مرج البحرین

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
مرج البحرین.jpg

حوالہ ازقرآن[ترمیم]

سورة الرَّحمٰن

الله کے نام شروع سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے

تو تم اپنے پروردگار کی کون کون سی نعمت کو جھٹلاؤ گے؟

(18) اسی نے دو دریا رواں کیے جو آپس میں ملتے ہیں

(19) دونوں میں ایک آڑ ہے کہ (اس سے ) تجاوز نہیں کرسکتے

(20) تو تم اپنے پروردگار کی کون کون سی نعمت کو جھٹلاؤ گے؟

Ar-Rahman

In the name of Allah, the Beneficent, the Merciful

Then which of the Blessings of your Lord will you both (jinn and men) deny? (18)

He has let loose the two seas (the salt and the frsh water) meeting together. (19)

Between them is a barrier which none of them can transgress. (20

Then which of the Blessings of your Lord will you both (jinn and men) deny?

تشریح[ترمیم]

لفظ مَرَجَ آزاد چھوڑنے کے معنی میں آتا ہے، اسی وجہ سے مَرَجْ چراگاہ کو کہتے ہیں جہاں جانور آزادی سے چل پھر کر چر سکیں چلائے دو دریا ملکر چلنے والے یہاں میٹھے اورنمکین پانی کے ساتھ ملنے کا ذکر ہے ان دونوں میں ہے ایک پردہ دونوں قسم کے پانی ایک ساتھ ہونے کے باوجود بھی ایک دوسرے کے ساتھ نہیں ملتے ان کے بیچ ایک پردہ ہوتاہے، جو ایک دوسرے پر زیادتی نہ کرے میٹھے اورنمکین پانی کے ساتھ ملنے باوجود وہ ایک دوسرے سے الگ رہتے ہیں، چودہ سو برس سے یہ واقعہ اﷲ کی کتاب میں موجود ہے مگر جب سائنس نے دریافت کیا تو ہم نے بھی غور شروع کیا،