1945ء

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

1945میں آنیوالے زلزلے سے کراچی گوادر اور اورماڑہ میں بڑی تباہی آئی

کراچی…محکمۂ موسمیات کے ڈائریکٹر عبد الحمید نے کہا ہے کہ اسلام آباد اور اس سے ملحقہ علاقوں میں آنے والا زلزلہ شدید نوعیت کاتھا۔ تاہم اب تک جو شدیدزلزلہ ریکارڈ کیا گیا وہ 1945 میں تھا جس کا مرکز جنوب مشرق بحرہٴ عرب تھا اس وقت زلزلے کی شدت 8.5 ریکارڈ کی گئی تھی اور گوادر ،اور ماڑہ، کراچی کے علاقوں میں بڑی تباہی ہوئی تھی جس میں 3 سے 4 ہزار افرادجاں بحق ہوئے تھے تاہم یہ زلزلہ سونامی سے ملتا جھلتا تھا اس زلزلے سیبھی سمندری لہریں بلند ہوئی تھیں اور انہوں نے ساحلی علاقوں کو شدیدنقصان پہنچایاتھا۔

1945 کے اس شدید زلزلے کا مرکز پسنی ہی تھا اس وقت کے مقامی لوگوں کے مطابق یہ زلزلہ نماز فجر کے وقت آیا جب پسنی کے جزیرہ ھفتلار اسٹولا سے ایک آگ آسمان کی طرف اٹھا اور اس کے بعد سمندر کی لہریں اوپر اٹھنا شروع ہوگئی۔اور 40 فٹ سے زیادہ اور پھر پسنی میں قیامت کا ایک منظر تھا اور پسنی کے لوگوں نے مقامی ریت مستانی کے دامن میں پناہی لینا شروع کر دیا۔آن واحد میں پسنی سونامی کی لہریوں کے سامنے ڈوب گیا۔اور مقامی لوگوں کے مطابق مہینوں تک آفٹر شاکس کا سلسلہ جاری رہا

جنورى[ترمیم]

فرورى[ترمیم]

مارچ[ترمیم]

اپريل[ترمیم]

مئی[ترمیم]

جون[ترمیم]

جولائی[ترمیم]

اگست[ترمیم]

ستمبر[ترمیم]

اکتوبر[ترمیم]

  • اقوام متحدہ 24 اکتوبر 1945ء میں معرض وجود میں آئی۔

نومبر[ترمیم]

دسمبر[ترمیم]

بیسویں صدی کی پانچویں دہائی
1941ء | 1942ء | 1943ء | 1944ء | 1945ء | 1946ء | 1947ء | 1948ء | 1949ء | 1950ء