ہپاٹائٹس اے

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
Jaundice eye.jpg
ہیپاٹائٹس A کی وجہ سے ہوا یرقان کا ایک معاملہ
جماعت بندی اور بیرونی ذرائع
آئی سی ڈی-10 B15.
آئی سی ڈی-9 070.0, 070.1
بنیادی معلومات 5757
میڈ لائین پلس 000278
ای میڈیسن med/991 ped/977
پیشنٹ یو کے ہپاٹائٹس اے
عنوانات D006506

ہیپاٹائٹس A (جسے پہلے وبائی ہیپاٹائٹس سے جانا جاتا تھا) ہیپاٹائٹس A وائرس (HAV) کی وجہ سے پیداکردہ جگر کی ایک شدید وبائی بیماری ہے۔[1] زیادہ تر معاملات میں، خصوصی طور پر نوعمر افراد میں بہت کم یا کوئی علامات نہیں ہوتے ہیں۔[2] جن میں علامات فروغ پاتے ہیں، ان میں سرایت اور علامات کے بیچ دو سے چھ ہفتے لگتے ہیں۔[3] جب علامات ظاہر ہوتے ہیں تو وہ عام طور پر آٹھ ہفتوں تک رہتے ہیں اور ذیل ہو سکتے ہیں: متلی، قے، اسہال، پیلی جلد، بخار اور پیٹ میں درد۔[2] لوگوں کی تقریبا %10 سے %15 تعداد ابتدائی سرایت کے بعد چھ ماہ کے دوران علامات کے دوبارہ ہونے کا تجربہ کرتے ہیں۔[2] جگر کی شدید ناکامی شاذونادر ہی ہوسکتی ہے اور عمر رسیدہ لوگوں میں زیادہ عام ہے۔[2]

یہ عام طور سے متاثرہ فضلے سے آلودہ کھانا کھانے یا پانی پینے سے پھیلتا ہے۔[2] ناکافی پکے ہوئے گھونگھے نسبتا ایک عام ذریعہ ہیں۔[4] یہ ایک متعدی شخص کے ساتھ قریبی رابطے کے ذریعے بھی پھیل سکتا ہے۔[2] حالانکہ بچے متاثر ہوتے ہیں تو ان میں اکثر علامات ظاہر نہیں ہوتے ہیں پھر بھی وہ دوسروں کو متاثر کرنے کے اہل ہیں۔[2] ایک سرایت کے بعد ایک شخص اپنی باقی زندگی کے لیے محفوظ ہے۔[5] تشخیص کے لیے خون جانچ کی ضرورت ہوتی ہے کیوں کہ علامات دیگر متعدد بیماریوں جیسی ہوتی ہیں۔[2] یہ پانچ معلوم ہیپاٹائٹس وائرسوں میں سے ایک ہے: A، B، C، D، E۔

ہیپاٹائٹس A ویکسین بچاؤ کے لیے مؤثر ہے۔[2][6] کچھ ممالک میں بچوں کے لیے اور جنھوں نے قبل میں ٹیکہ نہیں لیا ہے اور جو بڑھے ہوئے خطرے کے زد پر ہیں، ان کے لیے اس کی معمول کے مطابق سفارش کی جاتی ہے۔[2][7] ایسا لگتا ہے کہ یہ زندگی بھر کے لیے مؤثر ہے۔[2] دیگر حفاظتی اقدامات میں ہاتھ کی دھلائی اور مکمل طور پر پکا ہوا کھانا ہے۔[2] اس میں ضرورت کی بنیاد پر متلی یا اسہال کے لیے دواؤں اور آرام کی سفارش کی جاتی ہے، اس کے علاوہ کوئی خصوصی علاج نہیں ہے۔[2] سرایت عام طور سے مکمل طور پر اور جگر کی مسلسل بیماری کے بغیر حل ہو جاتے ہیں۔[2] اگر جگر کی شدید ناکامی ہوتی ہے تو، اس کا علاج جگر کی تبدیلی (Liver Transplantation) ہے۔[2]

