الاش خود مختاری

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
الاش خود مختاری
Alash Autonomy
Алаш аутономиясы
غیر تسلیم شدہ ریاست

1917–1920

پرچم

شعار
Oyan, Qazaq!
جاگو, قازق!
دارالحکومت سیمی
زبانیں قازق
روسی
مذہب اسلام
حکومت جمہوریہ
چیئرمین الاش اردو علی خان بوکیخانوف
تاریخی دور پہلی جنگ عظیم
 - قیام درمبر 13 1917
 - اختتام اگست 26 1920
Warning: Value specified for "continent" does not comply

الاش خود مختاری (Alash Autonomy) (قازق: Алаш аутономиясы; روسی: Алашская автономия) ایک قازق ریاست تھی جو 13 دسمبر، 1917ء سے 26 اگست، 1920ء کے درمیان موجود رہی، یہ تقریبا موجودہ جمہوریہ قازقستان کے علاقے پر قائم تھی۔ اس کا دارالحکومت سیمی تھا جس کو اس وقت "الاش-قلعہ" کے طور پر جانا جاتا تھا۔

وسیلی بالالانوف (Vasile Balabanov) کو 1905ء میں قازقستان کا گورنر اور منتظم مقرر کیا گیا (اس وقت یہ روسی ترکستان کے طور پر جانا) اور یہ عہدہ 1920ء تک جاری ریا۔ 1920ء میں وہ سرخ فوج سے فرار ہو کر چین چلا گیا۔ چین میں اس وقت اسے قازقستان کا موجودہ عہدیدار سمجھا جاتا تھا۔

1917ء میں الاش خود مختاری صرف برائے نام تھی جبکہ اصل انتظام سفید فوج کے ہاتھ میں تھا اور وہی اس کا منتظم کرتی تھی جب تک کہ سرخ فوج نے 1920ء میں اس پر قبضہ کر کر لیا۔



مزید دیکھیے[ترمیم]

شمالی قفقازی پہاڑی جمہوریہ

حوالہ جات[ترمیم]