غیبت

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

کسی شخص کی عدم موجودگی میں اس کی بدگوئی، غیر حاضری میں عیبوں کے بیان اور اس کی پیٹھ پیچھے برائی کرنے کو غیبت کہا جاتا ہے۔ یہ ایک عام سماجی برائی ہے جو ہر دور سے چلی آ رہی ہے۔

مختلف مذاہب میں غیبت[ترمیم]

اسلام[ترمیم]

قرآن نے غیبت کی سخت الفاظ میں مذمت کی ہے۔ غیبت کرنے والے کو مردہ بھائی کے گوشت کھانے کے مترادف قرار دیا ہے فرمایا: (وَلَا يَغْتَبْ بَعْضُكُمْ بَعْضًا أَيُحِبُّ أَحَدُكُمْ أَنْ يَأْكُلَ لَحْمَ أَخِيهِ مَيْتًا فَكَرِهْتُمُوهُ وَاتَّقُوا اللَّهَ إِنَّ اللَّهَ تَوَّابٌ رَحِيمٌ)[1]

ہندو مت[ترمیم]

مسیحیت[ترمیم]

سکھ مت[ترمیم]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. سورۃ الحجرات: 12