کیل (پیمائش)

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

کیل کے معنی غلہ نا پنے کے ہیں پیمائش کی ایک اصطلاح کیل(پیمانہ )ہے ۔(وہ چیز جسے پیمانے سے ماپا جاتاہے) ایک خاص پیمانے کوبھر کر دینے والی مقداریا اس مقدار کے برابروزن کو کیل یا مکیل کہا جاتا ہے۔ کیل (پیمانوں) سے غلہ جات کو ناپنے کے برتن مراد ہیں؛ وسق، صاع، مد، من، کر؛ یہ سب کیل کے قبیل سے ہیں[1] اندازہ شرعی جو معتبر ہے دو قسم کاہے: کیل یعنی ناپ اور وزن بمعنی تول خاص طور پر خشک اشیاء ہر قسم کے دانے ،غلے اور دالوں کے پیمانے کے لیے اصطلاح استعمال کیل ہوتی ہے گیہوں، جَو، کھجور، نمک، جن کاکیلی ہوناثابت (جن اشیاء کے کیل (ماپ )کے ساتھ فروخت ہونا ثابت )ہے

کیل اور وزن میں فرق[ترمیم]

کیل اور وزن میں فرق یہ ہے کہ کیل کے ذریعہ بہ حیثیت حجم کسی چیز کی مقدارمعلوم کی جاتی ہے اور وزن کے ذریعہ بحیثیت ثقل(بوجھ) کسی چیز کی مقدار معلوم کی جاتی ہے[2] اس کے دیگرمعانی یہ ہیں پیمانہ، صحیح پیمانہ، آزمودہ، منضبط اور مستند سرکاری پیمانہ(یا وزن )۔ اس معنی میں مصر کے بلّوری اوزان(مثلاً درہم کیل)اور اورق بردی میں بطور کیل الدیموس ملتی ہے(کیل الدموس غلے کا مشہور سرکاری پیمانہ جسے ٹیکس لگانے کے لیے عام طور پر استعمال کیا جاتا تھا جو قنقل سے بالکل مختلف ہے جو مقامی پیمانہ ہے) [3]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. مفتاح الاوزان - مؤلف : مفتی عبد الرحمن القاسمی عظیم آبادی - ناشر : الامۃ ایجوکیشنل اینڈ چیریٹیبل ٹرسٹ، حیدرآباد، انڈیا
  2. موسوعہ فقہیہ ،جلد35 صفحہ 210، وزارت اوقاف کویت، اسلامک فقہ اکیڈمی انڈیا
  3. دائرہ معارف اسلامیہ جلد17 صفحہ 513،جامعہ پنجاب لاہور