ثقلی مدد

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

مداری میکانیات اور فضائی ہندسیات کے مطابق ثقلی مدد کو کسی سیارے یا دوسرے اجرام فلکی کی کشش اور حرکت کو استعمال کرتے ہوئے خلائی جہاز کا راستہ اور اس کی رفتار بدلنے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔ بالعموم اس کا مقصد ایندھن، وقت اور اخراجات کی بچت ہوتا ہے۔ ثقلی مدد سے خلائی جہاز کی رفتار کو کم یا زیادہ کرنے کے علاوہ اس کا راستہ بھی تبدیل کیا جا سکتا ہے۔

مدد دراصل کسی بھی اجرام فلکی کی طرف سے خلائی جہاز کو اپنی طرف کھینچنے سے ملتی ہے۔ 1961 میں پہلی بار اس کی تجویز پیش کی گئی تھی اور میرینر دہم سے لے کر اب تک اسے بہت بار استعمال کیا جا چکاہے۔ اس کی مشہور مثالوں میں وائجر نامی خلائی جہاز کے مشتری اور زحل کے گرد سے ثقلی مدد حاصل کرنا تھے۔