ہند رستم

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
ہند رستم
(مصری عربی میں: هند رستم ویکی ڈیٹا پر مقامی زبان میں نام (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ہند رستم
ہند رستم

معلومات شخصیت
پیدائشی نام (عربی میں: ناريمان حسين مراد ویکی ڈیٹا پر پیدائشی نام (P1477) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیدائش 12 نومبر 1931(1931-11-12)
اسکندریہ  ویکی ڈیٹا پر مقام پیدائش (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات اگست 8، 2011(2011-80-08) (عمر  79 سال)
جیزہ  ویکی ڈیٹا پر مقام وفات (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وجۂ وفات دورۂ قلب  ویکی ڈیٹا پر وجۂ وفات (P509) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
طرز وفات طبعی موت  ویکی ڈیٹا پر طرزِ موت (P1196) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Egypt.svg مصر  ویکی ڈیٹا پر شہریت (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شوہر حسن رضا
ڈاکٹر محمد فائد
اولاد بسنت رضا
تعداد اولاد 1   ویکی ڈیٹا پر تعداد اولاد (P1971) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ اداکارہ
IMDb logo.svg
IMDB پر صفحات  ویکی ڈیٹا پر آئی ایم ڈی بی - آئی ڈی (P345) کی خاصیت میں تبدیلی کریں


نریمن حسین مراد ایک مصری اداکارہ تھیں جو اپنے سٹیج نام ہند رستم (عربی: هند رستم‎، انگریزی: Hind Rostom) تلفظ [ˈhende ˈɾostom] کے نام سے زیادہ مشہور ہیں۔ وہ 12 نومبر 1931 کو پیدا ہوئیں اور 8 اگست 2011 کو فوت ہوئیں۔[1] وہ اپنے عہد میں مصری سینما کے سنہری دور کی مشہور ترین اداکارہ تھیں۔.[2] ان کو ان کی خوبصورتی کی وجہ سے مشرق کی میریلن مونرو کے نام سے جانا جاتا تھا۔ ہند رستم نے اپنے کیرئیر میں تقریباً 80 فلموں میں اداکاری کے جوہر دکھائے۔

ابتدائی زندگی[ترمیم]

ہند رستم 12 نومبر 1929 کو مصر کے شہر اسکندریہ میں پیدا ہوئیں۔[3] ان کا والد ایک مصری ادیگی قوم سے تعلق رکھتا تھا جبکہ والدہ مصری تھیں۔ اس نے اپنے فلمی کیرئیر کا آغاز 16 برس کی عمر میں ایک فلم اظہار و اشواک میں کام کیا۔ ان کی پہلی کامیاب فلم :بنت لیل (رات کی لڑکی)" تھی جو 1955 میں بنی جس میں انہوں نے مشہور ہدایتکار حسن الامام کے ساتھ کام کیا۔ ان کی مشہور فلمیں "ابن حمیدو - 1957"، "باب الحدید - 1958" اور "لا انام - 1958" ہیں۔

اس نے 1979 میں اداکاری کو خیر آباد کہہ دیا کیونکہ وہ چاہتی تھی کہ اسے اس کے کیرئر کی بلندی پر ہی اداکاری سے کنارہ کشی کر لینی چاہیے تا کہ وہ لوگوں کے دلوں میں رہے۔ دسمبر 2002 میں انہیں دس لاکھ مصری پاؤنڈز کے عوض اپنی سوانح حیات کے لیے کہا گیا۔ یہ آفر ان کو مصری سیٹلائٹ چینل کی طرف سے دی گئی تھی تا کہ ایک ڈراما سیریل میں ان کی زندگی پر محیط کہانی کو فلمایا جائے۔ ان کو کہا گیا وہ اپنی زندگی کی تمام معلومات مہیا کریں تا کہ ان پر ایک ڈراما سیریل بنائی جائی جا سکے لیکن انہوں نے اس بات سے یہ کہہ کر انکار کر دیا کہ میں اپنی زندگی کو بیچنا نہیں چاہتی۔

2004 میں اسے مصری سٹیٹ میرٹ ایوارڈ برائے آرٹس کے لیے چنا گیا لیکن اس نے یہ ایوارڈ لینے سے یہ کہہ کر انکار کر دیا کہ یہ ایوارڈ بہت تاخیر سے ان کو دیا جا رہا ہے۔ اور اس نے کہا کہ مشرق وسطی میں صرف اور صرف ایک ہی ہند رستم ہے۔

شادیاں[ترمیم]

  • حسن رضا۔ فلمی ہدایتکار، ان سے اس کی ایک بیٹی پیدا ہوئی۔
  • محمد فائد - ایک کاروباری شخصیت

وفات[ترمیم]

8 اگست 2011 کو غزہ کے ایک ہسپتال میں حرکت قلب بند ہونے کی وجہ سے 81 برس کی عمر میں انتقال کر گئیں۔[4]

فلموگرافی[ترمیم]

فلمیں[ترمیم]

سال فلم کردار دیگر معلومات
1950 بابا امین سونیا
1954 ویمن کانٹ لائی
1955 فلیش نورتن
1955 ویمن آف دی نائٹ

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "هند رستم (قطة السينما المتوحشة):مصطفى أمين لقبني ب (ملكة الشائعات)!!"۔ www.al-jazirah.com۔ مورخہ 7 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 11 نومبر 2018۔
  2. "Hend Rostom"۔ IMDb۔ مورخہ 7 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 2017-01-19۔
  3. Malak Sekaly۔ "19 January 2016"۔ SpiralMag۔ Cairo۔ مورخہ 5 جولا‎ئی 2016 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ |archiveurl= اور |archive-url= ایک سے زائد مرتبہ درج ہے (معاونت); |archivedate= اور |archive-date= ایک سے زائد مرتبہ درج ہے (معاونت)
  4. "Egyptian screen siren Hind Rostom was an accidental feminist"۔ The National (انگریزی زبان میں)۔ مورخہ 7 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 2018-07-25۔