کینٹربری صوبہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے

کینٹربری صوبہ 1853 ءسے 1876ء میں صوبائی حکومت کے خاتمے تک نیوزی لینڈ کا ایک صوبہ تھا۔ اس کا دارالحکومت کرائسٹ چرچ تھا۔

تاریخ[ترمیم]

کینٹربری کی بنیاد دسمبر 1850ء میں چرچ آف انگلینڈ سے وابستہ بااثر انگریزوں کی کینٹربری ایسوسی ایشن نے رکھی تھی۔ (ابتدائی طور پر صوبے میں رہائش کو چرچ کے ارکان تک محدود کرنے کی کوشش کی گئی تھی لیکن اسے ترک کر دیا گیا تھا۔) [1] شارلٹ جین اور رینڈولف - پہلے چار جہازوں میں سے پہلے دو - 16 دسمبر 1850ء کو اس علاقے میں پہنچے۔ بعد میں صوبے کی سالگرہ کے دن کے طور پر منایا گیا۔ [2] 1852ء میں برطانیہ کی پارلیمنٹ نے نیوزی لینڈ کا آئین ایکٹ 1852ء منظور کیا جس نے دیگر چیزوں کے ساتھ ساتھ صوبائی کونسلیں بھی قائم کیں۔ آئین میں کینٹربری ایسوسی ایشن کے لیے مخصوص دفعات شامل ہیں۔ پہلا یہ کہ نئی جنرل اسمبلی ( نیوزی لینڈ کی پارلیمنٹ ) کینٹربری ایسوسی ایشن کے قیام کے قانون میں ترمیم نہیں کر سکی، [3] دوسرا یہ کہ کینٹربری ایسوسی ایشن اپنے اختیارات ایک نئی قائم شدہ صوبائی حکومت (صوبہ کینٹربری) کے حوالے کر سکتی ہے۔ [4]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. EB (1878).
  2. Swarbrick، Nancy (16 December 2013). "Public holidays – Celebrating communities". Te Ara: The Encyclopedia of New Zealand. اخذ شدہ بتاریخ 20 اپریل 2014. 
  3. Constitution Act 1852, Section 75.
  4. Constitution Act 1852, Section 76.