اقوام متحدہ سلامتی کونسل ویٹو طاقت

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
اقوام.متحدہ سلامتی کونسل

وٹو پاور اقوام متحدہ سیکیورٹی کونسل کے پانچ مستقل رکن ممالک کے پاس موجود ایک خصوصی اختیار ہے جس کے ذریعے ان پانچ ممالک میں سے کوئی بهی یہ اختیار استعمال کرکے اقوام متحدہ کا کوئی بهی بل ، قانون یا کسی بهی قسم کی قرارداد رد کرسکتا ہے۔ ان ارکان میں عوامی جمہوریہ چین، فرانس، مملکت متحدہ، روس اور ریاستہائے متحدہ امریکہ ہیں۔ وٹو پاور کسی بهی قسم کی قانون سے ان ممالک کو اثتثنی دیتا ہے۔ اسی وجہ سے اس اختیار کے حامی اور ناقدین دونوں اس کے فائدے اور نقصانات بیان کرتے رہتے ہیں۔ ناقدین کا خیال ہے کہ اس اختیار کی وجہ سے یہ پانچ ارکان کسی بهی قسم کے بل خواہ وہ انسانی حقوق کا ہو یا مالی و انتظامی ہو اسے آسانی سے رد کردیتے ہیں۔ ہر رکن اس اختیار کا استعمال بیسیوں مرتبہ کرچکا ہے۔ جہاں ان ارکان ممالک کے مفادات اور موقف کیخلاف کوئی قانون بنتا ہے وہاں اس خصوصی اختیار کا استعمال کرکے اسے مسترد کیا جاتا ہے۔ جبکہ دوسری طرف اس کے حامی اسے ایک بہترین اختیار قرار دیتے ہوئے اسے ایک ڈهال مانتے ہیں.

مزید دیکهیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]