گھسائی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

گِھسائی یا گِھس جانا (انگریزی: wear and tear) کسی ٹھوس سطح نقصان زدہ ہونا، رفتہ رفتہ اپنی اصل شکل کھو دینا، کوئی نئی شکل یا ہیئت اختیار کرنے کو کہا جاتا ہے۔ گھسائی کی کئی وجوہ ہو سکتی ہیں: مکانیکی (مثلًا لوہے یا دھات کا زنگ آلود ہونا) یا کیمیاوی (جیسے کہ کسی شے کا اپنی آب و تاب کھو دینا، جیسے کہ کسی گاڑی کا ایک طویل عرصے اپنے رنگ کو کھو دینا یا بد رنگ ہو جانا)، وغیرہ۔

2020ء میں بین الاقوامی تحقیق[ترمیم]

مختلف اییرو اسپیس، دفاعی، آٹوموبائل، خلائی آلات کے پرزوں کا عرصۂ استعمال بڑھانے کے لیے ہیئت میں تبدیلی اور گھسائی کم کرنے کی ضرورت ہوتی ہے۔ اس کے لیے عام طور سے ان فعال طریقہ ہائے کار کو لوبرکیٹ کرنے کی ضرورت پڑتی ہے، جس سے ان طریقوں کی لاگت، پیچیدگی اور وزن بڑھ جاتا ہے۔ انٹرنیشنل ایڈوانسڈ ریسرچ سینٹر فار پاؤڈر میٹلرجی اینڈ نیو میٹیریلس کے سائنس دانوں کے ایک گروپ نے نینوکمپوزٹ کوٹنگز کے ہیئت کے حساب سے جائزے (‍ڈپوزیشن) کے لیے ایک لائحۂ عمل وضع کیا ہے جو ان فعال طریقہ ہائے عمل کی گھسائی کو کم کر سکتی ہے۔ ادارے کے سائنس اور ٹیکنالوجی محکمے کا ایک خود مختار تحقیقات و ترقی کا مرکز ہے۔ سانئس دانوں نے یہ پایا ہے کہ ایک معاشی طور پر سے سس‍تی اور آسان چھونے والی الیکٹروپلیٹنگ یا الیکٹروڈپوزیشن طریقے کا استعمال کرتے ہوئے مخصوص شکل کے سیلیکون کاربائڈ کے سب مائکرون پرزوں کے امپریگنیشن کے ساتھ جست اور ٹنگسٹن پر مبنی کوٹنگز کم گھسائی والے اور اچھی تیل سے چلنے والی صلاحیت کے ساتھ گھسائی اور زنگ سے بچاؤ کا عمدہ رابطہ تیار کر سکتی ہیں۔ ایڈوانسڈ ریسرچ سینٹر فار پاؤڈر میٹلرجی اینڈ نیو میٹیریلس گروپ کے ذریعے تیار کردہ کوٹنگز گھسائی کو کم کرتی ہے اور بازار میں موجود اسی طریقے کی مختلف النوع گھسائی سے بچاؤ کی کوٹنگز کے مقابلے میں نمک سپرے کی وجہ تحفظ کو زیادہ روک سکتی ہیں۔یہ کوٹنگ‍ز کم گھسائی اور زنگ والی کوٹنگس کی بڑھتی ہوئی مانگ کا حل کر سکتی ہیں۔ یہ ایک کٹھن میٹرکس کے اندر کٹھور پرزوں کے ساتھ نینوکومپوسٹ کوٹنگز گھسائی سے بچاؤ اور کم زنگ کے تال میل میں اچھا نتیجہ دیتی ہیں۔[1]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]