2016ء آئی سی سی عالمی ٹی ٹوئنٹی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
2016 آئی سی سی عالمی ٹوئنٹی ٹوئنٹی
تاریخ8 مارچ – 3 اپریل2016
منتظمبین الاقوامی کرکٹ کونسل
کرکٹ طرزٹوئنٹی20 بین الاقوامی
ٹورنامنٹ طرزGroup stage اور knockout
میزبانFlag of India.svg بھارت
فاتحویسٹ انڈیز کرکٹ بورڈ کا پرچم ویسٹ انڈیز (دوسری بار)
شریک ٹیمیں16
کل مقابلے35
بہترین کھلاڑیبھارت کا پرچم ویرات کوہلی
کثیر رنزبنگلادیش کا پرچم تمیم اقبال (295)
کثیر وکٹیںافغانستان کا پرچم محمد نبی (12)
باضابطہ ویب سائٹwww.icc-cricket.com
یو ڈی آر ایسNo
2014
2020

2016ء آئی سی سی عالمی ٹی ٹوئینٹی مقابلہ چھٹا آئی سی سی عالمی ٹی ٹوئینٹی مقابلہ تھا اس کی میزبانی 11 مارچ سے 3 اپریل 2016ء کے تک بھارت نے کی۔ عالمی کرکٹ کونسل نے 28 جنوری 2105ء کو دوبئی کے ایک اجلاس میں اس کی میزبانی بھارت کے حوالے کی۔ سری لنکا کی ٹیم اپنے اعزاز کا دفاع کرنے میں ناکام رہی۔ فائنل میچ میں ویسٹ انڈیزآرکائیو شدہ (Date missing) بذریعہ cricketdugout.com (Error: unknown archive URL) نے انگلینڈ کو ہرا کر دوسری بار عالمی ٹی ٹوئینٹی کا اعزاز حاصل کیا۔

مقامات[ترمیم]

21 جولائی 2015ء کو، بھارتی کرکٹ بورڈ نے میزبان شہروں کے ناموں کا اعلان کیا، جہاں مقابلے منعقد ہونے تھے۔ بنگلور، چینائی، دھرم شالہ، اجیت گڑھ، ممبئی، ناگپور اور نئی دہلی، کولکاتہ، میں میچ ہوں گے۔[1] چنائی ایک قانونی مسئلہ، تین اسٹینڈ کی تعمیر کی وجہ سے ایک میچ کی میزبانی نہ کر سکا۔[2] ہماچل پردیش کے وزیر اعلیٰ نے سکیورٹی خدشات کی بنا پر دھرم شالہ میں ہونے والے پاکستان بھارت میچ میں پاکستانی ٹیم کو سکیورٹی دینے سے انکار کر دیا بعد ازاں یہ میچ ایڈن گارڈنز کلکتہ میں کھیلا گیا۔ ودربہ کرکٹ ایسوسی ایشن اسٹیڈیم، ناگپور نے گروپ بی کے تمام مقابلوں کی میزبانی کی اور ہماچل پردیش کرکٹ ایسوسی ایشن اسٹیڈیم، دھرم شالہ نے گروپ اے کے تمام مقابلوں کی میزبانی کی۔[3] The پاک بھارت کرکٹ مسابقت match، was scheduled to be played at HPCA Stadium.[4] With the announcement that HPCA authority could not provide the required security for Pakistani team،[5] the match was moved to ایڈن گارڈنز، کولکاتہ۔[6]

بنگلور دھرم شالہ اجیت گڑھ
ایم چناسوامی اسٹیڈیم HPCA Stadium پی سی اے بندرا اسٹیڈیم
گنجائش: 40,000 گنجائش: 23,000 گنجائش: 26,950
Chinnaswamy Stadium MI vs RCB.jpg Dharamshala stadium,himachal pradesh.jpg LightsMohali.png
میچ: 3 میچ: 7 میچ: 3
کولکاتہ
ایڈن گارڈنز
گنجائش: 66,349
Eden Gardens.jpg
میچ: 5 (فائنل)
ممبئی ناگپور نئی دہلی
وانکھیڈے اسٹیڈیم ودربھ کرکٹ ایسوسی ایشن اسٹیڈیم فیروز شاہ کوٹلہ سٹیڈیم
گنجائش: 32,000 گنجائش: 45,000 گنجائش: 40,715
Wankhede ICC WCF.jpg VCA Nagpur,India.jpg Feroz Shah Kotla Cricket Stadium, Delhi.jpg
میچ: 4 (سیمی فائنل) میچ: 9 میچ: 4 (سیمی فائنل)

کوالیفائڈ ٹیمیں[ترمیم]

اہلیت ملک
میزبان  بھارت
ارکان انٹرنیشنل کرکٹ کونسل  آسٹریلیا
 انگلستان
 نیوزی لینڈ
 پاکستان
 جنوبی افریقا
 سری لنکا
 ویسٹ انڈیز
 بنگلادیش
 زمبابوے
اہل  سکاٹ لینڈ
 نیدرلینڈز
 آئرلینڈ
 ہانگ کانگ
 افغانستان
 سلطنت عمان

انتظامیہ[ترمیم]

T6 میچ ریفری فرائص سر انجام دے رہے ہیں۔ آئی سی سی ایلیٹ پینل کے ریفری :[7]

مردوں کے عالمی ٹی ٹوئٹنی میں 8 ممالک کے 15 آئی سی سی ایلیٹ پینل کے امپائرز فرائص سرا نجام دے رہے ہیں، جن میں سے تین آئی سی سی امپائرز کے بین الاقوامی پینل سے ہیں :[7]

