عبدالعزیز غازی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
مولانا عبدالعزیز

لال مسجد کے موجودہ خطیب ۔ مولانا عبداللہ کے فرزند اور عبدالرشید غازی کے بھائی

98ء میں اپنے والد کی ہلاکت کے بعد اپنے والد کے جانشین کے طور لال مسجد کے خطیب بنے۔ اپنے والد کی طرح ایک سخت گیر موقف رکھنے والے انسان رہے۔ افغانستان اور عراق پر امریکہ کے حملوں کے بعد اسلام آباد میں ہونے والا مظاہروں کی سرپرستی کی اوراسی وقت وہ خبروں میں آئے۔ وزیرستان آپریشن کے بعد ان پر اور ان کے بھائی پر حکومتی عمارتوں میں دہشت گردی کا الزام لگا۔ جس سے اعجاز الحق کی سفارش پر انہیں بری کردیا گیا۔ اسلام آباد میں مساجد کی شہادت پر ان کے زیر انتظام چلنے والے مدرسے جامعہ حفصہ کی طالبات نے چلڈرن لائبریری پر جب قبضہ کیا تو اس کے بعد سے حکومت اور ان کے درمیان حالات کشیدہ ہوگئے۔ 2007 میں مولانا صاحب نے ملک میں شریعت کے نفاذ کا اعلان کر دیا۔ اور آنٹی شییم اور چینی مساج سنٹر کے کئی کارکنوں کو اغوا کر لیا۔ بعد میں مذکرات کے بعد ان لوگوں کو چھوڑ دیا گیا۔ جولائی 2007ء میں حالات اس وقت سنگین رخ اختیار کر گئے جب رینجرز اور طلبا کے درمیان پہلی مرتبہ تصادم ہوا۔ جس کے بعد حکومت نے لال مسجد کے خلاف اپریشن کا اعلان کر دیا۔ مولانا صاحب جو کہ خواب دیکھا کرتے تھے کہ ان کے خون کے قطرے سے اسلامی انقلاب کی پہلی لہر اٹھے گی خود اپنے شاگردوں اور اور اپنے بھائی مولانا عبدالرشید غازی کو چھوڑ کر برقعے میں فرار ہو رہے تھے کہ سیکورٹی اہلکاروں نے ان کو گرفتار کر لیا۔ مولانا صاحب کبھی ٹی وی کے سامنے نہیں آتے تھے۔ لیکن حکومت نے دوبارہ برقعہ پہنا کر باقاعدہ ان کا انٹرویو لیا۔ اپریشن کے بعد اپنے بھائی عبدالرشید غازی کی نماز جنازہ کے لیے ان کو رہا کیا گیا۔ جنازے کے فوراً بعد پھر انہیں گرفتار کرلیا گیا۔

مولانا عبدالّزیز لال مسجد آرمی آپریشن کے دوران برقعہ پہن کر بھاگتا ہوا پکڑا گیا اور اس کا بھائی عبدرشید آرمی سے مقابلہ کے بعد ہلاک ہوا مولانا عبدالّزیز پاکستان کے اسلامی آئین کا انکاری ہے اور طالبان کی شریعت کا داعی ہے


http://www.mezantv.com/2014/02/Molvi-Abdul-Aziz-Ki-Shane-Rasalat-Main-Gustakhi.html

http://muslimmatters.muslimmatters.netdna-cdn.com/wp-content/uploads/2007/07/maulanaaziz-in-custody.jpg

http://defence.pk/threads/lal-masjid-had-contacts-with-al-qaeeda-terrorist-outfits-official-sources.242526/