گوٹ لیئیب ویل ہیلم لیئیٹنر

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں

گوٹ لیئیب ویل ہیلم لیئیٹنر (انگریزی: Gottlieb Wilhelm Leitner یا Gottlieb William Leitner) ایم اے، پی ایچ ڈی، ایل ایل ڈی، ڈی او ایل (14 اکتوبر 1840ء - 22 مارچ 1899ء ایک برطانوی مستشرق تھے۔

لیئیٹنر 21 سال کی عمر میں کنگز کالج کے پروفیسر کے طور پر۔ تصویر اسٹرینڈ میگزین، 1894ء سے لی گئی ہے۔

ابتدائی زندگی اور تعلیم[ترمیم]

گوٹ لیئیب پیسٹ، ہنگری میں 14 اکتوبر 1840ء کو ایک یہودی میں پیدا ہوئے۔ [1] ان کی ماں میری ہین رئیٹ ہرزبرگ تھی۔ ان کے والد لیو پولڈ سفیر گوٹ لیئیب کی کم عمری میں گزر گئے اور ان کی ماں جوہان ماریٹز لیئیٹنر سے شادی کر چکی تھی۔ گوٹ لیئیب اور ان کی بہن ایلیزبیتھ (برطانوی سیاست دان لیوپولڈ آمیری کی ماں) اس کے بعد سے لیئیٹنر کے طور پر پہچانے جانے لگے۔[2]

لیئیٹنر نے کم سنی سے زبان دانی میں گہری دلچسپی کا مظاہرہ کر رہے تھے۔ 8 سال کی کم عمر میں وہ قسطنطینہ گئے تھے تاکہ ترگی اور عربی تعلیم حاصل کی جا سکے اور دس سال کی عمر تک وہ ترکی، عربی اور بیش تر یورپی زبانوں کو روانی سے بول سکتے تھے۔ 15 سال کی عمر میں وہ کریمیا میں کرنل کے ہم منصب برطانوی کمیساریات میں تعبیرکنندہ (بدرجہ اولٰی) کے طور پر مقرر ہوئے۔ جب کریمیائی جنگ ختم ہوئی تو وہ پادری بننا چاہتے تھے اور اس وجہ سے کنگز کالج لندن میں تعلیم کے لیے شریک ہوئے۔

یہ کہا گیا ہے کہ لیئیٹنر مسلم ممالک کے دوروں کے دوران ایک مسلم نام عبدالرشید سیاح اپنا چکے تھے۔ سیاح عربی میں سفر کرنے والے کو کہتے ہیں۔

ایک ماہر السنہ کے طور پر کہا جاتا ہے لیئیٹنر کوئی پچاس زبانوں سے واقف تھے، جن میں سے کئی کو وہ روانی سے بول سکتے تھے۔ 19 سال کی عمر میں وہ عربی، ترکی اور جدید یونانی کے لیکچرر کے طور پر مقرر ہوئے اور 23 سال میں وہ کنگز کالج میں عربی اور اسلامی قانون کے پروفیسر مقرر ہوئے۔

اس کے 3 سال بعد 1864ء میں لیئیٹنر گورنمنٹ کالج یونیورسٹی لاہور (اس وقت برطانوی ہند)، موجودہ پاکستان میں پرنسپل بنے۔ وہ جامعہ پنجاب کی تعمیر میں پیش پیش تھے۔ وہ کئی اسکول، ادبی انجمنوں، عوامی کتب خانوں اور تعلیمی جریدوں کے بانی تھے، جبکہ خود وہ برصغیر کی تہذیبوں کا مطالعہ کررہے تھے۔ اس دور میں وہ اردو میں ایک تحقیقی اور جامع کتاب تاریخ اسلام پر لکھ چکے ہیں، جو دو جلدوں پر مشتمل ہے۔ اس کام کے لیے انہوں نے مولوی کریم الدین کی مدد لی کو کہ اس وقت امرتسر، پنجاب میں اسکولوں کے ضلعی انسپکٹر تھے۔ یہ دو جلدیں 1871ء اور 1876ء میں چھپ چکی ہیں۔

لیئیٹنر 26 سال کی عمر میں، مقامی لباس پہنے ہوئے دردستان گھومتے ہوئے۔ اسٹرینڈ میگزین 1894ء سے ماخوذ

وہ ایڈین سیول سرویس سے 1886ء میں وظیفہ یاب ہوئے۔[متنازع ]

یورپ واپسی[ترمیم]

لیئیٹنر یورپ میں 1870ء کے دہے کے اخیر میں لوٹ آئے تاکہ ہیڈلبرگ یونیورسٹی (جرمنی) پر تعلیم جاری رکھیں۔ اس دوران انہوں نے آسٹریا، پروشیا، اور برطانوی حکومتوں کے لیے کام کیے۔ ان کا عزم تھا کہ وہ مشرقی زبانوں، تہذیب اور تاریخ کے مطالعے کے لیے ایک مرکز قائم کریں۔ 1881ء میں انگلستان لوٹنے کے بعد وہ اس مجوزہ ادارے کے لیے جگہ کھوج رہے تھے۔ 1883ء میں وہ مخلوعہ رائل ڈراماٹیک کالج کی عمارت کو دیکھے جو قابل تسلیم حد تک اس مقصد کے لیے موزوں تھی۔

مسلم طالب علموں کی سہولت کے لیے لیئیٹنر نے ایک مسجد کی تعمیر کارروائی۔ مسجد شاہ جہاں کی تعمیر 1889ء میں ہوئی اور یہ مغربی یورپ میں اولین مساجد میں سے ایک تھی، اور برطانیہ میں خاص مقصد کے لیے تعمیر کردہ پہلی مسجد تھی جو آج بھی آباد ہے۔ یہ بھارتی عربی طرز پر بنائی گئی تھی اور اسے بھوپال کی شاہجہاں بیگم (1868ء1901ء) کے نام سے موسوم کیا گیا۔

