اردشیر بابکاں(اول)

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

دورحکومت226ءتا240ء

ایران کے مشہور ساسانی خاندان کا بانی۔ ابتدا میں فارس کاحاکم تھا۔ اشکانی (پارتھین) بادشاہ ارتانیس کی اطاعت سے انکار کیا۔ برنر کے مقام پر اسے شکست دی اور ایران کا شہنشاہ بن گیا۔ اس نے پنجاب کا سارا علاقہ فتح کرکے اپنی سلطنت میں شامل کر لیا۔ قیصر روم کی فوجوں کو شکست دی اور آرمینیا پر قبضہ کر لیا۔ اردشیر نے زرتشتی مذہب کو ، جو اشکانیوں کے عہد میں کمزور ہو گیا تھا دوبارہ فروغ دیا ۔ پارسی موبدوں اور دستوروں کو جاگیریں بخشیں اور آتش کدوں کو ازسرنو روشن کیا۔ نظم و نسق اور فوج کی اصلاح کی اور عدل و انصاف پر زور دیا۔ اس کا قول تھا کہ باقاعدہ فوج کے بغیر حکومت ممکن نہیں، روپے کے بغیر فوج ممکن نہیں۔ زراعت کے بغیر روپیہ ممکن نہیں اورانصاف کے بغیر زراعت ممکن نہیں۔ ca:Ardashir I]]