پزیر تھے اس سے پہلے اس علاقہ میں انگریز اور ہندوں زیادہ تر آباد تھے مگر 1876 سے باقاعدہ مسلمانوں کو بھی رہائش کے حقوق دیے گئے۔ اس وقت کے انگریز حکمرانوں کی زیادہ تر کوشش یہ ہی تھی کہ تمام مسلمان کان کنی کے فن میں ہی مشغول رہیں اور ترقی نہ کر سکیں- چنانچہ 14 مارچ 1876 کو باقاعدہ کھیوڑہ شہر کی بنیاد رکھی گئی۔

اس علاقے میں نمک کی دریافت گھوڑوں کی مدد سے ہوئی تھی۔ سکندرِاعظم جب دنیا فتح کرنے نکلا تو اس علاقے میں یہاں کے بادشاہ راجا پورس سے اس کی جنگ ہوئی۔ سکندرِاعظم کی فوج نے دریائے جہلم کے کنارے جلالپور شریف کے قریب پڑاؤ ڈالا اور تھکے ماندے گھوڑوں کو بھی وہیں باندھ دیا۔ مگر تھوڑی ہی دیر میں گھوڑے پتھر چاٹنے لگے - سپاہی یہ دیکھ کر بہت حیران ہوئے اور سارا ماجرا سکندرِاعظم کو بیان کیا۔ تو معلوم ہوا کہ وہ پتھر نمک کا تھا۔ جسے چاٹنے کہ بعد گھوڑے تازہ دم ہو گئے۔ مگر اُس وقت نمک نکالنے کا کوئی باقاعدہ طریقہ کار موجود نہ تھا اس طرح نمک کی دریافت اس چھوٹے سے علاقے کھیوڑہ میں 326 قبل مسیح میں ہوئی- ماہرین ارضیات اس بات پر یقین رکھتے ہیں کہ کھیوڑہ (نمک) بھی ایک معدن(منرل) ہے۔ تو اس وجہ سے اس علاقے کو کھیوہ یعنی نمک کا گڑھ کہا جاتا تھا جو بعد میں بگڑ کر کھیوڑہ کے نام سے مشہور ہونے لگا-