شاہجہاں بیگم نے اس مسجد کی تعمیر کے لیے ایک خطیر رقم روانہ کی اور اس کے علاوہ انہوں نے محمڈن اینگلو اورینٹل کالج کی علی گڑھ میں قیام میں بھی نمایاں کردار نبھایا جو آگے چل کر علی گڑھ مسلم یونیورسٹی میں تبدیل ہوئی۔

مقبرہ اور اس کتبہ[ترمیم]

بروک ووڈ قبرستان میں لیئیٹنر کی قبر

لیئیٹنر کو بروک ووڈ قبرستان میں سپرد لحد کیا گیا جو ووکنگ کے قریب ہے۔ [3] ذیل میں مقبرے پر کتبے کی انگریزی عبارت درج ہے۔ قابلِ ذکربات یہ ہے کہ یہودی النسل ہونے کے باوجود لیئیٹنر کی قبر پر لاطینی رسم الخط میں عربی مقولہ لکھا ہے جس کا مفہوم یہ ہے کہ علم دولت سے بہتر ہے:

اَلْعِلْمُ خَیْر مِنَ الْمَال
THE LEARNED ARE HONOURED IN THEIR WORK


GOTTLIEB WILLIAM LEITNER
ORIENTAL INSTITUTE WOKING
BORN 14TH OCTOBER 1840 AT BUDAPEST
DIED 22ND MARCH 1899 AT BONN
________________________

LINA OLYMPIA LEITNER
HIS WIFE
DIED 24TH MAY 1912 IN LONDON
AGED 64 BONN
________________________

The Lord is my shepherd therefore can I lack nothing.
Yea, Though I walk through the valley of the shadow of death,
I will fear no evil. (Ps. XXIII)
________________________

Al-‘ilmu khayrum min al-maali

HENRY LEITNER
Only son
Born Lahore 1869 – Died London 1945

اہم کام[ترمیم]

  • On the Sciences of language and of ethnography, with general reference to the language and customs of the people of Hanza: A report of an extempore address. (nach 1856).
  • Introduction to a philosophical Grammar of Arabic: Being an attempt to discover a few simple principles in Arabic Grammar. Reprinted and slightly enlarged from the „Panjab Educational Magazine", Lahore 1871
  • The Sinin-i-Islam; The races of Turkey; History of Dardistan, songs, legends etc.; Graeco-budhistic discoveries; History of indigenous education in the Panjab since annexation.
  • A lecture on the races of Turkey, both of Europe and of Asia, and the state of their education: being, principally, a contribution to Muhammadan education. Lahore 1871.
  • A detailed analysis of Abdul Ghafur's dictionary of the terms used by criminal tribes in the Panjab. Lahore 1880.
  • History of indigenous education in the Punjab since annexation and in 1882. Calcutta 1882. Reprint Delhi: Amar Prakashan, 1982.
  • The Kunza and Nagyr handbook being an introduction to a Knowledge of the language. Calcutta 1889.
  • Dardistan in 1866, 1886 and 1893: being an account of the history, religions, customs, legends, fables, and songs of Gilgit, Chilas, Kandia (Gabrial), Yasin, Chitral, Hunza, Aagyr, and other parts of the Hindukush, Reprint der Ausgabe Woking, Oriental Univ. Inst., 1893, New Delhi: Bhavana Books & Prints, 2001 ISBN 81-86505-49-0
  • Dardistan in 1866, 1886 and 1893 : being an account of the history, religions, customs, legends, fables and songs of Gilgit Chilas, Kandia (Gabrial) Yasin, Chitral, Hunza, Nagyr and other parts of the Hindukush; as also a suppl. to the 2. ed. of The Hunza and Nagyr handbook and an epitome of p. 3 of the author's "The languages and races of Dardistan". Reprint of the edition 1889, Karachi: Indus Publ., 1985.

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Oxford Dictionary of National Biography: "registered with the Jewish community of Pest"; Jewish Encyclopedia
  2. Rubinstein
  3. "Dr G W Leitner". Necropolis Notables. The Brookwood Cemetery Society. اخذ کردہ بتاریخ 2007-02-23. 
  • http://www.tbcs.org.uk/dr_leitner.htm Necropolis Notables. The Brookwood Cemetery Society. Retrieved 2007-02-23.
  • Oxford Dictionary of National Biography
  • http://www.wokingmuslim.org/pers/dr_leitner.htm
  • Muhammad Ikram Chaghatai: Writings of Dr. Leitner: Islam, education, Dardistan, politics and culture of Northern areas. Comp. by Muhammad Ikram Chaghatai. Lahore: Government College Research and Publ. Society; Sang-e-Meel Publ., 2002. ISBN 969-35-1306-1
  • J. FL Stocqueler, Life and Labors of Dr Leitner (1875)
  • "Portraits of Celebrities at Different Times of their Lives", The Strand Magazine, Volume VII, January–June 1894
  • ولیم روبین اسٹین, The secret of Leopold Amery, Historical Research, vol. 73, no. 181 (June 2000), 175–196.

خارجی روابط[ترمیم]

Public Domain یہ مضمونچشولم، ہیو, ویکی نویس (1911ء). دائرۃ المعارف بریطانیکا (اشاعت 11ویں). کیمبرج یونیورسٹی پریس. 

مزید دیکھیے: لیئیٹنر