ہر اسٹوری

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

ہر اسٹوری (انگریزی: Herstory) نسوانی علم کی پیداوار کی ایک شکل ہے کیونکہ یہ خواتین کے نقطہ نظر سے ، خواتین کے ذریعہ ، خواتین کے لئے لکھا گیا ہے۔ خواتین کے ساتھ سیاسی اور معاشرتی ناانصافی کے بارے میں صرف ایک نہیں ، تین مختلف نظریہ خواتین کے نقطہ نظر سے ہے۔ کئی نسوانیت پسند خواتین اور فعالیت پسند نے ان دیواروں کو مسمار کرنے کے لئے پدرانہ نظام کو متاثر کرکے خفیہ طور پر مزاحمت کرنا شروع کر دیا ہے۔ خواتین نے ایک یادداشت بھی تخلیق کی تاکہ جو بھی اسے پڑھے ، وہ اس کی اپنی شروعاتی مقاصد کو جاری رکھ سکے اور اس کی اہمیت کو بھی جان سکے ، اس کے علاوہ ایک انسدادی بیانیہ تخلیق کیا جاسکے کیونکہ لکھنے سے بیانیہ محفوظ ہوتا ہے۔[1] یہ اصطلاح دو انگریزی الفاظ Her اور story کے مرکب سے تیار ہوئی ہے، جس کے معنے اس کی یعنی عورت کی کہانی جو اسی کی زبانی بیان ہو۔ [2]

تاریخ کا خواتین سے تاریک پہلو[ترمیم]

تاریخ میں تقریبًا ہر دور میں عورتوں سے کچھ نہ کچھ ناانصافیاں ہوتی رہی ہیں۔ مثلًا آٹھویں صدی قبل مسیح میں یونان میں شہری ریاستوں کا ظہور ہوا۔ ان میں خاص طور پر ایتھنز اور سپارٹا کی ریاستیں اپنی علیحدہ علیحدہ خصوصیات کی وجہ سے مشہور تھیں۔ اس لیے ان دونوں ریاستوں کے ماحول میں عورت کی حقیقت بھی مختلف تھی۔ تاہم بہ حیثیت مجموعی عورت کے کمتر درجے کی وجہ سے یونان کی جمہوریت میں عورت کی کوئی حیثیت نہیں تھی۔ اسے شہریت کا حق تھا، نہ وہ ووٹ دے سکتی تھی نہ اسمبلی میں شریک ہو سکتی تھی، نہ جائداد کی وارث ہو سکتی تھی اور نہ ہی کسی سرکاری عہدے پر فائز ہو سکتی تھی۔[3]۔ اسی طرح قرون وسطی سے لے جدید دور میں عورتوں کو مرد کا پلہ نہیں سمجھا گیا اور مسلسل ناانصافیوں کا نشانہ بنایا گیا۔ ترقی یافتہ ممالک میں بھی اجرت کے معاملوں میں صنفی ناانصافیاں ہوتی رہی ہیں۔ کام کی جگہ پر جنسی ہراسانی ہوتی رہی ہیں، جیسا کہ می ٹو تحریک، می ٹو تحریک (بھارت) اور می ٹو تحریک (پاکستان) سے ظاہر ہے۔ خواتین کئی جنسی اسکینڈل اور جنسی کاروبار سے بھی دوچار ہیں۔ [4] اس لیے تاریخ کی وہ فہم پر نسوانیت پسند زور دیتے ہیں، جس سے کہ ناانصافیوں سے اوپر اٹھ کر خواتین کے ساتھ انصاف کا معاملہ ہو۔


مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. تاریخ مزاحیہ یا ‘ہیر اسٹوری’ برائے خواتین مزاحمت کے ایک انداز کے طور پر اٹ ووڈ کے ذریعہ حقوق نسواں علم پروڈکشن کے ذریعے
  2. Jane Mills, "Womanwords: a dictionary of words about women", 1992, آئی ایس بی این 0-02-921495-5, p. 118.
  3. یونانی معاشرے میں عورت نامکمل انسان تھی
  4. گرل فرینڈ اور دو کال گرلس کے ساتھ پکڑا گیا یہ بڑا سابق کھلاڑی ، تیز آوازوں کے بعد کھلی پڑوسیوں کی نیند