آسٹریلیا


انگلینڈ


بھارت
نیوزی لینڈ


پاکستان
جنوبی افریقا


Sri Lanka
ویسٹ انڈیز

انعامی رقم[ترمیم]

2016ء آئی سی سی عالمی ٹی ٹوئینٹی کی کل انعامی 10 ملین ڈالر رکھی گئی، یہ 2014ء کے مقابلے میں 33% زیادہ ہے۔ انعامی رقم ذیل کے مطابق تقسیم کی جائے گی:[8]

مرحلہ انعامی رقم (امریکی ڈالر)
فاتح $3.5 ملین
فائنل ہارنے والی ٹیم $1.5 ملین
سیمی فائنل ہارنے والے $750,000 ہر ایک کو
“سوپر 10 مرحلہ” میچ جیتنے والی ٹیم کو اضافی $50,000
شرکت کی ضمانت پر تمام 16 ٹیموں کے لیے $300,000
کل $10,00,000

شیڈیول[ترمیم]

گروپ اے[ترمیم]

ٹیم کھیلے جیتے ہارے بلا نتیجہ NRR پوائنٹ NRR
 نیوزی لینڈ 4 4 0 0 0 8 +1.900
 بھارت 4 3 1 0 0 6 –0.305
 آسٹریلیا 4 2 2 0 0 4 +0.233
 پاکستان 4 1 3 0 0 2 –0.093
 بنگلادیش 4 0 4 0 0 0 –1.805
9 مارچ
15:00 (د/ر)
اسکور کارڈ
بنگلادیش 
153/7 (20 اوور)
بمقابلہ
 نیدرلینڈز
145/7 (20 اوور)
تمیم اقبال 83* (58)
Timm van der Gugten 3/21 (4 اوور)
Peter Borren 29 (28)
الامین حسین 2/24 (3 اوور)
Bangladesh won by 8 runs
ہماچل پردیش کرکٹ ایسوسی ایشن اسٹیڈیم، دھرم شالہ
امپائر: Sundaram Ravi (بھارت) اور راڈ ٹکر (Aus)
بہترین کھلاڑی: تمیم اقبال (Ban)
  • Netherlands نے ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کی۔

9 مارچ
19:30 (د/ر)
اسکور کارڈ
آئرلینڈ 
154/5 (20 اوور)
بمقابلہ
 سلطنت عمان
157/8 (19.4 اوور)
Oman won by 2 wickets
ہماچل پردیش کرکٹ ایسوسی ایشن اسٹیڈیم، دھرم شالہ
امپائر: Chris Gaffaney (NZ) اور Nigel Llong (انگلینڈ)
بہترین کھلاڑی: عامر علی (Oma)
  • آئر لینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کی۔
  • This was Oman's first victory in an ICC World T20 tournament.[9]

11 مارچ
15:00 (د/ر)
اسکور کارڈ
بمقابلہ
  • عمان نے ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کی۔
  • No play was possible due to rain.
  • Netherlands were eliminated as a result of this match.[10]

11 مارچ
19:30 (د/ر)
اسکور کارڈ
بنگلادیش 
94/2 (8 اوور)
بمقابلہ
تمیم اقبال 47 (26)
جارج ڈوکریل 1/18 (2 اوور)
  • آئر لینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کی۔
  • The match was reduced to 12 overs per side due to rain.
  • Rain stopped play in Bangladesh's innings اور no further play was possible.
  • Ireland were eliminated as a result of this match.[11]

13 مارچ
15:00 (د/ر)
اسکور کارڈ
نیدرلینڈز 
59/5 (6 اوور)
بمقابلہ
 آئرلینڈ
47/7 (6 اوور)
Stephan Myburgh 27 (18)
جارج ڈوکریل 3/7 (2 اوور)
پال سٹرلنگ 15 (7)
Paul van Meekeren 4/11 (2 اوور)
Netherlands won by 12 runs
ہماچل پردیش کرکٹ ایسوسی ایشن اسٹیڈیم، دھرم شالہ
امپائر: Nigel Llong (انگلینڈ) اور Sundaram Ravi (بھارت)
بہترین کھلاڑی: Paul van Meekeren (نیوزی لینڈ)
  • آئر لینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کی۔
  • The match was reduced to six overs per side due to rain.

13 مارچ
19:30 (د/ر)
اسکور کارڈ
بنگلادیش 
180/2 (20 اوور)
بمقابلہ
 سلطنت عمان
65/9 (12 اوور)
تمیم اقبال 103* (63)
خاور علی 1/24 (3 اوور)
Jatinder Singh 25 (20)
شکیب الحسن 4/15 (3 اوور)
Bangladesh won by 54 runs (D/L method)
ہماچل پردیش کرکٹ ایسوسی ایشن اسٹیڈیم، دھرم شالہ
امپائر: Chris Gaffaney (NZ) اور راڈ ٹکر (Aus)
بہترین کھلاڑی: تمیم اقبال (Ban)
  • عمان نے ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کی۔
  • Rain reduced Oman's innings to 12 overs with a target of 120 runs.
  • Bangladesh qualified for the Super 10 stage of the tournament as a result of this match، while Oman were eliminated۔[12]
  • تمیم اقبال became the first player for Bangladesh اور 18th overall to score a century in a T20I match۔[13] He also became the first player for Bangladesh اور 25th overall to pass 1،000 runs in T20Is.[14][15]

گروپ بی[ترمیم]

