گلالئی اسماعیل

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
گلالئی اسماعیل
Gulalai Ismail.jpg
 

معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 1986 (عمر 33–34 سال)  ویکی ڈیٹا پر تاریخ پیدائش (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ضلع صوابی  ویکی ڈیٹا پر مقام پیدائش (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان  ویکی ڈیٹا پر شہریت (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
مادر علمی جامعہ قائداعظم  ویکی ڈیٹا پر تعلیم از (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ کارکن انسانی حقوق، سیاست دان  ویکی ڈیٹا پر پیشہ (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان پشتو، اردو، انگریزی  ویکی ڈیٹا پر زبانیں (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ویب سائٹ
ویب سائٹ باضابطہ ویب سائٹ  ویکی ڈیٹا پر باضابطہ ویب سائٹ (P856) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

گلالئی اسماعیل (پیدائش: 1986ء) ایک پاکستانی خاتون، جو 12 سال سے انسانی حقوق کے لیے کام کر رہی ہیں۔۔[1] ان کے کام پر کئی بین الاقوامی اعزازات و انعامات سے نوازا جا چکا ہے۔ گلالئی نے اویئر گرلز کے نام سے ادارہ قائم کر رکھا ہے جو نوجوان لڑکیوں کو ان کے حقوق کے بارے آگاہی فراہم کرتا ہے۔ 2013ء کے پاکستان میں عام انتخابات کے دوران میں 100 خواتین کی ایک ٹیم تشکیل دی جس نے گھر گھر جا کر لوگوں کو گھریلو تشدد اور کم عمری کی شادی سے متعلق آگاہی فراہم کی۔[2]

تنظیم[ترمیم]

لڑکیوں کی بیداری یا اویئر گرلز نامی تنظیم کی بنیاد 2012ء میں رکھی، جس کا مقصد خیبر پختونخوا کے دیہی علاقوں میں گھریلو تشدد کی ثقافت اور عورتوں پر جبر کے خلاف کام کرنا تھا۔ 2011ء کی ایک بات چیت کے دوران میں انہوں نے کہا:[3]

میں نے اویئر گرلز کی بنیاد رکھی، حالانکہ کہ میں 16 سال کی ہوں، میں نے لڑکیوں اور لڑکوں میں تفریق کیے جانا دیکھا، میری چچا ذاد بہن کی شادی 15 سال کی عمر میں دوگنی عمر کے مرد سے کر دی گئی; وہ اپنی تعلیم مکمل نا کر سکی، لیکن میرا چچا زاد بھائی پڑھتا رہا۔ یہی تصور کیا جاتا ہے۔ لڑکیوں اس امتیازی سلوک کو سہتی ہیں – جو خاتون تشدد برداشت کرتی اور کچھ نہیں کہتی، اسے دیہی علاقوں میں مثالی نمونہ قرار دیا جاتا ہے۔ "

اعزازات[ترمیم]

  • فارن پالیسی میگزین کی 2013ء کی گلوبل تھنکرز
  • ڈیموکریسی ایوارڈ[4]
  • انٹرنیشنل ہیومنسٹ ایوارڈ[5]
  • دولتِ مشترکہ کا یوتھ ایوارڈ[6]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

بیرونی روابط[ترمیم]