ہینز کرسچن اینڈرسن

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
ہینز کرسچن اینڈرسن
(ڈینش میں: Hans Christian Andersen ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
HCA 1860 by Franz Hanfstaengl.jpg
 

معلومات شخصیت
پیدائشی نام (ڈینش میں: Hans Christian Andersen ویکی ڈیٹا پر (P1477) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیدائش 2 اپریل 1805[1][2][3][4][5][6][7]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اوڈنس[8][9][10][3]  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 4 اگست 1875 (70 سال)[1][3][4][5][6][7][11]  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کوپن ہیگن[9][3]  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وجہ وفات سرطان جگر  ویکی ڈیٹا پر (P509) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رہائش ڈنمارک  ویکی ڈیٹا پر (P551) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Denmark.svg ڈنمارک[12][13][14][15]  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ مصنف[3][16]،  شاعر[3][17]،  ناول نگار[3]،  ادیب اطفال[3]،  آپ بیتی نگار[3]،  ڈراما نگار[3]،  صحافی،  سیاح[3]،  مصنف  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مادری زبان ڈینش زبان[3]  ویکی ڈیٹا پر (P103) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان ڈینش زبان[18][3]  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کارہائے نمایاں لٹل میچ گرل،  بادشاہ ننگا ہے  ویکی ڈیٹا پر (P800) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مؤثر ولیم شیکسپیئر  ویکی ڈیٹا پر (P737) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تحریک رومانیت  ویکی ڈیٹا پر (P135) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
دستخط
Hans Christian Andersen Signature.svg
 
IMDb logo.svg
IMDB پر صفحات[19]  ویکی ڈیٹا پر (P345) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
P literature.svg باب ادب

ہینز کرسچن اینڈرسن ڈنمارک کا ادیب جس نے بچوں کے لیے جن پریوں کی کہانیاں لکھیں چودہ سال کی عمر میں حصول روزگار کی خاطرکوپن ہیگن پہنچا۔ ابتدا میں اوپرا میں کام کیا مگر ناکام رہا۔ پھر شاعری اور افسانہ نویسی شروع کی۔ 1835ء سے بچوں کے لیے کہانیاں لکھنے لگا۔ جو بچوں سے زیادہ بڑوں میں مقبول ہوئیں۔ کہانیوں کا پہلا مجموعہ 1835ء میں چھپا۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب ربط : https://d-nb.info/gnd/118502794  — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اپریل 2014 — اجازت نامہ: CC0
  2. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb11888753s — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — مصنف: Bibliothèque nationale de France — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  3. ^ ا ب پ ت ٹ ث ج http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb11888753s — مصنف: Paul de Roux — عنوان : Nouveau Dictionnaire des œuvres de tous les temps et tous les pays — اشاعت دوم — جلد: 1 — صفحہ: 89 — ناشر: Éditions Robert Laffont — ISBN 978-2-221-06888-5
  4. ^ ا ب Hans Christian Andersen
  5. ^ ا ب H.C. Andersen
  6. ^ ا ب Hans Christian AndersenISBN 978-0-19-977378-7
  7. ^ ا ب بنام: Hans Christian Andersen — KulturNav-ID: https://kulturnav.org/98efcf81-d60d-44fa-b26c-c4f342ca7a85 — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  8. ربط : https://d-nb.info/gnd/118502794  — اخذ شدہ بتاریخ: 10 دسمبر 2014 — اجازت نامہ: CC0
  9. ^ ا ب ربط : https://d-nb.info/gnd/118502794  — اخذ شدہ بتاریخ: 28 ستمبر 2015 — مدیر: الیکزینڈر پروکورو — عنوان : Большая советская энциклопедия — اشاعت سوم — باب: Андерсен Ханс Кристиан — ناشر: Great Russian Entsiklopedia, JSC
  10. http://www.telegraph.co.uk/technology/google/7546807/Hans-Christian-Andersen-honoured-in-Google-doodle.html
  11. ایس این اے سی آرک آئی ڈی: https://snaccooperative.org/ark:/99166/w6j67gr5 — بنام: Hans Christian Andersen — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  12. http://kulturnav.org/98efcf81-d60d-44fa-b26c-c4f342ca7a85 — اخذ شدہ بتاریخ: 27 فروری 2016 — شائع شدہ از: 12 فروری 2016 — اجازت نامہ: CC0
  13. http://web.archive.org/web/20170323062220/http://jeugdliteratuur.org/auteurs/hans-christian-andersen
  14. http://www.telegraph.co.uk/travel/destination/denmark/148125/A-weekend-break-in...-Copenhagen.html
  15. http://www.bbc.co.uk/norfolk/kids/nightingale_preview.shtml
  16. http://www.bbc.co.uk/radio4/excessbaggage/index_20050604.shtml
  17. http://www.allmusic.com/artist/hans-christian-andersen-mn0001631332
  18. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb11888753s — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — مصنف: Bibliothèque nationale de France — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  19. ناشر: MetaBrainz Foundation