یووون رڈلے

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
یووون رڈلے
Yvonne Ridley
Image illustrative de l'article یووون رڈلے

معلومات شخصیت
پیدائش 23 اپریل 1958 (59 سال)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
Stanley[*]   خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
قومیت برطانوی
نسل انگریز
مذہب اسلام
عملی زندگی
پیشہ صحافی
تصنیفی زبان انگریزی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں بولی، لکھی اور دستخط کی گئیں زبانیں (P1412) ویکی ڈیٹا پر
ویب سائٹ
ویب سائٹ http://www.yvonneridley.org/  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں باضابطہ ویب سائٹ (P856) ویکی ڈیٹا پر

یووون رڈلے (1959ء-Yvonne Ridley) اسٹینلے کی کاؤنٹی ڈرہم میں پیدا ہونے والی ایک مشہور برطانوی صحافی جو اپنے افغانستان کے سفر میں طالبان کے ہاتھوں قید ہوئیں، طالبان کے حسن سلوک کے باعث رہائی کے بعد مسیحیت ترک کر دی اور مسلمان ہو گیئں۔

صحافتی زندگی[ترمیم]

یووون رڈلے سنڈے ایکسپریس کی چیف رپورٹر رہنے کے علاوہ سنڈے ٹائم، آبزرور، روزنامہ مرر اور انڈیپینڈنٹ آف سنڈے سے بھی منسلک رہی ہیں۔ مزید یووون رڈلے نے پیش کار، میزبان کی حیثیت سے سی این این، بی بی سی، آئی ٹی این اور کارلٹن ٹی وی کے لئے بھی خدمات انجام دیں اور اس ضمن میں عراق، افغانستان اور فلسطین کا دورہ کیا۔ رڈلے عورتوں کے حقوق کی علمبردار ہونے کے ساتھ ساتھ جنگ مخالف گروپ کی بانی رکن ہیں۔ رڈلے کی سیاسی وابستگی رسپیکٹ پارٹی کے ساتھ ہے۔ آج کل رڈلے ایرانی چینل پریس ٹی وی سے منسلک ہیں۔

طالبان کی قید میں[ترمیم]

ستمبر2001ء میں افغانستان پر امریکی حملے کے وقت کو رڈلےسفری دستاویزات کی عدم موجودگی کی وجہ سے طالبان نے گرفتار کرلیا اس وقت رڈلے سنڈے ایکسپریس سے منسلک تھیں۔ دوران قید رڈلے نے قرآن کا مطالعہ کیا اور طالبان کے کردار کا نزدیکی جائزہ لیا۔ رہا‎ئی کے بعد رڈلے نے قرآنی تعلیمات اور طالبان کے حسن سلوک سے متاثر ہوکر اسلام قبول کر لیا۔

تصانیف[ترمیم]

  • ان دی ہینڈ آف طالبان
  • ٹکٹ ٹو پیراڈائز

اس کے علاوہ آپ اسامہ بن لادن کی بائیوگرافی پر بھی ایک کتاب لکھ رہی ہیں۔

بیرونی روابط[ترمیم]