سانچہ:2016 ICC World Twenty20 Group B

8 مارچ
15:00 (د/ر)
اسکور کارڈ
زمبابوے 
158/8 (20 اوور)
بمقابلہ
 ہانگ کانگ
144/6 (20 اوور)
Vusi Sibanda 59 (46)
Tanwir Afzal 2/19 (4 اوور)
Jamie Atkinson 53 (44)
ڈونلڈ تریپانو 2/27 (4 اوور)
Zimbabwe won by 14 runs
ودربھ کرکٹ ایسوسی ایشن اسٹیڈیم، ناگپور
امپائر: علیم ڈار (Pak) اور Ian Gould (انگلینڈ)
بہترین کھلاڑی: Vusi Sibanda (Zim)
  • Hong Kong نے ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کی۔
  • ریان کیمبل (HK) became the oldest player to make his T20I debut (44 years اور 30 days)۔[16]

8 مارچ
19:30 (د/ر)
اسکور کارڈ
افغانستان 
170/5 (20 اوور)
بمقابلہ
 سکاٹ لینڈ
156/5 (20 اوور)
محمد شہزاد 61 (39)
Alasdair Evans 1/24 (4 اوور)
George Munsey 41 (29)
Rashid Khan 2/28 (4 اوور)
Afghanistan won by 14 runs
ودربھ کرکٹ ایسوسی ایشن اسٹیڈیم، ناگپور
امپائر: ماریس ایراسمس (SA) اور رچرڈ الینگورتھ (انگلینڈ)
بہترین کھلاڑی: محمد شہزاد (Afg)
  • Afghanistan نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کی۔

10 مارچ
15:00 (د/ر)
اسکور کارڈ
زمبابوے 
147/7 (20 اوور)
بمقابلہ
 سکاٹ لینڈ
136 (19.4 اوور)
سین ولیمز (کرکٹر) 53 (36)
Mark Watt 2/21 (4 اوور)
Zimbabwe won by 11 runs
ودربھ کرکٹ ایسوسی ایشن اسٹیڈیم، ناگپور
امپائر: علیم ڈار (Pak) اور ماریس ایراسمس (SA)
بہترین کھلاڑی: ویلنگٹن مساکادزا (Zim)
  • Zimbabwe نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کی۔
  • Scotland were eliminated as a result of this match.[17]

10 مارچ
19:30 (د/ر)
اسکور کارڈ
ہانگ کانگ 
116/6 (20 اوور)
بمقابلہ
 افغانستان
119/4 (18 اوور)
Anshuman Rath 28 (31)
محمد نبی 4/20 (4 اوور)
محمد شہزاد 41 (40)
ریان کیمبل 2/28 (4 اوور)
Afghanistan won by 6 wickets
ودربھ کرکٹ ایسوسی ایشن اسٹیڈیم، ناگپور
امپائر: Ian Gould (انگلینڈ) اور رچرڈ الینگورتھ (انگلینڈ)
بہترین کھلاڑی: محمد نبی (Afg)
  • Hong Kong نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کی۔
  • Hong Kong were eliminated as a result of this match.[18]

12 مارچ
15:00 (د/ر)
اسکور کارڈ
افغانستان 
186/6 (20 اوور)
بمقابلہ
 زمبابوے
127 (19.4 اوور)
Afghanistan won by 59 runs
ودربھ کرکٹ ایسوسی ایشن اسٹیڈیم، ناگپور
امپائر: علیم ڈار (Pak) اور رچرڈ الینگورتھ (انگلینڈ)
بہترین کھلاڑی: محمد نبی (Afg)
  • Afghanistan نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کی۔
  • Afghanistan qualified for the Super 10 stage of the tournament as a result of this match، while Zimbabwe were eliminated۔[19]
  • Afghanistan progressed to the second phase of a World Twenty20 tournament for the first time.[20]

12 مارچ
19:30 (د/ر)
اسکور کارڈ
ہانگ کانگ 
127/7 (20 اوور)
بمقابلہ
 سکاٹ لینڈ
78/2 (8 اوور)
Matthew Cross 22 (14)
Aizaz Khan 1/11 (1 over)
Scotland won by 8 wickets (D/L method)
ودربھ کرکٹ ایسوسی ایشن اسٹیڈیم، ناگپور
امپائر: ماریس ایراسمس (SA) اور Ian Gould (انگلینڈ)
بہترین کھلاڑی: Matt Machan (Sco)
  • Hong Kong نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کی۔
  • Rain reduced Scotland's innings to 10 overs with a target of 76 runs.
  • This was Scotland's first victory in an ICC tournament.[21]

دوسرا/سوپر 10 مرحلہ[ترمیم]

اہل ملک
میزبان  بھارت
ارکان انٹرنیشنل کرکٹ کونسل  آسٹریلیا
 انگلستان
 نیوزی لینڈ
 پاکستان
 جنوبی افریقا
 سری لنکا
 ویسٹ انڈیز
پہلے مرحلے سے جیتنے والے  افغانستان
 بنگلادیش

گروپ 1[ترمیم]

ٹیم کھیلے جیتے ہارے بلا نتیجہ نیٹ رن ریٹ پوائنٹ NRR
 ویسٹ انڈیز 4 3 1 0 0 6 +0.359
 انگلستان 4 3 1 0 0 6 +0.145
 جنوبی افریقا 4 2 2 0 0 4 +0.651
 سری لنکا 4 1 3 0 0 2 –0.461
 افغانستان 4 1 3 0 0 2 –0.715
16 مارچ
19:30 (د/ر)
اسکور کارڈ
انگلستان 
182/6 (20 اوور)
بمقابلہ
 ویسٹ انڈیز
183/4 (18.1 اوور)
جو روٹ 48 (36)
Andre Russell 2/36 (4 اوور)
کرس گیل 100* (48)
عادل رشید 1/20 (2 اوور)
West Indies won by 6 wickets
وانکھیڈے اسٹیڈیم، ممبئی
امپائر: Chris Gaffaney (نیوزی لینڈ) اور راڈ ٹکر (آسٹریلیا)
بہترین کھلاڑی: کرس گیل (WI)

