کھوار روزمرہ اور محاورہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے

روزمرہ اور محاورہ:۔ روزمرہ لُغت میں بات چیت اور انداز بیاں کو کہتے ہیں۔ جبکہ محاورہ وہ ہے جس میں مرکب الفاظ اپنی اصلی معنی کی بجائے ایک مخصوص مطلب کی ادائیگی کے لیے استعمال ہوتے ہیں۔ چترال میں روزمرہ کی زبان مختلف وادیوں اور مختلف تحصیلوں میں باہم اختلاف رکھتی ہے۔ جبکہ محاورہ کسی وادی میں دوسری وادی سے مختلف نہیں۔ کھوار محاوروں کی دو قسمیں ہیں پہلی قسم اُن محاوروں کی ہے جن میں مفہوم کی ادائیگی کے لیے الفاظ لغوی معنی سے بالواسطہ مناسبت پیدا کرتے ہیں۔ جیسے 1) ‘‘ آپکی اوغ گیک ’’ ترجمہ۔ منہ میں پانی بھر آنا۔ مطلب جی للچانا، کسی چیز کو دیکھ کر بہت زیادہ آرزو مند ہونا 2) ‘‘ آپکہ اوغ پیچ نو بیک’’ ترجمہ۔ منہ میں پانی گر م نہ ہونا ۔ مطلب ہر بات اُگل دینا، کسی بات کو دل میں محفوظ نہ رکھ سکنا۔ چغلی کھانا۔ چل خوری کرنا ۔ 3)‘‘ پونگ پولیک’’۔ ترجمہ (پاوں جلنا) مطلب یہ ہے کہ بد فال ہونا۔ منحوس ہونا۔ کسی آدمی کا باعث رنج یا با عث تکلیف ہونا۔ 4) ‘‘چموٹ پاشیک ’’ (اُنگلی دیکھا نا ) مطلب کسی کی نشان دہی کر نا۔ نام لیکر کسی کی بُرائی کرنا۔ 5)‘‘ ماشئلیکہ یور وسیک ’’( ماشئلیک ایک گاوں ہے جہاں سردیوں میں سورج پہاڑی کے پیچھے ہوتا ہے وہاں سورج طلوع نہیں ہوتا )ترجمہ۔ ماشُلیک میں سورج کا انتظار کرنا مطلب اُنہونی بات کی توقع رکھنا، بعید از قیاس اُمیدیں باندھنا، 6)‘‘سینہ التی اوغ نو دیک’’ ۔(دریا تک لے جاکر بھی پانی نہ پلانا ) مطلب دھوکا دینا فریب دینا، سزز باغ دکھا کر کچھ نہ کرنا ، 7)‘‘ ہردیہ گانیک’’،(دل میں لینا) مطلب طویل ناراضی رکھنا۔ حسد رکھنا، کینہ رکھنا، 8)‘‘غیچ کوریک’’(آنکھ کرنا) مطلب انتظار کرنا۔ چشم براہ ہونا ۔ 9)‘‘کوما ڑین تیل لوچھیک ’’(چھت پر سے تیل اُبلنا ) مطلب اہل ثروت بننا بہت زیادہ دولت ہونا، مال کی کثرت ہونا 10)‘‘ کپالین شران مژیک’’(آنگن میں سر سے جھاڑو دینا ) مطلب بہت زیادہ تا بعداری کرنا، دل سے خدمت کرنا، خدمت میں کوئی کسر نہ اُٹھا رکھنا ۔ 11)‘‘شونین دیک’’ ( لبو ں سے دینا ) مطلب خوشامد کرنا 12)‘‘ کھکو اہیہ نزیک ’’(دماغ کا چل جانا) مطلب آرام کرنے نہ دینا، بہت زیادہ باتیں کرنا۔ تکلیف دینا ۔ دوسری قسم اُن محاوروں کی ہے جن کے ذریعے مفہوم کو ایسے پیرا ئیے میں بیاں کیا جاتا ہے کہ الفاظ کے معانی سے اس مفہوم کی نسبت بالواسطہ بھی نہیں ہوتی البتہ ذوق سلیم اور زبان دانی سے اس کا تجربہ و انداز ہ ہوجاتا ہے جیسے ۔ 1) ‘‘ٹونگتو اوسیک’’ ۔(ناشپاتی کے درخت پر چڑھانا ) مطلب محروم کر دینا 2) ‘‘پونگی گیک’’ ۔(پاوں میں آنا ) مطلب پسند ہونا ،دل کو بھانا 3) ‘‘ژنہ توریک ’’۔(جان میں پہنچنا ) مطلب تنگ آجانا، دل بھر آنا 4) ‘‘گُروچ کوریک’’ ۔( حرکت کرنا ) مطلب کسی کو یاد دہانی کرنا، یاد دلانا، یاداشت میں لانا 5) ‘‘غیچہ نسیک ’’۔(آنکھ میں نکلنا ) مطلب ہضم نہ ہونا، باعث ندامت ہونا ۔ 6) ‘‘کاروبک’’ ۔(کان میں جانا)مطلب سبق لینا، عبرت لینا 7) ‘‘ آسمان کشیک ’’۔(آسمان پر ہل چلانا ) مطلب شیخی بگھاڑنا، غرور کرنا 8) انگار غریک ۔(آگ بن جانا) مطلب غصے میں آنا۔ سخت غصہ ہونا 9) ‘‘کھانجتو برموغ اولیک’’۔( دیوار میں اخروٹ پھنکنات ) مطلب نصیحت کار گر نہ ہونا، کم عقل کو نصیحت کا اثر نہ ہونا ۔ 10) ‘‘ہوستان پرویلک’’ ۔(ہاتھ دھونا) مطلب نا اُمید ہونا