گا مو رے ایچی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
جاپان کے بابائے اردو
گا مُو رے ایچی
وفات 1977
پیشہ اردو کے پروفیسر اور کئ کتابوں کے مصنف
شہریت جاپانی
مادر علمی ٹوکیو یونیورسٹی آف فارن اسٹڈیز (اس وقت ٹوکیو اسکول آف فارن اسٹڈیز)

پروفیسر گا مو رے ایچی ٹوکیو اسکول آف فارن اسٹڈیز سے 1923ء میں فارغ التحصیل ہوئے جسے آگے چل کر ٹوکیو یونیورسٹی آف فارن لینگویجز کا درجہ حاصل ہوا۔ وہ جاپان میں اردو پڑھانے والے پہلے شخص تھے اور اسی سلسلے میں انہیں 1934ء میں پروفیسر کا درجہ حاصل ہوا۔ اردو زبان کے تئیں ان کی خدمات کی بنا پر انہیں جاپان کا "باباے اردو" کہا جاتا ہے۔

جاپان میں تدریسی کتب کی عدم دست یابی اور رے ایچی کی پہل[ترمیم]

جس زمانے میں رے ایچی درس وتدریس میں سرگرم تھے، اس وقت جاپان میں اردو کتب کا حصول بے حد دشوار تھا۔ اس کمی کو پورا کرنے کے لیے رے ایچی نے 1938 میں "اردو کے ابتدائی قواعد" کے عنوان سے کتاب لکھی جو نووارد طلبہ کے لیے مشعلِ راہ کا کام دینے لگی تھی۔ اس کے علاوہ انہوں نے "باغ وبہار" کا جاپانی زبان میں ترجمہ کیا۔

دیگر تصانیف[ترمیم]

مذکورہ کتب کے علاوہ رے ایچی نے بول چال کی اردو پر کئی کتابیں لکھی۔ اس کے ساتھ ہی ایران اور اسلامی ثقافت پر ان کی نوشتہ کئی کتابیں منظرعام پر آئیں۔ یہ ساری کتابیں آج بھی ان کی تدریسی جامعہ میں محفوظ ہیں۔

انتقال[ترمیم]

رے ایچی کا انتقال 1977 میں ہوا۔[1]

حوالہ جات[ترمیم]

مزید دیکھیے[ترمیم]