نماز کے اوقات

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

01 فجر سحر کے فوراً بعد فجر کا وقت شروع ہو جاتا ہے جو سورج نکلنے تک ہوتا ہے 02 :ظہر

   زوال کے تقریباً 15منٹ بعد شروع ہوتا ہے اور اس وقت تک رہتا ہے جب سایہ قد سے بڑھ جائے 

03 عصر

 جس وقت سایہ قد سے دگنا ہوشروع ہوتا ہے اور سورج ڈوبنے تک ریتا ہے  

04 مغرب

  سورج ڈوب جانے کے فوراً بعد  

05 عشاء

  مغرب کےتقریبا سوا گھنٹے بعد شروع ہوتا ہے اور نصف رات تک  رہتا ہے

۔

آدم، شعبہ، سیار بن سلامہ کا بیان ہے کہ میں اور میرے باپ ابوبرزہ اسلمی کے پاس گئے اور ان سے نمازوں کے اوقات پوچھے، تو انہوں نے کہا کہ نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) ظہر کی نماز جب آفتاب ڈھل جاتا تھا، اس وقت پڑھتے تھے اور عصر کی ایسے وقت پڑھتے تھے کہ آدمی مدینہ کی انتہا تک لوٹ کر جاسکے اور آفتاب میں زردی نہ آئی ہو، سیار کہتے ہیں اور میں بھول گیا کہ مغرب کے بارے میں ابوبرزہ نے کیا کہا اور آپ عشاء کی تاخیر میں ایک تہائی رات تک کچھ پروا نہ کرتے تھے اور عشاء سے پہلے سونے کو اور اس کے بعد بات کرنے کو ناپسند کرتے تھے اور صبح کی نماز آپ ایسے وقت پڑھ لیتے تھے کہ آدمی فارغ ہو کر اپنے پاس والے کو پہچانتا تھا اور آپ دونوں رکعتیں یا ہر ایک میں ساٹھ آیتوں سے لے کر سو تک پڑھتے تھے۔     صحیح بخاری:جلد اول:حدیث نمبر 742