2011 میں پاکستان میں نیٹو کا حملہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
"2011 میں پاکِستان میں نیٹو کا حملہ
2011 NATO attack in Pakistan
حصہ جنگ افغانستان (2001ء– تاحال)، شمال مغرب پاکستان میں جنگ اور
Pakistan–United States skirmishes
AH-64 Apache (2233201139).jpg
2 امریکی اپاشے ہیلی کاپٹر اور کچھ طیاروں سے پاکستانیپوسٹ پر حملہ کیا گیا۔
تاریخ 26 نومبر 2011
مقام سلالہ، Baizai Tehsil، مہمند ایجنسی، فاٹا، پاکستان
Latitude: approx. 34.5N
Longitude: approx. 71.0E
نتیجہ
شریک جنگ
 Pakistan

 NATO


 United States
 Afghanistan
سپہ سالار و رہنما
Flag of پاکستان Major Mujahid Mirani [1][2]
Flag of پاکستان Captain Usman Ali [2][3]

Flag of نیٹو نامعلوم
United States Air Force نامعلوم

Afghan National Army emblem.svg نامعلوم
طاقت

40 troops

Anti-aircraft guns[4]

2 AH-64D Apache Longbows
1 AC-130H Spectre gunship
2 F-15E Eagle fighter jets

1 MC-12W Liberty Intelligence, Surveillance, and Reconnaissance aircraft
نقصانات

24 سپاہی ہلاک (2 افسروں کو ملا کر)

13 soldiers injured
کوئی نہیں
Salala is located in پاکستان
Salala
Salala
Location within Pakistan

26 نومبر 2011ء کو نیٹو کے ہیلی کاپٹروں نے پاکستانی کے قبائلی علاقے مہمند ایجنسی میں پاک افغان سرحد کے قریب سلالہ چیک پوسٹ پر حملہ کیا ہے جس کے نتیجے میں پچیس پاکستانی فوجی ہلاک اور چودہ زخمی ہو گئے.[5]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Shaheed Major Mujahid Mirani laid to rest in Naudero graveyard". Associated Press of Pakistan. 27 November 2011. اخذ کردہ بتاریخ 28 November 2011. 
  2. ^ 2.0 2.1 "Pakistan buries troops amid fury over NATO strike". Express Tribune. اخذ کردہ بتاریخ 28 November 2011. 
  3. "Nato airstrike kills 25 Pakistani troops | PaperPK News about Pakistan". Paperpk.com. اخذ کردہ بتاریخ 29 November 2011. 
  4. Saeed Shah; Luke Harding (29 November 2011). "Taliban may have lured Nato forces to attack Pakistani outpost – US". The Guardian (London). http://www.guardian.co.uk/world/2011/nov/29/nato-bombing-pakistani-military-base۔ اخذ کردہ بتاریخ 29 November 2011. 
  5. "مہمند ایجنسی میں نیٹو کا حملہ، پچیس پاکستانی فوجی ہلاک". ریڈیو کمپنی صدائے روس. November 25, 2011. http://urdu.ruvr.ru/2011/11/26/61062853.html.