آندرے اگاسی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
آندرے اگاسی
(انگریزی میں: Andre Kirk Agassi خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقامی زبان میں نام (P1559) ویکی ڈیٹا پر
Andre Agassi (2011).jpg 

شخصی معلومات
پیدائشی نام (انگریزی میں: Andre Kirk Agassi خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیدائشی نام (P1477) ویکی ڈیٹا پر
پیدائش 29 اپریل 1970 (48 سال)[1][2][3][4]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
لاس ویگاس[1]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
رہائش لاس ویگاس  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں رہائش (P551) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Flag of the United States.svg ریاستہائے متحدہ امریکا  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
قد 180 سنٹی میٹر  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں قد (P2048) ویکی ڈیٹا پر
وزن 74 کلو گرام  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں وزن (P2067) ویکی ڈیٹا پر
استعمال ہاتھ دایاں (رائٹ ہینڈڈ)[1]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں استعمالِ ہاتھ (P552) ویکی ڈیٹا پر
جماعت ڈیموکریٹک پارٹی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں سیاسی جماعت کی رکنیت (P102) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
پیشہ ٹینس کھلاڑی[1]،آپ بیتی نگار،کاروباری شخصیت  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
کھیل ٹینس  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں کھیل (P641) ویکی ڈیٹا پر

آندرے اگاسی (انگریزی: Andre Agassi) (پیدائش: 29 اپریل 1970ء) سابق عالمی نمبر ایک پیشہ ور امریکی ٹینس کھلاڑی ہیں جنہوں نے 8 گرینڈ سلام سنگلز اور اولمپک کھیلوں میں ایک سونے کا تمغا جیت رکھا ہے۔ ٹینس ناقدین اور ان کے ساتھی کھلاڑی انہیں ٹینس کی تاریخ کے عظیم ترین کھلاڑیوں میں شمار کرتے ہیں [5][6][7] اور آپ کو سروس کو واپس کرنے والا بہترین کھلاڑی گردانتے ہیں۔[5][8]

غیر روایتی ملبوسات اور رویے کے باعث اگاسی ٹینس کی تاریخ کے سب سے کرشماتی کھلاڑی سمجھے جاتے ہیں جن کی وجہ سے 1990ء کی دہائی میں ٹینس کو عالمی شہرت ملی۔

اعزازات[ترمیم]

آپ روڈ لیور، ڈون بج، فریڈ پیری، رائے ایمرسن اور راجر فیڈرر کے ساتھ ٹینس کی تاریخ کے چھٹے کھلاڑی ہیں جنہوں نے کیریئر گرینڈ سلام کا اعزاز حاصل کیا یعنی انہوں نے اپنے پیشہ ور کھیل کے دور میں چاروں گرینڈ سلام جیتے۔ آپ واحد مرد کھلاڑی ہیں جنہیں کیریئر گولڈن سلام (چار گرینڈ سلام اور ایک اولمپک سونے کا تمغا) کا اعزاز حاصل ہے۔

گرینڈ سلام اور اولمپک سنگلز خطابات کے علاوہ آپ نے ٹینس ماسٹرز کپ بھی جیتا اور ڈیوس کپ فاتح ٹیموں کا بھی حصہ رہے۔ آپ نے 17 اے ٹی پی ماسٹرز سیریز ٹورنامنٹ جیتے جو کسی بھی دوسرے کھلاڑی سے زیادہ ہیں۔

1990ء کی دہائی میں اگاسی اور پیٹ سمپراس روایتی حریف سمجھے جاتے تھے اور دونوں نے پوری دہائی میں ٹینس شائقین کے دلوں پر راج کیا۔

اگاسی نے اپنے پیشہ ور عرصہ حیات میں 4 آسٹریلین اوپن، ایک فرنچ اوپن، ایک ویمبلڈن اور 2 یو ایس اوپن جیتے۔ ٹینس میگزین نے آپ کو 1965ء سے 2005ء کے عرصے کا ساتواں بہترین مرد کھلاڑی اور مجموعی طور پر ٹینس تاریخ کا 12 واں بہترین کھلاڑی قرار دیا۔[9]