17 مارچ
19:30 (د/ر)
اسکور کارڈ
افغانستان 
153/7 (20 اوور)
بمقابلہ
 سری لنکا
155/4 (18.5 اوور)
Tillakaratne Dilshan 83* (56)
محمد نبی 1/25 (4 اوور)
Sri Lanka won by 6 wickets
ایڈن گارڈنز، کولکاتہ
امپائر: Bruce Oxenford (آسٹریلیا) اور Joel Wilson (WI)
بہترین کھلاڑی: Tillakaratne Dilshan (سری لنکا)
  • Afghanistan نے ٹاس جیت کر اور پہلے بلے بازی کی۔

18 مارچ
19:30 (د/ر)
اسکور کارڈ
جنوبی افریقا 
229/4 (20 اوور)
بمقابلہ
 انگلستان
230/8 (19.4 اوور)
ہاشم آملہ 58 (31)
معین علی 2/34 (4 اوور)
جو روٹ 83 (44)
Kyle Abbott 3/41 (3.4 اوور)
England won by 2 wickets
وانکھیڈے اسٹیڈیم، ممبئی
امپائر: Sundaram Ravi (بھارت) اور پال ریفل (آسٹریلیا)
بہترین کھلاڑی: جو روٹ (انگلینڈ)
  • England نے ٹاس جیت کر اور پہلے فیلڈنگ کی۔
  • This was the highest successful run chase in a World Twenty20 match اور the second highest in all T20I matches.[25]
  • England scored their first fifty runs from 17 balls، the joint second fastest in T20Is.[26]
  • ہاشم آملہ (جنوبی افریقا) scored the most runs between dismissals in T20Is (224)۔[26]
  • کوئنٹن ڈی کاک equalled the record for the fastest fifty in T20Is for a South Africa player (21 balls)۔[26]

20 مارچ
15:00 (د/ر)
اسکور کارڈ
جنوبی افریقا 
209/5 (20 اوور)
بمقابلہ
 افغانستان
172 (20 اوور)
محمد شہزاد 44 (19)
Chris Morris 4/27 (4 اوور)
South Africa won by 37 runs
وانکھیڈے اسٹیڈیم، ممبئی
امپائر: Chris Gaffaney (نیوزی لینڈ) اور پال ریفل (آسٹریلیا)
بہترین کھلاڑی: Chris Morris (جنوبی افریقا)

20 مارچ
19:30 (د/ر)
اسکور کارڈ
سری لنکا 
122/9 (20 اوور)
بمقابلہ
 ویسٹ انڈیز
127/3 (18.2 اوور)
Andre Fletcher 84* (64)
Milinda Siriwardana 2/33 (4 اوور)
West Indies won by 7 wickets
ایم چناسوامی اسٹیڈیم، بنگلور
امپائر: علیم ڈار (پاکستان) اور Johan Cloete (جنوبی افریقا)
بہترین کھلاڑی: Andre Fletcher (WI)
  • West Indies نے ٹاس جیت کر اور پہلے فیلڈنگ کی۔

23 مارچ
15:00 (د/ر)
اسکور کارڈ
انگلستان 
142/7 (20 اوور)
بمقابلہ
 افغانستان
127/9 (20 اوور)
معین علی 41* (33)
محمد نبی 2/17 (4 اوور)
Rashid Khan 2/17 (4 اوور)
England won by 15 runs
فیروز شاہ کوٹلہ سٹیڈیم، دہلی
امپائر: Sundaram Ravi (بھارت) اور راڈ ٹکر (آسٹریلیا)
بہترین کھلاڑی: معین علی (انگلینڈ)
  • England نے ٹاس جیت کر اور پہلے بلے بازی کی۔
  • Afghanistan were eliminated as a result of this match.[28]
  • This was the first T20I match to be played at the Feroz Shah Kotla ground.[29]

25 مارچ
19:30 (د/ر)
اسکور کارڈ
جنوبی افریقا 
122/8 (20 اوور)
بمقابلہ
 ویسٹ انڈیز
123/7 (19.4 اوور)
کوئنٹن ڈی کاک 47 (46)
کرس گیل 2/17 (3 اوور)
West Indies won by 3 wickets
ودربھ کرکٹ ایسوسی ایشن اسٹیڈیم، ناگپور
امپائر: Ian Gould (انگلینڈ) اور رچرڈ کیٹلبرو (انگلینڈ)
بہترین کھلاڑی: مارلن سیموئلز (WI)
  • West Indies نے ٹاس جیت کر اور پہلے فیلڈنگ کی۔
  • West Indies qualified for the semi-finals as a result of this match.[30]
  • مارلن سیموئلز became the second player for the West Indies to pass 1،000 runs in T20Is.[31]
  • ڈوین براوو became the third player for the West Indies to pass 1،000 runs in T20Is.[31]

