ایک میچ میں دس وکٹیں

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے

کرکٹ میں، دس وکٹوں کا حصول اس وقت ہوتا ہے جب ایک گیند باز کسی ایک اننگز میں دس وکٹیں لیتا ہے [1] [2] یا دو اننگز کے میچ کی دونوں اننگز میں۔ [3] [4] ایک میچ میں دس وکٹوں کا جملہ بھی استعمال ہوتا ہے۔ [5]لارڈز میں ایک میچ میں دس وکٹیں لینے سے باؤلر کو لارڈز کے اعزازی بورڈ میں جگہ مل جاتی ہے۔ [6]

ایک اننگز میں دس وکٹیں[ترمیم]

ایک اننگز میں تمام دس وکٹیں لینا نایاب ہے۔ ٹیسٹ کرکٹ میں ایسا صرف تین بار ہوا ہے۔

میچ کی دونوں اننگز میں دس دس وکٹیں[ترمیم]

ایک میچ کی دونوں اننگز میں دس وکٹیں لینا زیادہ عام ہے، لیکن پھر بھی ایک قابل ذکر کامیابی ہے۔ ٹیسٹ کرکٹ میں یہ کارنامہ سب سے زیادہ کرنے والے گیند باز متھیا مرلی دھرن تھے جنہوں نے 22 مرتبہ ایسا کیا۔ [5]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Watch: Every wicket in Ajaz Patel's astonishing, history-making 10-for". Wisden. 4 December 2021. اخذ شدہ بتاریخ 20 دسمبر 2021. Ajaz also became the only bowler to snap up a ten wicket-haul in the first innings of a Test 
  2. "Now isn't that something?". ESPNcricinfo. 8 July 2013. اخذ شدہ بتاریخ 20 دسمبر 2021. Richard Stokes was taken by his father to the 1956 Ashes Test at Old Trafford, and watched Jim Laker complete his ten-wicket haul. 
  3. "T.G. SOUTHEE 10-108 V ENGLAND". Lords.org. اخذ شدہ بتاریخ 20 دسمبر 2021. Tim Southee became just the second New Zealander to take a ten-wicket haul at Lord's when he finished their 2013 Test v England with figures of 10-108 
  4. "Steyn's ten-wicket-haul decimates Warriors". ESPN. 18 March 2006. اخذ شدہ بتاریخ 20 دسمبر 2021. 
  5. ^ ا ب "MOST TEN-WICKETS-IN-A-MATCH IN A CAREER". ESPNcricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 20 دسمبر 2021. 
  6. "About The Honours Boards". Lords.org. اخذ شدہ بتاریخ 20 دسمبر 2021. By scoring a century, taking five wickets in an innings or ten wickets in a match, a player ensures that their name is added to one of the famous Honours Boards in the Pavilion.