ہالیجی شریف

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

قدیمی اور تحریک آزادی کی مر کزی درگاہ ہالیجی شریف، اس درگاہ کےبانی اور تحریک آزادی کے اولین مجاہد’’پیر حماداللہ ہالیجوی ‘‘ تھے۔ہالجی شریف ، ضلع سکھر کی تحصیل پنوعاقل میں واقع ہے۔ ضلع سکھر سے 50 کلومیٹر کے فاصلے پر پنو عاقل کا شہر واقع ہے ،اس سے 10کلومیٹر کے فاصلے پر قومی شاہراہ پر ہالیجی شریف کا روحانی مرکز واقع ہے۔ ایک روایت کےمطابق اس علاقے میں ہالیجی کے نام سے قدیم دور میں ایک وادی تھی جس کے نام سے یہ علاقہ موسوم ہوااور آج اس وادی کے نام پر اس قریہ اور بستی کا نام بھی ہا لیجی شریف مشہور ہوا۔ اس کا تلفظ ’’’ہا لے جی ‘‘ ہے۔بہر حال اس کی وجہ تسمیہ کچھ بھی ہو مگریہ ایک گمنام گائوں اور وادی تھی جس کو پہلے کو ئی بھی نہیں جا نتا تھا پھر اچا نک دیکھنے میں آتا ہے کہ لوگوں کے قدم اس طرف بڑھ رہے ہیں اس کی شہرت پھیلتی گئی۔یہاں پہلے کو ئی سڑک نہیں تھی مگر ہالیجی شریف کے وجود میں آنے کے بعد یہاں پختہ سڑک بن گئی جس پرلوگوں کی آمدورفت شروع ہوئی اور یہاں بڑی تعداد میں گاڑیاں چلنے لگیں ۔

ہالیجی شریف میں تجلیات الٰہی کامرکز ہے جہاں پر مخلوق پروانوں کی طرح رخ کر تی ہے۔ درا صل یہ ایسی خانقاہیں اور صوفیائے کرام ایسے بھی ہو تے ہیں جو مرجع خلا ئق ہوتے ہیں جن کی وجہ سے اللہ تعالیٰ اپنی مخلوق کے قلوب کو اپنے ولی کی طرف رو حا نیت کی ترقی کے لیے موڑ دیتا ہے۔نامور ادیب اور پروفیسر سر ور سیف اور نا مور محقق استاد فضل اللہ مہیسر کی را ئے یہ ہے کہ اس وادی اور مقام کو یہ بھی خصوصیت حا صل ہے اس کے بانی اور موجد ’ ’پیر حمادللہ ‘ؒ‘ تھے جو وقت کے ایک اہل اللہ اور ولی تھے ان کے رو حا نی سلسلے کی کڑیاں سندھ کی مشہور رو حا نی خانقاہوں سے ملتی ہیں جن میں پیر جو گوٹھ ،بھرچونڈی شریف ، سو ئی شریف اور امروٹ شریف سے شامل ہیں۔پیر حماداللہ بن میاں محمود بن حماداللہ کا خا ندان اصلاً راجستھان سے تعلق رکھتا تھا۔ اجمیر میں کہیں بو دو باش تھی، سندھ میں یہ خاندان ’’ انڈ ھڑ ‘‘ کے نام سے معروف ہے۔ سا تویں صدی میں میاں مو سیٰ نواب ؒ مشہور سہروردی بزرگ حضرت شیخ [[بہاالدین زکریا ملتانی] ؒؒ] کےبھانجے اور خلیفہ تھے اسی وجہ سے اس قوم کا روحانی تعلق ملتان سے ہےاور یہ تعلق اب بھی کسی نہ کسی صورت میں قائم ہے