کمر کی تکلیف کے عارضے میں مبتلا ہونے کے بعد اگاسی نے 3 ستمبر 2006ء کو پیشہ ور ٹینس سے سبکدوشی کا اعلان کیا۔

اہل خانہ و ذاتی زندگی[ترمیم]

آپ لاس ویگاس، نیواڈا میں پیدا ہوئے۔ آپ کے والد ایمانوئیل اگاسی ارمنی و اسیری نسل کے ایرانی تھے جنہوں نے 1948ء اور 1952ء کے اولمپک کھیلوں میں مکے بازی میں ایران کی نمائندگی کی اور بعد ازاں امریکا ہجرت کر گئے۔

آندرے اگاسی نے 19 اپریل 1997ء کو معروف اداکارہ بروک شیلڈز سے شادی کی جو دو سال بعد اختتام کو ہنچی۔

1999ء کے فرنچ اوپن میں اگاسی اور معروف خاتون کھلاڑی اسٹیفی گراف نے فائنل مقابلے جیتے جس کے بعد دونوں کے درمیان دوستی پروان چڑھی جو 22 اکتوبر 2001ء کو شادی پر منتج ہوئی۔ شادی کے چار روز بعد اسٹیفی نے ایک بیٹے کو جنم دیا۔ بعد ازاں 2003ء میں ایک بیٹی بھی پیدا ہوئی۔

آپ بیتی و انکشافات[ترمیم]

نومبر 2009ء میں شایع ہونے والی اپنی آپ بیتی "اوپن: این آٹوبائیوگرافی" میں انہوں نے تسلیم کیا کہ 1997ء میں انہوں نے ممنوعہ دوا استعمال کی تھی جس کے نتیجے میں ان کا ڈوپ ٹیسٹ مثبت ثابت ہوا تھا۔[10][11][12] علاوہ ازیں انہوں نے اپنے لمبے بالوں کی حقیقت پر سے بھی پردہ اٹھایا جس کے بارے میں ان کا کہنا ہے کہ وہ نقلی بال تھے جو انہوں نے گنج پن چھپانے کے لیے لگائے تھے۔ اگاسی لکھتے ہیں کہ نقلی بالوں کی ٹوپی گرنے کے خوف کی وجہ ہی سے وہ 1990ء کے فرنچ اوپن فائنل میں شکست کھا گئے۔ واضح رہے کہ ان کے لمبے بالوں نے عرصہ دراز تک دنیا بھر میں نوجوانوں کو متاثر کیے رکھا تھا۔[13]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ 1.0 1.1 1.2 1.3 مصنف: Bud Collins — عنوان : The Bud Collins History of Tennis — اشاعت دوم — صفحہ: 666 — ناشر: New Chapter Press — ISBN 978-0-942257-70-0
  2. جی این ڈی- آئی ڈی: http://d-nb.info/gnd/119241579 — اخذ شدہ بتاریخ: 16 اکتوبر 2015 — اجازت نامہ: سی سی زیرو
  3. ایس این اے سی آرک آئی ڈی: http://snaccooperative.org/ark:/99166/w6rz7tg5 — بنام: Andre Agassi — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  4. The Peerage person ID: https://tools.wmflabs.org/wikidata-externalid-url/?p=4638&url_prefix=http://www.thepeerage.com/&id=p31934.htm#i319332 — بنام: Andre Agassi — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  5. ^ 5.0 5.1 CBC Sports: "Tennis's love affair with Agassi comes to an end"
  6. Telegraph.co.uk: "Grand-slammed"
  7. BBC: "Stars pay tribute to Agassi"
  8. LA Times: "Sampras, Agassi Have Just Begun to Fight"
  9. Tennis.com: "40 Greatest Players of the Tennis Era"
  10. Andre Agassi book says he used crystal meth
  11. Autobiography: Agassi used crystal meth during career - NY Daily News
  12. Andre Agassi Admits to Using Crystal Meth - NBC4 Washington
  13. Andre Agassi admits long hairstyle was a wig, www.telegraph.co.uk.