لائن ایئر فلائٹ 610

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
لائن ایئر فلائٹ 610
ستمبر 2018ء کی تصویر
ہوائی حادثہ کا خلاصہ
تاریخ حادثہ  29 اکتوبر، 2018ء (29 اکتوبر، 2018ء-29 اکتوبر، 2018ء)
قسم اڑان کے 13 منٹ بعد سمندر میں گر کر تباہ
بمقام بحیرہ جاوا، انڈونیشیا
5°46′15″S 107°07′16″E / 5.77083°S 107.12111°E / -5.77083; 107.12111متناسقات: 5°46′15″S 107°07′16″E / 5.77083°S 107.12111°E / -5.77083; 107.12111
مسافروں کی تعداد 181
عملہ 8
اموات 189 (اندازاً تمام)[1]
نجات یافتگان 0
طرز جہاز بوئنگ 737 میکس 8
مشتغل لائن ایئر
رجسٹریشن نمبر PK-LQP
مقام پرواز سوکارنو-ہاتا بین الاقوامی ہوائی اڈا
جکارتا، انڈونیشیا
منزل دیپتی امیر ہوائی اڈا
پانگکل پینانگ، انڈونیشیا
لائن ایئر فلائٹ 610 کے روٹ کا نقشہ

لائن ایئر فلائٹ 610 ایک مسافر بردار طیارہ تھا، جسے انڈونیشیائی ایئر لائن کمپنی لائن ایئر آپریٹ کرتی تھی۔ یہ طیارہ عموماً سوکارنو-ہاتا بین الاقوامی ہوائی اڈا، جکارتا سے دیپتی امیر ہوائی اڈا، پانگکل پینانگ کی طرف اڑان بھرتا تھا۔ 29 اکتوبر، 2018ء کو طیارہ اڑان بھرنے کے 13 منٹ بعد تباہ ہو گیا۔[2][3] جہاز کا ملبہ بحیرہ جاوا سے ملا۔[4] سرکاری طور پر یہ بتایا گیا کہ تمام 189 مسافر اور عملہ اس حادثے میں مر چکے ہیں۔[5]

طیارہ[ترمیم]

اس میں شامل طیارہ بوئنگ 737 میکس 8 تھا، رجسٹریشن PK-LQP، جسے 13 اگست 2018ء کو لائن ایئر میں نئے طیارے کے طور پر شامل کیا تھا اور حادثے سے دو مہینے پہلے ہی انڈونیشیا پہنچا تھا۔[6] حادثے کے وقت، طیارہ تقریباً 800 گھنٹے اڑ چکا تھا۔[7] 2017ء میں سروس میں آنے کے بعد سے یہ 737 میکس طیارے کا پہلا حادثہ ہے۔[8] طیارہ میں 180 مسافر کے بیٹھنے کی گنجائش تھی۔

مسافر اور عملہ[ترمیم]

سرکاری طور پر یہ اعلان کیا گیا کہ جہاز میں 189 لوگ سوار تھے؛ 181 مسافر (3 بچوں سمیت) اور ساتھ ہی ساتھ 2 پائلٹ اور عملے کے 6 لوگ شامل تھے۔[9]

عملہ[ترمیم]

لائن ایئر کے مطابق اس فلائٹ کا کپتان ایک بھارتی ہے جس نے لائن ایئر کے لیے سات سال سے زائد عرصہ تک پرواز کی تھی اور تقریباً 6،000 گھنٹوں سے زائد وقت پرواز میں گزارنے کا تجربہ تھا،[10] ان کے ساتھی پائلٹ ایک انڈونیشیائی تھے جنہیں 5،000 گھنٹوں سے زائد وقت پرواز میں گزارنے کا تجربہ تھا۔[4][11]

مسافر[ترمیم]