26 مارچ
19:30 (د/ر)
اسکور کارڈ
انگلستان 
171/4 (20 اوور)
بمقابلہ
 سری لنکا
161/8 (20 اوور)
جوس بٹلر 66* (37)
Jeffrey Vandersay 2/26 (4 اوور)
England won by 10 runs
فیروز شاہ کوٹلہ سٹیڈیم، دہلی
امپائر: پال ریفل (آسٹریلیا) اور راڈ ٹکر (آسٹریلیا)
بہترین کھلاڑی: جوس بٹلر (انگلینڈ)
  • Sri Lanka نے ٹاس جیت کر اور پہلے فیلڈنگ کی۔
  • England qualified for the semi-finals as a result of this match، while Sri Lanka اور South Africa were eliminated۔[32]

27 مارچ
15:00 (د/ر)
اسکور کارڈ
افغانستان 
123/7 (20 اوور)
بمقابلہ
 ویسٹ انڈیز
117/8 (20 اوور)
ڈوین براوو 28 (29)
Rashid Khan 2/26 (4 اوور)
محمد نبی 2/26 (4 اوور)
Afghanistan won by 6 runs
ودربھ کرکٹ ایسوسی ایشن اسٹیڈیم، ناگپور
امپائر: علیم ڈار (پاکستان) اور Bruce Oxenford (آسٹریلیا)
بہترین کھلاڑی: نجیب اللہ زدران (Afg)
  • West Indies نے ٹاس جیت کر اور پہلے فیلڈنگ کی۔
  • ایون لیوس (WI) made his T20I debut.
  • Afghanistan's score was the second-lowest total successfully defended in a World Twenty20 match.[33]
  • It was the first time Afghanistan اور West Indies played each other in an international fixture.[34]

28 مارچ
19:30 (د/ر)
اسکور کارڈ
سری لنکا 
120 (19.3 اوور)
بمقابلہ
 جنوبی افریقا
122/2 (17.4 اوور)
Tillakaratne Dilshan 36 (40)
Kyle Abbott 2/14 (3.3 اوور)
ہاشم آملہ 56* (52)
سرنگا لکمل 1/28 (3.4 اوور)
South Africa won by 8 wickets
فیروز شاہ کوٹلہ سٹیڈیم، دہلی
امپائر: Sundaram Ravi (بھارت) اور راڈ ٹکر (آسٹریلیا)
بہترین کھلاڑی: Aaron Phangiso (جنوبی افریقا)
  • South Africa نے ٹاس جیت کر اور پہلے فیلڈنگ کی۔
  • Tillakaratne Dilshan (سری لنکا) played in the most number of World Twenty20 matches (35)۔[35]
  • ہاشم آملہ became the fourth player for South Africa to pass 1،000 runs in T20Is.[36]

گروپ 2[ترمیم]

سانچہ:2016 ICC World Twenty20 Super 10 Group 2

15 مارچ
19:30 (د/ر)
اسکور کارڈ
نیوزی لینڈ 
126/7 (20 اوور)
بمقابلہ
 بھارت
79 (18.1 اوور)
New Zealand won by 47 runs
ودربھ کرکٹ ایسوسی ایشن اسٹیڈیم، ناگپور
امپائر: کمار دھرما سینا (سری لنکا) اور رچرڈ الینگورتھ (انگلینڈ)
بہترین کھلاڑی: مچل سینٹنر (نیوزی لینڈ)
  • نیوزی لینڈ نے ٹاس جیت کر اور پہلے بلے بازی کی۔
  • مچل سینٹنر recorded the best figures for a New Zealand spin bowler in T20Is.[37]

16 مارچ
15:00 (د/ر)
اسکور کارڈ
پاکستان 
201/5 (20 اوور)
بمقابلہ
 بنگلادیش
146/6 (20 اوور)
محمد حفیظ 64 (42)
تسکین احمد 2/32 (4 اوور)
Pakistan won by 55 runs
ایڈن گارڈنز، کولکاتہ
امپائر: Ian Gould (انگلینڈ) اور رچرڈ کیٹلبرو (انگلینڈ)
بہترین کھلاڑی: شاہد آفریدی (پاکستان)
  • Pakistan نے ٹاس جیت کر اور پہلے بلے بازی کی۔
  • شکیب الحسن became the second player for Bangladesh to pass 1،000 runs in T20Is.[38]
  • Shakib Al Hasan also became the second all-rounder to score 1،000 runs اور take 50 wickets in T20Is.[38]

18 مارچ
15:00 (د/ر)
اسکور کارڈ
نیوزی لینڈ 
142/8 (20 اوور)
بمقابلہ
 آسٹریلیا
134/9 (20 اوور)
New Zealand won by 8 runs
ہماچل پردیش کرکٹ ایسوسی ایشن اسٹیڈیم، دھرم شالہ
امپائر: ماریس ایراسمس (جنوبی افریقا) اور Nigel Llong (انگلینڈ)
بہترین کھلاڑی: مچل میک کلیناگھن (نیوزی لینڈ)
  • نیوزی لینڈ نے ٹاس جیت کر اور پہلے بلے بازی کی۔

19 مارچ
19:30 (د/ر)
اسکور کارڈ
پاکستان 
118/5 (18 اوور)
بمقابلہ
 بھارت
119/4 (15.5 اوور)
ویرات کوہلی 55* (37)
محمد سمیع 2/17 (2 اوور)
India won by 6 wickets
ایڈن گارڈنز، کولکاتہ
امپائر: Ian Gould (انگلینڈ) اور رچرڈ کیٹلبرو (انگلینڈ)
بہترین کھلاڑی: ویرات کوہلی (بھارت)
  • India نے ٹاس جیت کر اور پہلے فیلڈنگ کی۔
  • The start of the match was delayed by a wet outfield اور the game was reduced to 18 overs per side.
  • This was India's eleventh victory against Pakistan in ICC World Cup matches across both ODI اور T20I formats.[39]
  • احمد شہزاد became the fifth player for Pakistan to pass 1،000 runs in T20Is.[40]

