خواتین کے خلاف تشدد

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

خواتین کے خلاف تشدد (انگریزی: Violence against women) میں وہ اعمال شامل ہیں جو خواتین اور لڑکیوں کے خلاف کیے جاتے ہیں۔ ایسے تشدد کو اکثر نفرت انگیز جرم کی قسم سمجھی جاتی ہے،[1] جو خاص طور پر عورتوں اور لڑکیوں کے خلاف ہوتے ہیں صرف اس وجہ سے کہ ان کی جنس مونث ہے۔ خواتین کے خلاف تشدد کی لمبی تاریخ ہے، ہر زمانے میں تشدد میں اضافہ و کمی دیکھی گئی حتی کہ آج تک خواتین پر ظلم ڈھائے جاتے ہیں، کبھی گھریلو تشدد کی شکل میں تو کبھی جنسی تشدد کی صورت میں۔ اقوام متحدہ کی ایک رپورٹ کے مطابق، دنیا میں ہر روز اپنے خاندان اور ساتھی کے ہاتھوں لگ بھگ 137 خواتین قتل ہو جاتی ہیں۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Citations:
    • Marguerite Angelari۔ "Hate crime statutes: a promising tool for fighting violence against women"۔ بہ Karen J. Maschke۔ Pornography, sex work, and hate speech۔ New York: Taylor and Francis۔ صفحات 405&ndash, 448۔ آئی ایس بی این 9780815325208۔
    • Phyllis B. Gerstenfeld۔ "The hate debate: constitutional and policy problems"۔ بہ Phyllis B. Gerstenfeld۔ Hate crimes: causes, controls, and controversies۔ Thousand Oaks, California: Sage۔ صفحہ 58۔ آئی ایس بی این 9781452256627۔
    • Beverly McPhail۔ "Gender-bias hate crimes: a review"۔ بہ Barbara Perry۔ Hate and bias crime: a reader۔ New York: Routledge۔ صفحہ 271۔ آئی ایس بی این 9780415944076۔