رپورٹ کے مطابق کئی سرکاری ملازم، ریاست کے وزیر، علاقائی پارلیمنٹ رہنما، عوامی وکلا اور ججز سمیت کئی سرکاری اور کئی نجی تنظیموں کے افراد بھی اس جہاز میں سوار تھے۔[12][13][14][15][16][17][18] اس جہاز میں دو غیر ملکی افراد شریک تھے، جن میں ایک جہاز کا کپتان بھارتی شہری اور دوسرے اطالیہ کے سابق پیشہ ورانہ سائیکل سوار اینڈریا منفریڈی تھے۔[5]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. فردوس ہاشم۔ فلائٹ گلوبل http://web.archive.org/web/20181226025651/https://www.flightglobal.com/news/articles/lion-air-737-max-8-crash-confirmed-189-dead-453061/۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 اکتوبر 2018۔ |title= غیر موجود یا خالی ہے (معاونت)
  2. ہیری سوہارتونو؛ رائکا راہدیانا؛ یوگا روسمانا۔ بلومبرگ نیوز http://web.archive.org/web/20181226025613/https://www.bloomberg.com/tosv2.html?vid=&uuid=ce2a9560-08b9-11e9-98c9-113c1b978687&url=L25ld3MvYXJ0aWNsZXMvMjAxOC0xMC0yOS9pbmRvbmVzaWEtc2F5cy1saW9uLWFpci1qZXQtbG9zdC1jb250YWN0LW9uLXdheS10by1wYW5na2FscGluYW5nJTIw۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ |title= غیر موجود یا خالی ہے (معاونت)
  3. آندری ڈی۔ پترا۔ کومپاس (انڈونیشیائی زبان میں) http://web.archive.org/web/20181226025635/https://ekonomi.kompas.com/read/2018/10/29/085440526/pesawat-lion-air-jt-610-rute-jakarta-pangkal-pinang-hilang-kontak۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 اکتوبر 2018۔ |title= غیر موجود یا خالی ہے (معاونت)
  4. ^ ا ب جیمز مسوالا؛ کرونی رومپیز؛ ایمیلیا روسا۔ سڈنی مورننگ ہیرالڈ http://web.archive.org/web/20181226025647/https://www.smh.com.au/world/asia/lion-air-flight-crashes-in-indonesia-20181029-p50cmu.html%20۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 اکتوبر 2018۔ |title= غیر موجود یا خالی ہے (معاونت)
  5. ^ ا ب جیسن کولی؛ سوفی ولیمز۔ ایوننگ اسٹینڈرڈ http://web.archive.org/web/20181226025626/https://www.standard.co.uk/news/world/indonesia-plane-crash-airliner-carrying-188-people-plunges-into-sea-a3974126.html%20۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 اکتوبر 2018۔ |title= غیر موجود یا خالی ہے (معاونت)
  6. ٹریبیون نیوز (انڈونیشیائی زبان میں) http://web.archive.org/web/20181226025628/http://www.tribunnews.com/bisnis/2018/08/15/lion-air-datangkan-pesawat-baru-boeing-737-max-8-ke-10%20۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 اکتوبر 2018۔ |title= غیر موجود یا خالی ہے (معاونت)
  7. ایوان مک کرڈی، سی این این۔ سی این این http://web.archive.org/web/20181226025649/https://www.cnn.com/2018/10/28/asia/lion-air-plane-crash-intl/index.html%20۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 2018-10-29۔ |title= غیر موجود یا خالی ہے (معاونت)
  8. ۔ الجزیرہ http://web.archive.org/web/20181226025614/https://www.aljazeera.com/news/2018/10/indonesia-lion-air-flight-jakarta-sumatra-crashes-181029024304336.html?xif=۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 اکتوبر 2018۔ |title= غیر موجود یا خالی ہے (معاونت)
  9. ۔ سی بی ایس نیوز http://web.archive.org/web/20181226025648/https://www.cbsnews.com/news/lion-air-plane-crash-flight-jt-610-boeing-737-accident-indonesia-live-updates-today/%20/۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 اکتوبر 2018۔ |title= غیر موجود یا خالی ہے (معاونت)
  10. سوربھ سنہا۔ دی ٹائمز آف انڈیا http://web.archive.org/web/20181226025639/https://timesofindia.indiatimes.com/india/indonesia-plane-crash-indias-bhavye-suneja-captain-of-lion-air-plane-that-crashed-with-189-on-board/articleshow/66410740.cms%20۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 اکتوبر 2018۔ |title= غیر موجود یا خالی ہے (معاونت)
  11. انڈیا ٹوڈے http://web.archive.org/web/20181226025609/https://www.indiatoday.in/india/story/india-s-bhavye-suneja-captained-lion-air-plane-that-crashed-in-indonesian-seas-1377692-2018-10-29۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 اکتوبر 2018۔ |title= غیر موجود یا خالی ہے (معاونت)
  12. ہیرو دہنور۔ کومپس (انڈونیشیائی زبان میں) http://web.archive.org/web/20181226025637/https://regional.kompas.com/read/2018/10/29/11280791/sar-terima-laporan-banyak-pejabat-di-lion-air-yang-jatuh-dari-anggota-dprd۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ |title= غیر موجود یا خالی ہے (معاونت)
  13. نقص حوالہ: ٹیگ <ref>‎ درست نہیں ہے؛ guardian live نامی حوالہ کے لیے کوئی مواد درج نہیں کیا گیا۔ (مزید معلومات کے لیے معاونت صفحہ دیکھیے)۔
  14. ایلوان ڈینی ستریسنو۔ دیکتک (انڈونیشیائی زبان میں) http://web.archive.org/web/20181226025643/https://news.detik.com/berita/4277867/10-pegawai-bpk-jadi-penumpang-lion-air-jt-610-ini-daftar-namanya۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ |title= غیر موجود یا خالی ہے (معاونت)
  15. آئلن یومی یانتی۔ دیتک (انڈونیشیائی زبان میں) http://web.archive.org/web/20181226025641/https://finance.detik.com/berita-ekonomi-bisnis/d-4277864/2-auditor-andalan-bpkp-jadi-korban-pesawat-lion-air-yang-jatuh۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ |title= غیر موجود یا خالی ہے (معاونت)
  16. اوکیزون (انڈونیشیائی زبان میں) http://web.archive.org/web/20181226025622/https://news.okezone.com/read/2018/10/29/337/1970365/ketinggalan-pesawat-2-anggota-dprd-ini-selamat-dari-insiden-jatuhnya-lion-air۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ |title= غیر موجود یا خالی ہے (معاونت)
  17. Dhani Irawan۔ دیتک (انڈونیشیائی زبان میں) http://web.archive.org/web/20181226025629/https://news.detik.com/berita/4277912/3-jaksa-jadi-korban-pesawat-lion-air-jt-610-ini-identitasnya۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ |title= غیر موجود یا خالی ہے (معاونت)
  18. ایندی سپتوترا۔ دیتک (انڈونیشیائی زبان میں) http://web.archive.org/web/20181226025653/https://news.detik.com/berita/4277653/tiga-hakim-ada-di-pesawat-lion-air-yang-jatuh-ma-berduka۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ |archiveurl= اور |archive-url= ایک سے زائد مرتبہ درج ہے (معاونت); |archivedate= اور |archive-date= ایک سے زائد مرتبہ درج ہے (معاونت); |title= غیر موجود یا خالی ہے (معاونت)

بیرونی روابط[ترمیم]