21 مارچ
19:30 (د/ر)
اسکور کارڈ
بنگلادیش 
156/5 (20 اوور)
بمقابلہ
 آسٹریلیا
157/7 (18.3 اوور)
محمداللہ 49* (29)
ایڈم زمپا 3/23 (4 اوور)
عثمان خواجہ 58 (45)
شکیب الحسن 3/27 (4 اوور)
آسٹریلیا won by 3 wickets
ایم چناسوامی اسٹیڈیم، بنگلور
امپائر: Ian Gould (انگلینڈ) اور رچرڈ کیٹلبرو (انگلینڈ)
بہترین کھلاڑی: ایڈم زمپا (آسٹریلیا)

22 مارچ
19:30 (د/ر)
اسکور کارڈ
نیوزی لینڈ 
180/5 (20 اوور)
بمقابلہ
 پاکستان
158/5 (20 اوور)
مارٹن گپٹل 80 (48)
محمد سمیع 2/23 (4 اوور)
شرجیل خان 47 (25)
ایڈم ملنے 2/25 (4 اوور)
New Zealand won by 22 runs
پنجاب کرکٹ ایسوسی آئی ایس بندرا اسٹیڈیم، اجیت گڑھ
امپائر: رچرڈ الینگورتھ (انگلینڈ) اور Nigel Llong (انگلینڈ)
بہترین کھلاڑی: مارٹن گپٹل (نیوزی لینڈ)
  • نیوزی لینڈ نے ٹاس جیت کر اور پہلے بلے بازی کی۔
  • New Zealand qualified for the semi-finals as a result of this match.[42]
  • شاہد آفریدی (پاکستان) became the leading wicket-taker in World Twenty20 matches (39)۔[43]

23 مارچ
19:30 (د/ر)
اسکور کارڈ
بھارت 
146/7 (20 اوور)
بمقابلہ
 بنگلادیش
145/9 (20 اوور)
India won by 1 run
ایم چناسوامی اسٹیڈیم، بنگلور
امپائر: علیم ڈار (پاکستان) اور Bruce Oxenford (آسٹریلیا)
بہترین کھلاڑی: روی چندرن ایشون (بھارت)
  • بنگلا دیش نے ٹاس جیت کر اور پہلے فیلڈنگ کی۔
  • Bangladesh were eliminated as a result of this match.[44]
  • This was the fourth one-run win in a World Twenty20 match.[45]
  • This was the first time three wickets fell from the last three balls for a chasing side in a T20I match.[45]
  • مہندر سنگھ دھونی became the fifth player for India to pass 1،000 runs in T20Is.[45]

25 مارچ
15:00 (د/ر)
اسکور کارڈ
آسٹریلیا 
193/4 (20 اوور)
بمقابلہ
 پاکستان
172/8 (20 اوور)
Steve Smith 61* (43)
عماد وسیم 2/31 (4 اوور)
آسٹریلیا won by 21 runs
پنجاب کرکٹ ایسوسی آئی ایس بندرا اسٹیڈیم، اجیت گڑھ
امپائر: کمار دھرما سینا (سری لنکا) اور ماریس ایراسمس (جنوبی افریقا)
بہترین کھلاڑی: جیمز فالکنر (کرکٹر) (آسٹریلیا)

26 مارچ
15:00 (د/ر)
اسکور کارڈ
نیوزی لینڈ 
145/8 (20 اوور)
بمقابلہ
 بنگلادیش
70 (15.4 اوور)
New Zealand won by 75 runs
ایڈن گارڈنز، کولکاتہ
امپائر: Johan Cloete (جنوبی افریقا) اور مائیکل گف (انگلینڈ)
بہترین کھلاڑی: کین ولیمسن (نیوزی لینڈ)

27 مارچ
19:30 (د/ر)
اسکور کارڈ
آسٹریلیا 
160/6 (20 اوور)
بمقابلہ
 بھارت
161/4 (19.1 اوور)
ایرن فنچ 43 (34)
ہاردیک پانڈیا 2/36 (4 اوور)
ویرات کوہلی 82* (51)
شین واٹسن 2/23 (4 اوور)
India won by 6 wickets
پنجاب کرکٹ ایسوسی آئی ایس بندرا اسٹیڈیم، اجیت گڑھ
امپائر: کمار دھرما سینا (سری لنکا) اور ماریس ایراسمس (جنوبی افریقا)
بہترین کھلاڑی: ویرات کوہلی (بھارت)
  • آسٹریلیا نے ٹاس جیت کر اور پہلے بلے بازی کی۔
  • India qualified for the semi-finals as a result of this match، while Australia were eliminated۔[52]
  • شین واٹسن (آسٹریلیا) played in his last international match.[53]
  • ویرات کوہلی (بھارت) reached 1،500 runs in T20Is in the fewest number of innings (39)۔[54]
  • Virat Kohli won the most man of the match awards in a calendar year in T20Is (6) اور also became the most runs scorer in a calendar year in T20I (536)۔

۔[55][56]

ناک آؤٹ مرحلہ[ترمیم]

سیمی فائنل فائنل
      
 نیوزی لینڈ 153/8 (20 اوور)
 انگلستان 159/3 (17.1 اوور)
 انگلستان 155/9 (20 اوور)
 ویسٹ انڈیز 161/6 (19.4 اوور)
 ویسٹ انڈیز 196/3 (19.4 اوور)
 بھارت 192/2 (20 اوور)