اور عالمی پیمانے پر علامات ظاہر کرنے والے تقریبا 1.5 ملین معاملات سالانہ ہوتے ہیں[2] امکانی طور پر کل ملا کر سرایت کی تعداد کروڑوں میں ہے۔[8] یہ دنیا کے خراب تحفظ صحت کے انتظامات اور صاف پانی کی کمی والے علاقوں میں زیادہ عام ہیں۔[7] ترقی پزیر دنیا میں بچوں کی %90 تعداد 10 سال کی عمر تک متاثر ہوتے ہیں اور اس لیے بلوغت میں محفوظ ہوتے ہیں۔[7] ترقی یافتہ ممالک میں یہ اکثر معمولی پھیلاؤ میں ہوتے ہیں جہاں بچے چھوٹی عمر میں سامنا نہیں کرتے ہیں اور وسیع پیمانے پر ٹیکاکاری نہیں ہے۔[7] 2010 میں، سنگین ہیپاٹائٹس A کے نتیجے میں 1,02,000 اموات ہوئی ہیں۔[9] وائرل ہیپاٹائٹس کی بیداری کے لیے ہر سال 28 جولائی کو عالمی یوم ہیپاٹائٹس کا انعقاد ہوتا ہے۔[7]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Ryan KJ, Ray CG (editors) (2004)۔ Sherris Medical Microbiology (اشاعت 4th)۔ McGraw Hill۔ صفحات 541–4۔ آئی ایس بی این 0-8385-8529-9۔ 
  2. ^ 2.00 2.01 2.02 2.03 2.04 2.05 2.06 2.07 2.08 2.09 2.10 2.11 2.12 2.13 2.14 2.15 Matheny، SC; Kingery، JE (1 December 2012). "Hepatitis A.". Am Fam Physician 86 (11): 1027–34; quiz 1010–2. PMID 23198670. http://www.aafp.org/afp/2012/1201/p1027.html. 
  3. Connor BA (2005). "Hepatitis A vaccine in the last-minute traveler". Am. J. Med. 118 (Suppl 10A): 58S–62S. doi:10.1016/j.amjmed.2005.07.018. PMID 16271543. 
  4. Bellou، M.; Kokkinos، P.; Vantarakis، A. (March 2013). "Shellfish-borne viral outbreaks: a systematic review.". Food Environ Virol 5 (1): 13–23. doi:10.1007/s12560-012-9097-6. PMID 23412719. 
  5. The Encyclopedia of Hepatitis and Other Liver Diseases۔ Infobase۔ 2006۔ صفحہ 105۔ آئی ایس بی این 9780816069903۔ 
  6. Irving، GJ.; Holden، J.; Yang، R.; Pope، D. (2012). "Hepatitis A immunisation in persons not previously exposed to hepatitis A.". Cochrane Database Syst Rev 7: CD009051. doi:10.1002/14651858.CD009051.pub2. PMID 22786522. 
  7. ^ 7.0 7.1 7.2 7.3 7.4 "Hepatitis A Fact sheet N°328"۔ World Health Organization۔ July 2013۔ اخذ کردہ بتاریخ 20 February 2014۔ 
  8. Wasley، A; Fiore, A; Bell, BP (2006). "Hepatitis A in the era of vaccination.". Epidemiol Rev 28: 101–11. doi:10.1093/epirev/mxj012. PMID 16775039. http://epirev.oxfordjournals.org/content/28/1/101.long. 
  9. Lozano، R (Dec 15, 2012). "Global and regional mortality from 235 causes of death for 20 age groups in 1990 and 2010: a systematic analysis for the Global Burden of Disease Study 2010". Lancet 380 (9859): 2095–128. doi:10.1016/S0140-6736(12)61728-0. PMID 23245604.