فلپائن پر امریکی قبضہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
اصطلاح term

مرگِ انبوہ
ٹیڈی روزویلٹ
ثمر

holocaust
teddy roosevelt
samar

10 دسمبر 1889 کو امریکہ کے ہاتھوں ہسپانوی شکست کے بعد ہسپانیہ نے فلپائن کو 20 ملین ڈالر کے عوض امریکہ کو "بیچ" دیا۔ امریکہ نے فوجی حکومت قائم کی مگر فلپائن کے باشندوں نے آزادی کا اعلان کر دیا۔ امریکی صدر ٹیڈی ورزویلٹ نے اس بغاوت کو کچل دینے کی صدا لگائی۔ ثمر کے علاقہ میں امریکی جنرل نے پوچھا کہ کس عمر کے باشندوں کو قتل کیا جائے۔ روزویلٹ نے کہا کہ دس سال کی عمر سے زیادہ لڑکوں کو۔ نتیجتاً تین ملین افراد کو ذبح کر دیا گیا۔[1]


حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ جوہان ہاری، "Johann Hari: Scribbled in the margins: the character of the next President"

بیرونی روابط[ترمیم]