امارت شرق اردن

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
امارت شرق اردن
Emirate of Transjordan
إمارة شرق الأردن
فلسطینی برطانوی مینڈیٹ اور شرق اردن یادداشت

 

1921–1946
 

پرچم

امارت شرق اردن، بھورا
دارالحکومت عمان (شہر)
زبانیں عربی
حکومت بادشاہت
امیر
 - 1921–1946 شاہ عبد اللہ اول
برطانوی نمائندہ
 - اپریل 1921 – اکتوبر 1921 البرٹ ابرامسن
 - اکتوبر 1921 – نومبر 1921 ٹی ای لارنس
 - نومبر 1921 – اپریل 1924 ہیری سینٹ جان فلبی
 - اپریل 1924 – مارچ 1939 ہنری فورٹنم کاکس
 - مارچ 1939 – 17 جون 1946 ایلک کرک برائیڈ
تاریخی دور بین جنگی دور
 - قاہرہ کانفرنس مارط 1921
 - تاجپوشی 11 اپریل 1921
 - آزادی کا اعلان 25 اپریل 1923
 - اینگلو شرق اردن معاہدہ 20 فروری 1928
 - لندن معاہدہ 22 مارچ 1946
 - مکمل آزادی 25 مئی 1946
Warning: Value specified for "continent" does not comply
شرق اردن کی ایک ڈاک ٹکٹ

امارت شرق اردن (Emirate of Transjordan) (عربی: إمارة شرق الأردن) اپریل 1921 میں قائم ایک برطانوی زیر حمایت ریاست تھی۔ 1946 میں امارت ایک آزاد ریاست بن گئی اور 1951 میں سرکاری طور پر اسے ھاشمی مملکت اردن قرار دیا گیا۔