کیرن آرم سٹرانگ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
کیرن آرم سٹرانگ
پیدائش Karen Armstrong
14 نومبر 1944 (1944-11-14) ‏(70)
وائلڈمور, وورسٹائرشائر, برطانیہ
پیشہ مصنف
قومیت برطانوی
مادر علمی جامعہ آکسفورڈ
ویب سائٹ
http://charterforcompassion.org/

کیرن آرم سٹرانگ (انگریزی: Karen Armstrong) ایک عالمی شہرت یافتہ مصنفہ ہیں۔ وہ برطانیہ میں ویسٹ مڈلینڈ کے علاقے ووسٹر شائر میں 14 نومبر 1944 کو پیدا ہوئیں۔

ابتدائی زندگی[ترمیم]

وہ سات برس تک کیھتولک نن رہیں۔ اس نے وہاں1960کا عشرہ گزارا۔اس تجربےکے بارے اس نے بعد میں ایک آب بیتی لکھی جس سے وہ بہت جلد برطانیہ میں مشہور ہو گئی۔اس کے بعد بی بی سی چینل فور کے لیے سینٹ پول پر ایک دستاویزی فلم بنائی جس دوران اس کو سامی مذاہب پر دلچسپی پیدا ہوئی۔

کتب[ترمیم]

کیرن کی کتب کا موضوع و مقصد دنیا بھر کے بڑے مذاہب خاص کر اسلام، عیساہیت، اور یہودیت کا ایسا مطالعہ پیش کرنا ہے جس سے ان مذاہب کے ماننے والوں کی آپس میں قربت پیدا ہو۔کیرن آرم سٹرانگ کی اب تک کی تصانیف کی تعداد اکیس 24 ہے.ان کی کچھ معروف کتب درجہ ذیل ہیں۔

نام اردو نام سال اشاعت آئی ایس بی این
Through The Narrow Gate تنگ دروازے میں سے 1982
Holy War: The Crusades and

their Impact on Today's World

مقدس جنگ: صلیبی جنگوں اور

آج کی دنیا پر ان کے اثرات

1988
Muhammad: A Biography of the Prophet محمد صل للہ علیہ وسلم کی سوانح عمری 1991
A History of God خدا کی تاریخ 1993
Jerusalem: One City،

Three Faiths

یروشلم: ایک شہر، تین عقائد 1996ء
Islam:A Short History اسلام کی مختصر تاریخ 2000ء
BUDDHA بدھ 2001ء ISBN 9781847921864
A Short History of Myth اساطیر کی مختصر تاریخ 2005ء
Muhammad: A Prophet For

Our Time

محمد: ہمارے عہد کے ایک نبی 2006ء
A Letter to Pakistan پاکستان کے نام ایک خط ISBN 978-0-19-906330-7
The Case for God خدا کے لئے مقدمہ 2009ء ISBN 978-0-307-26918-8

[1]

اعزازات[ترمیم]

  • نیو یارک اوپن سینٹر نے 2004میں کیرن کو مذہبی روایات اور خدا سے تعلق کا گہرا ادراک رکھنے والی شخصیت قرار دیا۔[2]
  • 2008میں آرمسٹرانگ "ٹیڈ"(TED) کانفرنس کے تین انعام یافتگان میں سے ایک تھیں۔[3]
  • 2004 میں روزویلٹ انسٹی ٹیوٹ نے کیرن کو "فریڈم آف ورشپ" کا اعزاز دیا۔[4]

تنقید[ترمیم]

کیرن کے کام پر مختلف مذہب کے علماء و محقق حضرات کچھ آراء و نظریات سے اختلاف بھی کیا ہے جیسے اسلام و محمد صلی ا للہ علیہ والہ وسلم کے حوالے سے کچھ بیانات پر مسلمانوں کی طرف سے اعتراضات سامنے آئے ہیں۔واقعہ اسرا و معراج، قرآن کی سورتوں کی ترتیب، اسلام کا عالمگير مذہب نہ ہونا، اسلامی عبادات میں یہودیت و مسیحیت کا حصہ وغیرہ یہ وہ چیزیں ہیں جن پر بہت سے مسلمانوں نے تحقیقی طور پر کیرن آرمسٹرانگ کی تحقیقی کا رد کیا ہے۔ اسرائیلی مورخ افائیم کرش، نے کیرن کی کتاب، "محمد صل للہ علیہ وسلم کی سوانح عمری" کو ایک ترمیم پسندانہ اور خلاف واقعہ کہا ہے۔اس نے کیرن کی ایک دوسری کتاب محمد"صلی ا للہ علیہ وسلم: ہمارے عہد کے ایک نبی" میں بنو قریظہ کے متنازع مسئلے کے ذکر کو "صداقت کا تمسخر" اڑانے کی کوشش قرار دیا ہے۔

حوالہ جات[ترمیم]