املا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

املا رسم خط کے مطابق الفاظ لکھنے کا عمل۔ املا دراصل لفظوں میں صحیح صحیح حرفوں کے استعمال کا نام ہے اور جو طریقہ ان حرفوں کے لکھنے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے، وہ رسم خط کہلاتا ہے۔ معروف ماہر لسانیات، رشید حسن خان املا کی تعریف اس طرح بیان کرتے ہیں :

اردو کے رسم خط کے مطابق، لفظ میں حرفوں کی ترتیب کا تعین، ترتیب کے لحاظ سے اس لفظ میں شامل حرفوں کی صورت اور حرفوں کے جوڑ کا متعارف طریقہ؛ ان سب کے مجموعے کا نام اِملا ہے۔[1]۔

وضاحت

لفظ کے صحیح املا کو ان چار باتوں سے سمجھا جا سکتا ہے :

  1. کسی لفظ میں جن حرفوں کو آنا چائیے، وہی لکھے گئے ہوں۔ جیسے تلاطم میں پہلا حرف ت ہے، اگر اس کو تلاطم لکھا جائے اور گزرنا میں دوسرا حرف زے ہے اگر اس کو "گزرنا" یعنی زے کی بجائے ذال سے گزرنا لکھا، تو یہ غلط املا ہو گا۔
  2. لفظ میں حرفوں کو جس ترتیب سے آنا چائیے، اسی ترتیب کے ساتھ آئے ہوں۔
  3. نقطے صحیح جگہ رکھے گئے ہوں۔
  4. جو حرف ملا کر لکھے جاتے ہیں، ان کے جوڑ ٹھیک ہوں اور ان کی صورت بھی ٹھیک ہو۔[2]

مزید دیکھیے

حوالہ جات

  1. رشید حسن خان، اردو املا، فکشن ہاؤس لاہور، صفحہ21-22
  2. رشید حسن خان،عبارت کیسے لکھیں؟، الفتح پبلی کیشنز وارلپنڈی، پاکستان۔ صفحہ18-19

بیرونی روابط