گلابی رکشہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے

گلابی رکشہ جسے گلابی آٹو بھی کہا جاتا ہے [1] [2] ) ہندوستان کے کچھ شہروں میں خواتین مسافروں کے لیے عام آٹو رکشوں کا متبادل ہے۔ یہ اقدام حکومت ہند کی جانب سے رکشوں میں خواتین کے سفر کو محفوظ بنانے اور سفر کے دوران خواتین کو ہراساں کرنے سے روکنے کے لیے اٹھایا گیا تھا۔ خواتین کی حفاظت کے لیے خصوصی خصوصیات جیسے گلابی بٹن اور جی پی ایس ٹریکنگ سسٹم نصب ہیں۔ گلابی رکشے یا تو مکمل طور پر گلابی رنگ کے ہیں یا ان کی چھت گلابی رنگ کی ہے۔ گلابی رکشوں کو پہلی بار 2013 میں رانچی میں حکومت ہند نے خواتین کو جنسی حملوں اور عصمت دری سے بچانے کے لیے متعارف کروایا تھا بعد میں اسے ہندوستان کے کئی دوسرے شہروں میں بھی۔متعارف کرایا گیا۔ آٹو قانونی تربیت اور مکمل دستاویزات کے بعد تربیت یافتہ پیشہ ور افراد یا اسے خواتین چلاتی ہیں۔یہ آٹو تربیت یافتہ پیشہ ور افراد ، مردوں یا عورتوں کے ذریعے چلائے جاتے ہیں۔ [3] [4] گلابی رکشہ اسکیم رانچی حکومت نے خواتین کی حالت زار بہتر بنانے کے لیے شروع کی تھی۔ خواتین کو محفوظ ٹرانسپورٹ مہیا کر کے رانچی حکومت خواتین کو بااختیار بنا رہی ہے اور انہیں کام کرنے اور خود کفیل ہونے کے قابل بنا رہی ہے۔ روایتی طور پر ہندوستان میں مرد اجرت کمانے والے ہیں۔ محفوظ نقل و حمل خواتین کو آزاد بناتا ہے اور خاندان کی آمدنی میں ان کا حصہ ڈالتا ہے۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "What happened to the pink auto? - Times of India". The Times of India. اخذ شدہ بتاریخ 12 مارچ 2019. 
  2. "'Pink autos' launched in Gurgaon". News18. اخذ شدہ بتاریخ 12 مارچ 2019. 
  3. "Pink autos in Ranchi no longer 'women only' - Times of India". دی ٹائمز آف انڈیا. اخذ شدہ بتاریخ 12 مارچ 2019. 
  4. "Pink Autos: Women Driven Auto Rickshaw Services In India". Naaree - Work From Home Career Advice, Indian Women's Magazine. 2016-12-13. اخذ شدہ بتاریخ 12 مارچ 2019.