کے ایم ایچ سرکاری کالج

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
خواندکار مشرف حسین سرکاری کالج
شعارعلم ہی طاقت ہے
قسمسرکاری کالج
قیام1969
پرنسپلپروفیسر انوتوش کمار
طلبہ3٫187
مقامکوٹ چاند پور، ، بنگلہ دیش
کیمپسشہر
ویب سائٹhttps://www.kmhc.gov.bd/

خواندکار مشرف حسین سرکاری کالج ((بنگالی: খন্দকার মোশাররফ হোসেন সরকারি কলেজ)‏؛ فی الحال کے ایم ایچ سرکاری کالج) بنگلہ دیش کی کھلنا ڈویژن کے جھینایداہ ضلع مو موجود ایک تعلیمی ادارا ہے۔ اس کالج کی تعمیر میں ایک مقامی تاجر خواندکار مشرف حسین کے خاص شراکت تھی۔ اسی لیے اس کالج کا نام خواندکار مشرف حسین کالج رکھا گیا ہے۔ فی الحال اس کالج میں ہائر سیکنڈری، انڈرگریجویٹ، آنرز اور پوسٹ گریجویٹ كلاسوں ميں تعليم دي جاتى ہیں۔[1]

تاریخ[ترمیم]

یہ کالج 16 جولائی 1969 کو قائم کیا گیا تھا اور اسے 2 اگست 1969 کو جیسور بورڈ کی منظوری ملی تھی۔ پہلے ہائی اسکول کے پرانے احاطے یعنی موجودہ خواتین ڈگری کالج اور پھر موجودہ ہائی اسکول اسمبلی ہال میں منعقد کیا گیا۔ جناب رفیع الدین سردار، حاجی مقبول حسین، نور محمد سردار اور مسعود النبی چودھری عرف پنو میاں، شمس الرحمٰن، اسدالزماں کاٹو میاں اور چند دیگر پرجوش کارکنوں نے کالج کے قیام کے لیے سخت محنت کی اور قربانیاں دی۔ ایک مقامی تاجر جناب خواندکار مشرف حسین نے کالج کے لیے بہت تعاون کیا۔ یہی وجہ ہے کہ کالج کا نام ان کے نام پر 'خواندکار مشرف حسین کالج' رکھا گیا اور موجودہ جگہ پر کالج کو ریلوے لائن کے پاس کوٹچاندپور ریلوے اسٹیشن کے جنوب مشرقی کونے میں منتقل کر دیا گیا اور کالج کو 7 ایکڑ اراضی پر اس کے اپنے کالج کی عمارت پر چلایا جارہا ہے۔ جناب ایس ایم تاج الاسلام اس کے پہلے پرنسپل تھے اور 1970 سے 1994 تک جناب عبد المطلب پرنسپل کے عہدے پر فائز رہے اور کالج کی ترقی پزیر ترقی میں جناب عبد المطلب کا بہت بڑا تعاون ہے۔ 1975 میں راجشاہی یونیورسٹی سے انڈر گریجویٹ سطح پر کالج کی منظوری دی گئی۔ 1983 میں اس وقت کے میونسپل چیئرمین مسٹر ایم اے ودود ہولا میاں نے پریذائیڈنگ صدر جنرل حسین محمد ارشاد سے اس کالج کو سرکاری بنانے کی درخواست کی اور بعد میں کالج کو سرکاری بنا دیا گیا۔ فی الحال کالج میں آنرز کورس شروع کیا گیا ہے۔ [1]

تعلیمی سرگرمیاں[ترمیم]

اس وقت کالج میں ثانویہ العلیٰی کی تعلیمی سرگرمیاں اور آنرز کورسز دستیاب ہیں۔[1] کالج میں پاس کا تناسب 68.11 فیصد ہے. [1]

آنرز کورس[ترمیم]

  • بنگالی
  • تاریخ
  • ریاستی سائنس
  • معیشت
  • اکاؤنٹنگ
  • انتظام[2]

موجودہ طلبہ اور بنیادی ڈھانچہ[ترمیم]

اس وقت کالج میں طلبہ کی تعداد تقریباً 316 ہے۔ کالج کا کل رقبہ 07 ایکڑ ہے۔ کالج کی شمال کی جانب ایک دو منزلہ عمارت ہے جس میں آفس روم، لائبریری، کامن روم اور ہیومینیٹیز اور کامرس برانچ ہے۔ اور کالج کے مغرب کی جانب دو منزلہ عمارت میں سائنس لیبارٹری اور کمپیوٹر لیب سمیت تمام سائنس کی کلاسز اور امتحانات لیے جاتے ہیں۔ کالج کے میدان کے جنوب مغرب میں ایک منزلہ مسجد ہے۔ کالج کی دو عمارتوں کے سامنے کھیلنے کے لیے کشادہ میدان ہیں۔ کالج کے مشرق میں ہاسٹل کی تعمیر کے لیے کھلی جگہ ہے اور ایک سیڑھی والا تالاب بھی کھودا ہوا ہے۔[1]

موجودہ اساتذہ اور ملازمین کی تعداد[ترمیم]

اس وقت کالج میں تقریبا ٣٦ اساتذہ ہیں۔ اور دفتری افسروں کی تعداد 26 ہے.[3]

دیگر سرگرمیاں[ترمیم]

  • بی این سی سی
  1. ^ ا ب پ ت ٹ "সরকারি খন্দকার মোশাররফ হোসেন কলেজ, কোটচাঁদপুর, ঝিনাইদহ" [Government Khandaker Mosharraf Hossain College, Kotchandpur, Jhinaidah] (بزبان بنگالی)۔ 13 مئی 2021 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 21 فروری 2022 
  2. "KHONDOKAR MOSHARRAF HOSSAIN GOVT. COLLEGE - 0606"۔ اخذ شدہ بتاریخ 21 فروری 2022 
  3. "CURRENT TEACHER LIST"۔ اخذ شدہ بتاریخ 21 فروری 2022 [مردہ ربط]