مندرجات کا رخ کریں

تکراریت

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے

تکراریت سائنسی طریقہ کار کی بنیاد رکھنے والا ایک بڑا اصول ہے۔ کسی مطالعہ کے نتائج کو دوبارہ پیدا کرنے کے قابل ہونے کا مطلب یہ ہے کہ کسی تجربے یا مشاہداتی مطالعہ سے یا ڈیٹا سیٹ کے شماریاتی تجزیے سے حاصل ہونے والے نتائج کو اعلیٰ درجے کی اعتماد کے ساتھ دوبارہ حاصل کیا جانا چاہیے جب مطالعہ کو دوبارہ دوہرایا جائے۔ تکراریت کی مختلف قسمیں ہیں [1]لیکن عام طور پر تکرار کے مطالعے میں ایک ہی طریقہ کار کا استعمال کرتے ہوئے مختلف محققین شامل ہوتے ہیں۔ اس طرح کی ایک یا کئی کامیاب تکراروں کے بعد ہی نتیجہ کو سائنسی علم کے طور پر تسلیم کیا جانا چاہیے۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Replication and Theory Development in Organizational Science: A Critical Realist Perspective" 
بوائل کا ایئر پمپ، 17ویں صدی کے لحاظ سے، ایک پیچیدہ اور مہنگا سائنسی آلہ تھا، جس نے نتائج کی تکراریت کو مشکل بنا دیا تھا۔