گیسوں کا تبادلہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

گیسوں کا تبادلہ[ترمیم]

گیسوں کا تبادلہ ایک حیاتیاتی (بائیولو جیکل) مظہر ہے۔ جس میں مختلف گیسیں حاصل اور خارج کی جاتی ہیں اور مختلف طریقوں سے ہوتے ہوئے جسم میں لائی جاتی ہیں اور خارج کی جاتی ہیں۔

انسان میں گیسوں کا تبادلہ[ترمیم]

انسان ناک کے سوراخوں کو ناسٹرلز کہتے ہیں۔ یہ ناسٹرلز دو نالیوں میں کھلتی ہیں جنہیں نیزل کیویٹی کہتے ہیں۔ جب ہم سانس لیتے ہیں تو ہوا ناسٹرلز سے ہوتے ہوئے نیزل کیویٹی میں داخل ہوتی ہے۔ اور ناک میں موجود بال ڈسٹ فلٹرز کا کام دیتے ہیں۔ اور مٹی کے زرات کو روک لیتے ہیں۔ ہوا ڈسٹ فلٹرز سے گزرنے کے بعد میوکس سے ٹکراتی ہے۔ جس کا کام ہوا میں نمی لانا اور ہوا کا ٹمپریچر جسم کے ٹمپریچر کے مطابق بڑھانا یا کم کرنا ہوتا ہے۔ نیزل کیویٹی یہاں دو حصوں لیرنکس اور فیرنکس میں تبدیل ہو جاتی۔ اور ان کے درمیان ایک اور نالی ٹریکیا آجاتی ہے۔ ٹریکیا کو ہوا کی نالی اور فیرنکس کو خوراک کی نالی کہتے ہیں۔ ٹریکیا کے شروع میں سوراخ ہوتے ہیں جنہیں گلاٹس کہتے ہیں۔ ان گلاٹس کے اوپر تشو سے بنے (ڈھکن نما)ایپی گلاٹس ہوتے ہیں۔ خوراک کھاتے ہوئے جب خوراک ایپی گلاٹس سے ٹکراتی ہے تو ایپی گلاٹس فیرنکس کے اوپر آجاتی ہے تاکہ خوراک سانس کی نالی میں نا جاسکے۔

انسان میں گیسوں کا تبادلہ

پودوں میں گیسوں کا تبادلہ[ترمیم]

پودوں میں گیسوں کا تبادلہ ان کے پتوں کے نیچے موجود سٹومیٹا کے ذریعے ہوتا ہے۔

مرکزی نظام کا خلاصہ[ترمیم]

بڑی سطح کا رقبہ مختصر ڈفیوژن کا فاصلہ Maintained concentration gradient
انسان ایلو ولائی 100-70= m2[1] ایلو یلائی اور کیپلری (دو سیل) Constant blood flow in capillaries; breathing
مچھلی Many lamellae and filaments per gill عام طور پر ایک سیل Countercurrent flow
پودے High density of stomata; air spaces within leaf ایک سیل Constant air flow

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Basset J, Crone C, Saumon G (1987). "Significance of active ion transport in transalveolar water absorption: a study on isolated rat lung". The Journal of physiology 384: 311–324.