ہیلن کلارک

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
دی رائٹ اونر ایبل  ویکی ڈیٹا پر (P511) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ہیلن کلارک
(انگریزی میں: Helen Elizabeth Clark ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
Helen Clark official photo (cropped).jpg
 

مناصب
وزیر تحفظ (2 )   ویکی ڈیٹا پر (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
برسر عہدہ
24 اگست 1987  – 30 جنوری 1989 
وزیر صحت (29 )   ویکی ڈیٹا پر (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
برسر عہدہ
30 جنوری 1989  – 2 نومبر 1990 
نائب وزیر اعظم نیوزی لینڈ (11 )   ویکی ڈیٹا پر (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
برسر عہدہ
8 اگست 1989  – 2 نومبر 1990 
قائد حزب اختلاف   ویکی ڈیٹا پر (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
برسر عہدہ
1 دسمبر 1993  – 5 دسمبر 1999 
Flag of New Zealand.svg وزیر اعظم نیوزی لینڈ (37 )   ویکی ڈیٹا پر (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
برسر عہدہ
10 دسمبر 1999  – 19 نومبر 2008 
وزیر خارجہ   ویکی ڈیٹا پر (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
برسر عہدہ
29 اگست 2008  – 19 نومبر 2008 
معلومات شخصیت
پیدائشی نام (انگریزی میں: Helen Elizabeth Clark ویکی ڈیٹا پر (P1477) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیدائش 26 فروری 1950 (72 سال)[3][4][5][6][7]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تی پاؤ  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رہائش ویلنگٹن[8]  ویکی ڈیٹا پر (P551) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of New Zealand.svg نیوزی لینڈ  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
جماعت نیوزی لینڈ لیبر پارٹی  ویکی ڈیٹا پر (P102) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رکنیت امریکی اکادمی برائے سائنس و فنون  ویکی ڈیٹا پر (P463) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شریک حیات پیٹر ڈیوس (1981–)  ویکی ڈیٹا پر (P26) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
مادر علمی یونیورسٹی آف آکلینڈ  ویکی ڈیٹا پر (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تعلیمی اسناد ایم اے  ویکی ڈیٹا پر (P512) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ سیاست دان،  استاد جامعہ،  ماہر سیاسیات  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مادری زبان انگریزی  ویکی ڈیٹا پر (P103) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان انگریزی  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
نوکریاں اقوام متحدہ  ویکی ڈیٹا پر (P108) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اعزازات
100 خواتین (بی بی سی) (2013)
Order of New Zealand ribbon.png نشان نیوز ی لینڈ[9]
چمپیئنز آف دی ارتھ (2008)  ویکی ڈیٹا پر (P166) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
دستخط
Signature Helen Clark.svg
 
IMDb logo.svg
IMDB پر صفحہ[10]  ویکی ڈیٹا پر (P345) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

ہیلن الزبتھ کلارک (پیدائش: 26 فروری 1950ء) نیوزی لینڈ کی ایک سیاست دان ہیں جنہوں نے 1999ء سے 2008ء تک نیوزی لینڈ کی37ویں وزیر اعظم کے طور پر خدمات انجام دیں، اور 2009ء سے 2017ء تک اقوام متحدہ کے ترقیاتی پروگرام کی منتظم رہیں۔ وہ نیوزی لینڈ کی پانچویں سب سے طویل عرصے تک رہنے والی وزیر اعظم اور اس عہدے پر فائز ہونے والی دوسری خاتون تھیں۔ [11]

کلارک کی پرورش ہیملٹن کے باہر ایک فارم میں ہوئی تھی۔ وہ سیاست کی تعلیم حاصل کرنے کے لیے 1968ء میں یونیورسٹی آف آکلینڈ میں داخل ہوئیں، اور نیوزی لینڈ کی لیبر پارٹی میں سرگرم ہو گئیں۔ گریجویشن کے بعد انھوں نے جامعہ میں سیاسیات پر لیکچر دیئے۔ کلارک نے 1974ء میں آکلینڈ میں مقامی سیاست میں قدم رکھا لیکن وہ کسی عہدے پر منتخب نہیں ہوئیں۔ ایک ناکام کوشش کے بعد، وہ 1981ء میں ماؤنٹ البرٹ کی رکن کے طور پر پارلیمان کے لیے منتخب ہوئیں، ایک انتخابی حلقہ جس کی وہ 2009ء تک نمائندگی کرتی رہی۔

