ہمہ گیریت

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

ہمہ گیریت (انگریزی: Totalitarianism) ایک اصطلاح ہے جس سے مراد ایک سیاسی نظام یا طرز حکومت ہے جس میں حزب اختلاف کے وجود کی ممانعت ہے، افراد کی ریاست پر تنقید پر روک لگی ہوتی ہے اور ریاست کسی بھی شخص کی عوامی اور نجی زندگی پر حد سے زیادہ قابو رکھنے کی کوشش کرتا ہے۔ اس کو ایک انتہا پسندی کی حد تک اور مکمل شکل کی بااختیاری سمجھی جاتی ہے۔ ہمہ گیر ریاستوں میں سیاسی اقتدار مطلق العنان شخصیات کے ہاتھ میں ہوتا ہے جو ہمہ گیر اور ہمہ پہلو پروپگنڈا کے ذریعے اپنی ساکھ، رسوخ اور رتق و فتق بنائے رکھنے کی کوشش کی جاتی ہے۔ اس مقصد کے لیے ریاست کے زیر قبضہ ذرائع ابلاغ کا بے دریغ استعمال کیا جاتا ہے۔.[1]

ہمہ گیریت کے تحت یا تو اکثر جمہوریت کا وجود ہوتا ہی نہیں یا برائے نام ہوتا ہے۔ انسانی حقوق کی پامالی اور شخصی آزادیوں کی عام طور سے ہمہ گیریت کے تحت گنجائش نہیں ہوتی ہے۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Conquest، Robert (1999). Reflections on a Ravaged Century. صفحہ 74. ISBN 0-393-04818-7.