سیمی فائنل[ترمیم]

30 مارچ
19:00 (د/ر)
اسکور کارڈ
نیوزی لینڈ 
153/8 (20 اوور)
بمقابلہ
 انگلستان
159/3 (17.1 اوور)
کولن منرو 46 (32)
بین اسٹوکس 3/26 (4 اوور)
جیسن رائے 78 (44)
ایش سودھی 2/42 (4 اوور)
انگلینڈ سات ووکٹوں سے جیت گيا
فیروز شاہ کوٹلہ سٹیڈیم، دہلی
امپائر: کمار دھرما سینا (سری لنکا) اور راڈ ٹکر (آسٹریلیا)
بہترین کھلاڑی: جیسن رائے (انگلینڈ)

31 مارچ
19:00 (د/ر)
اسکور کارڈ
بھارت 
192/2 (20 اوور)
بمقابلہ
 ویسٹ انڈیز
196/3 (19.4 اوور)
لینڈل سمنز 82* (51)
ویرات کوہلی 1/15 (1.4 اوور)
ویسٹ انڈیز 7 ووکٹوں سے جیت گيا
وانکھیڈے اسٹیڈیم، ممبئی
امپائر: Ian Gould (انگلینڈ) اور رچرڈ کیٹلبرو (انگلینڈ)
بہترین کھلاڑی: لینڈل سمنز (ویسٹ انڈیز)
  • ویسٹ انڈیز ٹاس جیت کر اور پہلے بلے بازی کی۔
  • ویسٹ انڈیز نے عالمی کپ میں ناک آؤٹ مرحلے میں سب سے بڑا ہدف مکمل کرنے کا ریکاڑد بنایا۔[60]

فائنل[ترمیم]

3 اپریل
19:00 (د/ر)
اسکور کارڈ
انگلستان 
155/9 (20 اوور)
بمقابلہ
 ویسٹ انڈیز
161/6 (19.4 اوور)
جو روٹ 54 (36)
کارلوس بریتھویٹ 3/23 (4 اوور)
ویسٹ انڈیز 4 ووکٹوں سے جیت گیا
ایڈن گارڈنز، کولکتہ
امپائر: کمار دھرما سینا (سری لنکا) اور راڈ ٹکر (آسٹریلیا)
بہترین کھلاڑی: مارلن سیموئلز (ویسٹ انڈیز)
  • ویسٹ انڈیز ٹاس جیت کر اور پہلے بلے بازی کی۔۔

شماریات[ترمیم]

زیادہ رنز[ترمیم]

کھلاڑی میچ اننگز رنز اوسط SR HS 100 50 4s 6s
بنگلادیش کا پرچم تمیم اقبال 6 6 295 73.75 142.51 103* 1 1 24 14
افغانستان کا پرچم محمد شہزاد (کرکٹ کھلاڑی) 7 7 222 31.71 140.50 61 0 1 23 12
بھارت کا پرچم ویرات کوہلی 4 4 184 92.00 132.37 82* 0 2 18 4
انگلستان کا پرچم جو روٹ 4 4 168 42.00 150.00 83 0 1 14 7
جنوبی افریقا کا پرچم کوئنٹن ڈی کاک 4 4 153 38.25 142.99 52 0 1 18 6
ماخذ: کرک انفو[61]

زیادہ وکٹیں[ترمیم]

کھلاڑی میچ اننگز وکٹیں اوور اکانومی۔ اوسط۔ BBI S/R 4WI 5WI
افغانستان کا پرچم محمد نبی 7 7 12 27 6.07 13.66 4/20 13.4 1 0
افغانستان کا پرچم راشد خان 7 7 11 28 6.53 16.63 3/11 15.2 0 0
بنگلادیش کا پرچم شکیب الحسن 7 6 10 23 7.21 16.60 4/15 13.8 1 0
بنگلادیش کا پرچم مصتفیض الرحمان 3 3 9 12 7.16 9.55 5/22 8.0 0 1
نیوزی لینڈ کا پرچم مچل سینٹنر 4 4 9 15 5.73 9.55 4/11 10.0 1 0
ماخذ: کرک انفو[62]

ریکارڈ[ترمیم]

