90377 سیڈنا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
سیڈنا کی مدار

90377 سیڈناانگریزی: 90377 Sedna؛ علامت: Sedna symbol (bold).svg) ایک عبر نیپچونی اشیاء ہے جو سورج سے سب سے دور بونا سیارہ ہے۔ اسے 14 نومبر 2003[1] کو مائک براؤن، چاڈ ٹرجیلو اور ڈیوڈ رابینووٹز نے دریافت کیا۔[2][3] تقریباً 1250-1800 کلومیٹر قطر میں،[2] سیڈنا کو سورج کے گرد چکر لگانے میں تقریباً 11,400 سال لگتے ہیں، جو کہ زیادہ تر معروف عبر نیپچونی اشیاء سے کہیں زیادہ ہے۔[2][3] یہ نظام شمسی میں سب سے زیادہ دور معلوم اشیاء میں سے ایک ہے۔ لہذا، سیڈنا کی سطح کا درجہ حرارت کبھی بھی 240- ڈگری سیلسیئس سے اوپر نہیں بڑھتا ہے۔[1][2][3]

"سیڈنا" کا نام سمندر کی Inuit دیوی سے آیا ہے، جس کے بارے میں خیال کیا جاتا ہے کہ وہ آرکٹک اوقیانوس کی تہے میں رہتی ہے۔[2]

ناسا فی الحال سیڈنا کو دریافت کرنے کے لیے کسی خلائی مشن کی منصوبہ بندی نہیں کر رہا ہے، لیکن 2076 میں جب سیڈنا دوبارہ حضیض تک پہنچے گا تو کچھ مشنز کے بارے میں بات کی جا رہی ہے۔

سیڈنا کی کوئی تصویر نہیں لی جا سکتی کیونکہ سورج سے بہت کم روشنی اس تک پہنچتی ہے۔ اس وجہ سے سیڈنا کو "کوبیان" کہا جاتا ہے، جس کا مطلب قدیم یونانی میں سائے ہیں۔ اس کے مدار کی وجہ سے سیڈنا کے پائے جانے کے امکانات 0.017٪ ہیں۔ اس سائز کی 40-120 مزید اشیاء ہمارے جانے بغیر موجود ہونی چاہئیں، لیکن، چونکہ وہ بہت چھوٹی اور بہت دور ہیں، ہو سکتا ہے وہ تھوڑی دیر کے لیے دریافت نہ ہوں۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب کاکس، بریان؛ کوہن، اینڈریو (2010). نظام شمسی کے عجائبات. ہارپر کالنز. صفحہ 26-27. ISBN 9780007386901. 
  2. ^ ا ب پ ت ٹ براؤن، مائک. "سیڈنا". کالٹیک. اخذ شدہ بتاریخ 11 جولا‎ئی 2011. 
  3. ^ ا ب پ کلیون، وٹنی (15 مارچ 2004). "سیارہ جیسا جسم ہمارے نظام شمسی کے پر دریافت ہوگیا". ناسا. اخذ شدہ بتاریخ 11 جولا‎ئی 2011.