2005ء میں پاکستان میں دہشت گردی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں

2005ء میں دہشت گردی کے واقعات کی فہرست۔

جنوری - مارچ 2005ء[ترمیم]

  • 8 جنوری:- گلگت میں کم از کم 10 افراد، فرقہ ورانہواقعات میں ہلاک ہوئے، یہ واقعات ایک شیعہ عالم کے قتل کے بعد دیوبندیوں اور اہل تشیع کے درمیان جھڑپوں میں ہوئے۔[1]
  • 19 مارچ:- سپاہ صحابہ کے ایک خودکش حملہ آور نے جھل مگسی، بلوچستان میں فتح پور کے دور دراز گاؤں میں پیر راکھیل شاہ کے مزار پر شیعہ اور دیوبندی شردقالووں کی ایک مخلوط بھیڑ میں خود کو دھماکے سے ازا دیا جس سے کم از کم 35 افراد ہلاک ہوئے۔[2]

مئی 2005[ترمیم]

  • 25 مئی:- جنوبی وزیرستان ایک ہی خاندان کے 6 ارکان مکین تحصیل میں گاؤں بندکھیل میں دھماکے سے ہلاک ہو گئے تھے۔ [3]
  • 27 مئی:- اسلام آباد، بری امام مزار پر سالانہ عرس میں خودکش بم دھماکے میں کم از کم 20شیعہ ہلاک، اور 82 زخمی ہوئے[4]
  • 31 مئی:- کراچی میں ایک شیعہ مسجد پر حملہ کے بعد مشتعل شیعہ ہجوم نے ایک فاسٹ فود کی دکان کو اگ لگا دی جس سے 6 افراد ہلاک ہوئے۔. مسجد میں بم دھماکے سے 5 افراد ہلاک اور 20 زخمی ہوئے تھے۔[5]

ستمبر - دسمبر 2005ء[ترمیم]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]