پین انٹرنیشنل

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
PEN International
Pen international.svg
شعار شاعر، مضمون نگار، ناول نگار
تشکیل 1921 (1921)
قسم غیر سرکاری تنظیم
مقصد دنیا بھر کے لکھاریوں کے درمیان دوستی اور تخلیقی تعاون کو بڑھنے میں مدد دیان
صدر دفتر لندن
علاقہ خدمت
عالمی
صدر
جان رالسٹن ساؤل
ویب سائٹ www.pen-international.org

پین انٹرنیشنل مصنفین کی عالمی تنظیم ہے جس کا قیام 1920ء میں برطانیہ کے دارالحکومت لندن میں عمل میں آیا۔ اس تنظیم کا مقصد دنیا بھر کے مصنفین کے درمیاں دوستی اور تخلیقی تعاون کو فروغ دینا ہے۔ پین انٹرنیشنل کی اس وقت دنیا میں سو سے زیادہ خودمختار شاخیں ہیں۔ تنظیم کا دوسرا مقصد ادب کے زریعے باہمی رابطے کے علاوہ آزادی اظہار کیلئے جدوجہد کے علاوہ ان مصنفین کے لیئے آواز اٹھانا ہے جو اپنی تخلیقات کی وجہ سے قید و بند کی صعوبتیں برداشت کرتے ہیں یا انہیں قتل کر دیا جاتا ہے۔ دنیا بھر میں پین انٹرنیشنل کی تنظیمیں مختلف نوعیت کے انعامات تقسیم کرتی ہیں

پین اصل میں شاعر، مضمون نگار اور ناول نویس (Poets, Essayists and Novelists) کا مخفف ہے۔ لیکن اب اس میں صحافیوں اور تاریخ دانوں کو بھی شامل کر لیا گیا ہے۔

پین نے اپنے لیئے تین درج ذیل مقاصد متعین کیئے ہیں۔

  • مصنفین کے درمیاں تخلیقی تعاون اور تفہیم کو بڑھانا
  • دنیا بھر کے مصنفین کا ایک ایسا گروہ ترتیب دینا جو عالمی ثقافت میں ادب کے کردار پر زور دیں
  • عصر حاضر میں ادب کو لاحق خطرات کےخلاف جدوجہد کے علاوہ اس کی بقا کیلئے کام کرنا۔

پین انٹرنیشنل کا منشور[ترمیم]

  • ادب گو قومی یا مقامی ہوتا ہے لیکن اس کی کوئی سرحدیں نہیں ہے، لہذا سیاسی یا بین الاقوامی تغیرات کے باوجود قوموں کے درمیان مشترکہ سرمایہ رہنا چاہئے
  • ہر قسم کے حالات میں، اور خاص طور پر جنگ کے وقت میں، آرٹ اور لائبریریوں کا سرمایہ، نسل انسانی کے اہم ورثے، قومی یا سیاسی جذبہ سے مغلوب ہوئے ہو کر تباہ نہیں کرنا چاہئے.
  • پین کے تمام ممبران کو اپنا ہر ممکنہ اثر و رسوخ استعمال کرنا چاہیے کہ دوسری اقوام کے درمیان باہمی احترام اور افہام و تفہیم کو فروغ دے سکیں۔ اور اپنے آپ سے عہد کریں کہ نسلی، طبقاتی اور قومی نفرتوں کو دور کرنےاور دنیا میں امن سے رہنے کی انسانیت کی اعلی قدر کے لئے کام کریں گے۔
  • پین ہر قوم کے اندر اور تمام قوموں کے درمیان سوچوں کی بلا رکاوٹ ترسیل کے اصول کے حمایت کرتا ہے، اور تنظیم کے ارکان وعدہ کرتے ہیں کہ اپنے ملک یا اپنے طبقے کے اندر اظہار رائے کی آزادی کے میں کسی بھی قسم کی رکاوٹ کی مخالفت کریں گے.
  • پین ایک آزاد پریس کی حمایت اور امن کے وقت میں صوابدیدی سنسر شپ کی مخالفت کا اعلان کرتا ہے. اس کے مطابق دنیا کو انتہائی منظم سیاسی اور اقتصادی نظام کی طرف لے جانے کیلئے حکومت، اداروں اور انتظامیہ پر تنقید انتہائی ضروری ہے۔ چونکہ آزادی رضاکارانہ طور پر تحمل کا نام ہے، لہذا اراکین وعدہ کرتے ہیں کہ جھوٹ پر مبنی اشاعت، جان بوجھ کر بولے گئے جھوٹ، اور سیاسی اور ذاتی مقاصد کے حصول کیلئے حقائق کی تحریف کیئے جانے کی مخالفت کریں گے۔

کمیٹی برائے محبوس منصفین[ترمیم]

محبوس مصنفین کی کمیٹی کا قیام 1960ء میں عمل میں آیا۔ یہ کمیٹی دنیا بھر میں زیر عتاب آنے والے مصنفین کی حمایت میں کام کرتی ہے۔ اور اس سلسلہ میں ہر سال 900 کے لگ بھگ مصنفین کے واقعات کا جائزہ لیتی ہے جو اپنے کام کی وجہ سے قید و بند کی صعوبتیں سہہ رہے ہیں، دھمکیوں اور تشدد کا سامنا کر رہے ہیں، غائب کر دیئے گئے ہیں یا سرے سے انہیں قتل کر دیا گیا ہے۔[1] کمیٹی برائے محبوس منصفین نے آزادی اظہار کی ترسیل کی عالمی تنظیم کی بنیاد رکھی ہے جس کی نوے شاخیں ہیں جو دنیا بھر میں سنسر شپ کے واقعات کا جائزہ لینے کے علاوہ مصنفین، صحافیوں، انٹر نیٹ بلاگروں کا دفاع کرتی ہے جو اپنے آزادی اظہار کے بنا پر زیر عتاب آتے ہیں۔


حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ "members". www.guardian.co.uk. http://www.ifex.org/ifex_members. Retrieved 2013-01-120.