ان سیریز میں 16 ریکارڈ بنائے گئے یا بنے۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Eden Gardens to host 2016 World T20 final". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 21 جولائی 2015. 
  2. "Chennai in danger of being cut as World T20 host". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 3 جنوری 2016. 
  3. "Fixtures for the ICC World Twenty20 India 2016". ICC. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 3 جنوری 2016. 
  4. "Dharamsala to host World T20 India-Pakistan match". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 7 مارچ 2016. 
  5. Gollapudi، Nagraj (1 مارچ 2016). "Political tussle clouds India-Pakistan World T20 match". ESPNcricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 10 مارچ 2016. 
  6. "India-Pakistan game moved to Kolkata". ESPNcricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 10 مارچ 2016. 
  7. ^ ا ب "ICC announces umpire and match referee appointments for the ICC World Twenty20 India 2016". بین الاقوامی کرکٹ کونسل. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 25 فروری 2016. 
  8. totalsportek2. "ICC World Twenty20 2016 Prize Money (Confirmed)". TOTAL SPORTEK. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 27 مارچ 2016. 
  9. "Joy for underdogs Oman، Ireland stunned". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 12 مارچ 2016. 
  10. "Netherlands ousted after Dharamsala washout". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 11 مارچ 2016. 
  11. "Persistent rain knocks Ireland out". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 11 مارچ 2016. 
  12. "World Twenty20 2016: Tamim Iqbal century sends Bangladesh through". برطانوی نشریاتی ادارہ. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 13 مارچ 2016. 
  13. "Statistics / Statsguru / Twenty20 Internationals / Batting records / Centuries". ESPNcricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 27 مارچ 2016. 
  14. "Tamim ton secures Bangladesh's berth". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 13 مارچ 2016. 
  15. "Statistics / Statsguru / Twenty20 Internationals / Batting records / 1000 career runs". ESPNcricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 27 مارچ 2016. 
  16. "Hong Kong eye second Full Member scalp". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 8 مارچ 2016. 
  17. "World Twenty20: Scotland knocked out after Zimbabwe loss". برطانوی نشریاتی ادارہ. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 10 مارچ 2016. 
  18. "Nabi، Shahzad to the fore in easy Afghanistan win". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 10 مارچ 2016. 
  19. "Afghanistan progress to main draw with thumping win". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 12 مارچ 2016. 
  20. "World Twenty20 2016: Afghanistan reach Super 10s with win over Zimbabwe". برطانوی نشریاتی ادارہ. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 12 مارچ 2016. 
  21. "Scotland end win drought at ICC global event". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 12 مارچ 2016. 
  22. "Gayle's 47-ball ton wipes out England". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 16 مارچ 2016. 
  23. "Chris Gayle century sees West Indies beat England at World Twenty20". BBC Sport. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 16 مارچ 2016. 
  24. "Gayle closes on century of sixes". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 16 مارچ 2016. 
  25. "Root takes England to record WT20 chase". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 18 مارچ 2016. 
  26. ^ ا ب پ "A pounding for fast bowlers". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 18 مارچ 2016. 
  27. "South Africa's Powerplay surge اور AB de Villiers' blitz". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 20 مارچ 2016. 
  28. "ICC World T20، Match 24، Super 10 Group 1: Afghanistan vs England". Zee News. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 23 مارچ 2016. 
  29. "Feroz Shah Kotla". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 23 مارچ 2016. 
  30. "West Indies in semi-finals، South Africa face exit". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 25 مارچ 2016. 
  31. ^ ا ب "Twenty20 Internationals: Batting records". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 25 مارچ 2016. 
  32. "World Twnety20 2016: England hold on to reach semi-finals". BBC Sport. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 25 مارچ 2016. 
  33. "Second-lowest total defended in World T20". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 27 مارچ 2016. 
  34. "Afghanistan Stuns West Indies To Create History". ICC Cricket. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 27 مارچ 2016. 
  35. "World T20 / Records / Most matches". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 28 مارچ 2016. 
  36. "Twenty20 Internationals: Batting records". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 مارچ 2016. 
  37. "Bounty for spin اور a shocker for India". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 15 مارچ 2016. 
  38. ^ ا ب "Explosive Afridi collects another T20 crown". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 16 مارچ 2016. 
  39. "Kohli special steers India home on a turner". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 20 مارچ 2016. 
  40. "The king of the run chase". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 20 مارچ 2016. 
  41. "Zampa's match-winning performance، Khawaja's maiden T20I fifty". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 21 مارچ 2016. 
  42. "New Zealand defend again to enter semi-finals". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 22 مارچ 2016. 
  43. "Guptill's run-filled year اور Pakistan's boundary drought". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 22 مارچ 2016. 
  44. "Bangladesh bow out of World Twenty20 losing last-over thriller against India by 1 run". BD News24. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 23 مارچ 2016. 
  45. ^ ا ب پ "One-run wins، three-in-three at the death". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 23 مارچ 2016. 
  46. "World Twenty20 2016: Pakistan out as Australia keep hopes alive". BBC Sport. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 25 مارچ 2016. 
  47. "Faulkner produces Australia's maiden T20I five-for". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 25 مارچ 2016. 
  48. "Records / Australia / Twenty20 Internationals / Smallest victories (including ties)". ESPNcricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 27 مارچ 2016. 
  49. "Most batsmen bowled in a T20I". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 26 مارچ 2016. 
  50. "NZ read conditions اور rout Bangladesh". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 26 مارچ 2016. 
  51. "World Twenty20: New Zealand beat Bangladesh for fourth win". BBC Sport. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 26 مارچ 2016. 
  52. "World Twenty20 2016: Virat Kohli leads India to T20 semi-finals". BBC Sport. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 27 مارچ 2016. 
  53. "Watson skips into T20 retirement". ESPNCricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 28 مارچ 2016. 
  54. "Kohli's wizardy اور the bogey team for Australia اور Faulkner". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 28 مارچ 2016. 
  55. "ICC World Twenty20: MOM awards this year is the most by any player in a calendar year in T20Is". India Today. 26 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 30 مارچ 2016. 
  56. "Records / Twenty20 Internationals / Batting records / Most runs in a calendar year". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 30 مارچ 2016. 
  57. "ICC World Twenty20: Ravichandran Ashwin first Indian to take 50 T20I wickets". India Today. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 30 مارچ 2016. 
  58. "World T20 / Records / Most dismissals". ESPNCricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 28 مارچ 2016. 
  59. "The four-over difference اور Roy's high". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 30 مارچ 2016. 
  60. "Runs in boundaries – 146 v 92". ESPN Cricinfo. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 31 مارچ 2016. 
  61. "Records / ICC World T20, 2016 / Most runs". ESPNCricinfo. 17 مارچ 2016. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 30 مارچ 2016. 
  62. "Records / ICC World T20, 2016 / Most wickets". ESPNCricinfo. 17 مارچ 2016. 24 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 30 مارچ 2016. 

سانچہ:ایڈن گارڈنز