جزیرہ ابو موسیٰ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
ابو موسی
Abu Musa
متنازع جزیرہ
دیگر نام: فارسی: ابوموسی
Strait of Hormuz.jpg
ابو موسی خلیج فارس میں
جغرافیہ
جزیرہ ابو موسیٰ is located in Iran
جزیرہ ابو موسیٰ
مقام خلیج فارس
متناسقات 25°52′N 55°02′E / 25.867°N 55.033°E / 25.867; 55.033
کل جزائر 1
رقبہ 12.8 کلومیٹر2 (138,000,000 فٹ مربع)
بلند ترین نقطہ کوہ حلوا
110 میٹر (360 فٹ)
زیر انتظام
Flag of Iran.svg ایران
صوبہ صوبہ ہرمزگان
سب سے بڑا شہر ابو موسی (1,953)
دعوی
Flag of the United Arab Emirates.svg متحدہ عرب امارات
امارت شارجہ
آبادیات
آبادی 2,131 (as of 2012)
نسلی گروہ ایرانی

ابو موسی (Abu Musa) (فارسی: ابوموسیاس آڈیو کے متعلق listen ) مشرقی خلیج فارس میں آبنائے ہرمز کے دھانے کے قریب ایک ایرانی جزیرہ ہے۔[1] سمندر کی گہرائی کی وجہ سے بڑے بحری جہازوں اور تیل بردار جہازوں کو ابو موسی اور تنب اکبر و اصغر کے درمیان سے گزرنا پڑتا ہے جس کی وہ سے یہ جزائر خلیج فارس میں کلید ی مقا م رکھتے ہیں۔[2] جزیرہ ایران کے زیر انتظام بطور حصہ صوبہ ہرمزگان ہے، جبکہ متحدہ عرب امارات کا اس پر دعوی بطور امارت شارجہ کا علاقہ ہے۔[3][4]

بیرونی روابط[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Iranian Islands of Tunbs and Abu Musa Archived ستمبر 23, 2006 at the وے بیک مشین
  2. Ewan W. Anderson؛ Gareth Owen۔ An atlas of world political flashpoints: a sourcebook of geopolitical crisis۔ Pinter Reference۔ صفحہ 1۔ آئی ایس بی این 978-1-85567-053-2۔
  3. Fred M. Shelley۔ Nation Shapes: The Story Behind the World's Borders۔ ABC-CLIO۔ صفحات 457–۔ آئی ایس بی این 978-1-61069-106-2۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ However, the United Arab Emirates and Iran dispute control over the islands of Abu Musa, Greater Tunb, and Lesser Tunb.
  4. Ibrahim Abed؛ Peter Hellyer۔ United Arab Emirates: A New Perspective۔ Trident Press Ltd۔ صفحات 182–۔ آئی ایس بی این 978-1-900724-47-0۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ Iran claims Abu Musa Territorial and political ambitions, combined with the economic interests of influential elements within the government, helped strengthen the first Iranian claim to the island of Abu Musa in 1904. Iran began to challenge ...