کلارک نے چوتھی لیبر حکومت میں کابینہ کے متعدد عہدوں پر فائز رہیں جن میں وزیر ہاؤسنگ، وزیر صحت اور وزیر تحفظات شامل ہیں۔ وہ 1989ء سے 1990ء تک نیوزی لینڈ کی 11 ویں نائب وزیر اعظم تھیں جنہوں نے وزرائے اعظم جیفری پالمر اور مائیک مور کے تحت خدمات انجام دیں۔ 1993ء کے انتخابات میں لیبر کی تنگ شکست کے بعد، کلارک نے مور کو پارٹی کی قیادت کے لیے چیلنج کیا اور جیت کر اپوزیشن کی رہنما بن گئیں۔ 1999ءکے انتخابات کے بعد، لیبر نے ایک حکومتی اتحاد تشکیل دیا، اور کلارک نے 10 دسمبر 1999ء کو وزیر اعظم کے طور پر حلف اٹھایا۔ [12][13]

کلارک نے پانچویں لیبر حکومت کی قیادت کی، جس نے کئی بڑے معاشی اقدامات کو لاگو کیا جن میں کیوی بینک، نیوزی لینڈ سپر اینویشن فنڈ، نیوزی لینڈ ایمیشنز ٹریڈنگ سکیم اور کیوی سیور شامل ہیں۔ ان کی حکومت نے فارشور اینڈ سی بیڈ ایکٹ 2004ء بھی متعارف کروایا، جس پر بڑا تنازع کھڑا ہوا۔ خارجہ امور میں، کلارک نے افغانستان کی جنگ میں فوج بھیجی، لیکن عراق جنگ میں لڑاکا دستوں کا تعاون نہیں کیا، اور 2006ء کے مشرقی تیمور کے بحران میں تعیناتی کا حکم دیا۔ انھوں نے متعدد آزاد تجارت کے لیے <span typeof="mw:Entity" id="mwPw"> </span>بڑے تجارتی شراکت داروں کے ساتھ معائدوں کی وکالت کی، بشمول چین کے ساتھ اس طرح کے معاہدے پر دستخط کرنے والی پہلی ترقی یافتہ ملک کی وزیر اعظم تھیں۔ مسلسل تین انتخابی فتوحات کے بعد، ان کی حکومت 2008ء کے انتخابات میں شکست کھا گئی۔ کلارک نے 19 نومبر 2008ء کو وزیر اعظم اور پارٹی لیڈر کے عہدے سے استعفا دے دیا۔ وہ نیشنل پارٹی کے جان کی نے وزیر اعظم کے طور پر اور فل گوف کے ذریعہ لیبر پارٹی کی رہنما کے طور پر کامیاب ہوئیں۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

نوٹس[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. بنام: Helen Clark — اخذ شدہ بتاریخ: 7 اگست 2022
  2. بنام: Helen Clark — اخذ شدہ بتاریخ: 7 اگست 2022
  3. انٹرنیٹ مووی ڈیٹابیس آئی ڈی: https://wikidata-externalid-url.toolforge.org/?p=345&url_prefix=https://www.imdb.com/&id=nm0960721 — اخذ شدہ بتاریخ: 15 اکتوبر 2015
  4. ایس این اے سی آرک آئی ڈی: https://snaccooperative.org/ark:/99166/w6wm2mh1 — بنام: Helen Clark — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  5. دائرۃ المعارف بریطانیکا آن لائن آئی ڈی: https://www.britannica.com/biography/Helen-Clark — بنام: Helen Clark — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017 — عنوان : Encyclopædia Britannica
  6. Brockhaus Enzyklopädie online ID: https://brockhaus.de/ecs/enzy/article/clark-helen — بنام: Helen Clark
  7. بنام: Helen Clark — Munzinger person ID: https://www.munzinger.de/search/go/document.jsp?id=00000022419 — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  8. https://dpmc.govt.nz/our-programmes/new-zealand-royal-honours/new-zealand-royal-honours-system/types-new-zealand-royal-honours/other-distinctive-new-zealand-honours/suffrage-medal-register
  9. https://dpmc.govt.nz/publications/new-year-honours-list-2010
  10. اجازت نامہ: گنو آزاد مسوداتی اجازہ
  11. "Helen Clark". New Zealand history online. 20 نومبر 2010. 10 مارچ 2012 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 23 مئی 2012. 
  12. Muller، Tom (2012). Political Handbook of the World 2012 (بزبان انگریزی). SAGE. صفحہ 1037. ISBN 978-1-60871-995-2. 16 نومبر 2020 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 3 جون 2020. 
  13. Boston، Jonathan (2000). Left Turn: The New Zealand General Election of 1999 (بزبان انگریزی). Victoria University Press. صفحہ 248. ISBN 978-0-86473-404-4. 16 نومبر 2020 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 3 جون 2020. 

بیرونی روابط[ترمیم]